نوشہرہ میں منشیات فروشوں کی منقولہ جائیداد قرق: پولیس

عظمیٰ ویب ڈیسک

نوشہرہ// راجوری ضلع میں جموں و کشمیر پولیس نے تقریباً 51 لاکھ روپے سے زیادہ کی مالیت کی تین منقولہ جائیدادیں ضبط کی ہیں۔
پولیس کا ماننا ہے کہ مذکورہ جائیدادیں غیر قانونی طریقوں سے حاصل کی گئیں تھیں اور منشیات کی تجارت سے حاصل کی گئی تھیں۔
پولیس ترجمان نے کہا کہ پولیس تھانہ نوشہرہ کی ایک ٹیم نے تین گاڑیاں قرق کی ہیں جن میں ایک ڈمپر ٹرک، ایک مہندرا پک اپ بولیرو (منی لوڈ کیرئیر) اور ایک موٹر سائیکل شامل ہے جن کی مالیت تقریباً 51 لاکھ ہے۔
انہوں نے کہا کہ یہ گاڑیاں بدنام زمانہ منشیات فروشوں سکھویندر سنگھ ولد بابو رام، نوین کمار ولد موتی رام اور دیویندر کمار ولد راجیش کمار، جو سبھی سہر مکری، بھوانی کے رہائشی ہیں، کے طور پر ہوئی ہے۔
ترجمان نے کہا کہ جائیدادوں کو این ڈی پی ایس ایکٹ 1985 کی دفعہ 68-ایف کے تحت قرق کیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ تینوں کو منشیات کی قرقی کے بعد گرفتار کیا گیا جو پولیس نے مقامی لوگوں کی مدد سے نوشہرہ کے علاقے سحر مکری میں ایل او سی کے قریب کی تھی اور کراس ایل او سی سمگلنگ ریکیٹ کا پردہ فاش کیا گیا تھا۔
پولیس نے کہا کہ این ڈی پی ایس ایکٹ کی متعلقہ دفعات کے تحت ایک مقدمہ ایف آئی آر نمبر 36/2024 درج کیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ تفتیش کے دوران مذکورہ منقولہ جائیدادیں منشیات اور غیر قانونی طریقوں سے حاصل کی گئی ثابت ہوئی ہیں۔ مذکورہ جائیداد NDPS ایکٹ کی دفعہ 68 ایف کو قرق کیا گیا ہے۔
ایس ڈی پی او نوشہرہ کی سربراہی میں پولیس کی ایک ٹیم کے ساتھ ایس ایچ او نوشہرہ اور انچارج پولیس پوسٹ بھوانی نے قانون کے طے شدہ طریقہ کار کے مطابق جائیداد کو ضبط کر لیا۔