ہند-بنگلہ دیش گنگا پانی کے معاہدے پر نظرثانی کریں گے | بنگلہ دیشی شہریوں کو علاج کیلئے ای ویزا ملے گا

یو این آئی

نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی نے ہفتہ کو کہا کہ ہندوستان اور بنگلہ دیش نے گنگا آبی معاہدے پر نظرثانی کرنے پر اتفاق کیا ہے اور بنگلہ دیش سے ہندوستان آنے والوں کو طبی علاج کے لئے ای ویزا کی سہولت فراہم کی جائے گی۔
ترقیاتی کاموں میں بنگلہ دیش کو ہندوستان کا سب سے بڑا ساجھیدار بتاتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ ہندوستان بنگلہ دیش کے ساتھ اپنے تعلقات کو سب سے زیادہ ترجیح دیتا ہے۔ مسٹر مودی بنگلہ دیش کی وزیر اعظم شیخ حسینہ اور ان کے وفد کے ساتھ بات چیت کے بعد ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے، جو ہندوستان کے دو روزہ دورے پر نئی دہلی میں ہیں۔
رواں ماہ محترمہ حسینہ کا یہاں کا یہ دوسرا دورہ ہے۔ وہ مسٹر مودی کی تقریب حلف برداری میں بھی ہندوستان آئی تھیں۔
انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک نے ڈیجیٹل ٹیکنالوجی، بحری اور خلائی شعبے کے اقدامات اور دفاعی پیداوار اور انسانی وسائل کی ترقی کے شعبے میں تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا ہے۔
مسٹر مودی نے بنگلہ دیش کے بانی صدر بنگ بندھو شیخ مجیب الرحمن کے مستحکم، خوشحال اور ترقی پسند بنگلہ دیش کے خواب کو پورا کرنے میں بنگلہ دیش کی حمایت کرنے کے ہندوستان کے عزم کا اعادہ کیا۔
وزیر اعظم مودی نے کہا کہ 2026 میں بنگلہ دیش ‘کم ترقی یافتہ’ ملک کے زمرے سے ‘ترقی پذیر ملک’ بننے جا رہا ہے۔ بنگلہ دیش کی اس پیش رفت میں محترمہ حسینہ کی قیادت کی تعریف کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا ’’میں وزیر اعظم شیخ حسینہ جی کو ’سونار بنگلہ‘ کی قیادت دینے پر مبارکباد پیش کرتا ہوں۔
محترمہ حسینہ کے ساتھ وسیع تعلقات پر روشنی ڈالتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا ’’ گزشتہ ایک یا اس سے زیادہ سال میں ہم دس بار ملے ہیں۔ لیکن آج کی ملاقات خاص ہے کیونکہ وزیر اعظم شیخ حسینہ جی ہماری حکومت کی تیسری میعاد میں ہماری پہلی سرکاری مہمان ہیں۔‘‘
مسٹر مودی نے کہا کہ ‘بنگلہ دیش ہمارا ‘پڑوسی سب سے پہلے’ ہندوستان کی پالیسی ہے، مشرق کے ممالک کے ساتھ کام کرنے کی ہماری پالیسی، ‘ساگر’ (خطے کے تمام ممالک کے لیے سلامتی اور خوشحالی) اور ایشیا پیسفک خطے کے بارے میں ہندوستان کے خواب ہیں۔ ”
وزیراعظم مودی نے کہا کہ ہندوستان اور بنگلہ دیش نے مل کر عوامی فلاح و بہبود کے کئی اہم پروجیکٹوں کو مکمل کیا ہے اس سلسلے میں انہوں نے ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان اکھوڑہ سے اگرتلہ، کھلنا کے درمیان چھٹے سرحد پار ریل رابطے کا ذکر کیا۔ مونگلا بندرگاہ سے ہندوستان کی شمال مشرقی ریاستوں تک، مونگلا بندرگاہ کو ریل کے ذریعے جوڑنے اور 1320 میگاواٹ صلاحیت کے میتری تھرمل پاور پلانٹ کے دونوں یونٹوں سے بجلی کی پیداوار شروع کرنے کا منصوبہ ہے ۔
