یو اے پی اے ٹریبونل نے تحریک حریت، مسلم لیگ کے دھڑے پر پابندی کی توثیق کر دی

File Photo

عظمیٰ ویب ڈیسک

نئی دہلی// غیر قانونی سرگرمیاں (روک تھام) ایکٹ (یو اے پی اے) کے تحت قائم ایک ٹریبونل نے ہفتہ کو مسلم لیگ جموں کشمیر (مسرت عالم دھڑے) اور تحریک حریت، جموں و کشمیر پر پانچ سال کی پابندی عائد کرنے کے مرکز کے فیصلے کی توثیق کی۔
دہلی ہائی کورٹ کے جج سچن دتا کا ایک رکنی ٹریبونل جنوری میں انسداد دہشت گردی کے سخت قانون کے تحت تشکیل دیا گیا تھا تاکہ اس بات کا جائزہ لیا جا سکے کہ آیا پابندی کے نفاذ کے پیچھے “کافی وجوہات” موجود تھیں یا نہیں۔
مسلم لیگ جموں کشمیر (مسرت عالم دھڑے) کو 27 دسمبر 2023 کو یو اے پی اے کے تحت حکومت نے جموں و کشمیر میں ملک دشمن اور علیحدگی پسند سرگرمیوں میں ملوث ہونے کی وجہ سے غیر قانونی تنطیم قرار دیا تھا اور پانچ سال کے لیے پابندی عائد کر دی تھی۔