مسٹر مودی نے کہا کہ ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان دریائے گنگا میں دنیا کی سب سے طویل ریور کروز سروس اب ہندوستانی روپے میں شروع ہو گئی ہے اور پہلی سرحد پار سے میتری گیس پائپ لائن بھی مکمل ہو گئی ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ ہندوستانی گرڈ کے ذریعے نیپال سے بنگلہ دیش کو بجلی کی برآمد، توانائی کے شعبے میں ذیلی علاقائی تعاون کی پہلی مثال ہے۔
مسٹر مودی نے کہا “ایک ہی سال میں زمینی سطح پر اتنے بڑے اقدامات کرنا ہمارے تعلقات کی رفتار اور پیمانے کو ظاہر کرتا ہے۔”
وزیر اعظم حسینہ کے دورے کو انتہائی اہم قرار دیتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ آج ہم نے نئے شعبوں میں تعاون کے لیے ایک بصیرت کا خاکہ تیار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج کی بات چیت میں دونوں اطراف نے گرین پارٹنرشپ، ڈیجیٹل پارٹنرشپ، بلیو اکانومی، اسپیس جیسے کئی شعبوں میں تعاون پر اتفاق کیا ہے اور دونوں ممالک کے نوجوان اس معاہدے سے مستفید ہوں گے۔
مسٹر مودی نے کہا ” ہند -بنگلہ دیش ‘فرینڈشپ سیٹلائٹ’ ہمارے تعلقات کو نئی بلندیوں تک لے جائے گا، ہم نے اپنی سوچ کے مرکز میں رابطے، تجارت اور تعاون کو رکھا ہے۔ “گزشتہ دس برسوں میں، ہم نے کنیکٹیویٹی سہولیات کو دوبارہ قائم کیا ہے جو 1965 سے پہلے موجود تھیں۔”
انہوں نے کہا کہ اب ہم مزید ڈیجیٹل اور انرجی کنیکٹیویٹی پر زور دیں گے اس سے دونوں ممالک کی معیشتوں کو نئی بلندیوں پر لے جانے کے لیے دونوں فریقین ایس آئی پی اے پر بات چیت شروع کرنے پر متفق ہیں۔
وزیر اعظم نے اعلان کیا کہ بنگلہ دیش کے سراج گنج میں زمینی کنٹینر ڈپو کی تعمیر کی ہندوستان حمایت کرے گا۔
دونوں ممالک کے درمیان دریائی پانی کے شعبے میں تعاون کی اہمیت کو بیان کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ54 دریا مشترک ہیں، یہ ہندوستان اور بنگلہ دیش کو ملاتے ہیں۔ دونوں ممالک سیلاب سے نمٹنے، قبل از وقت وارننگ اور پینے کے پانی کے منصوبوں میں تعاون کر رہے ہیں۔
وزیر اعظم نے کہا کہ دونوں ممالک نے 1996 کے گنگا آبی معاہدے کی تجدید کے لیے تکنیکی سطح پر بات چیت شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان کی ایک تکنیکی ٹیم جلد ہی بنگلہ دیش کا دورہ کرے گی تاکہ بنگلہ دیش میں دریائے تیستا کے تحفظ اور انتظام پر تبادلہ خیال کیا جا سکے۔
وزیر اعظم مودی نے کہا کہ آج کی میٹنگ میں ہم نے دفاعی سازوسامان کی تیاری سے لے کر فوجی دستوں کو جدید بنانے تک ہر چیز پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا تاکہ دونوں ممالک کے درمیان دفاعی تعاون کو مزید مضبوط کیا جا سکے۔
دونوں ممالک نے دہشت گردی اور بنیاد پرستی کے انسداد اور سرحدوں کے پرامن انتظام میں تعاون پر اپنی شراکت کو مضبوط بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