غیر قانونی کان کنی میں ملوث 1378 گاڑیاں ضبط، رجسٹریشن منسوخی کا عمل شروع: پولیس

عظمیٰ ویب ڈیسک

جموں// جموں پولیس نے پیر کے روز جموں ضلع میں کان کنی کی غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث 1ہزار 378 گاڑیوں کے رجسٹریشن کو منسوخ کرنے کا عمل شروع کیا۔
سرکاری ذرائع نے بتایا کہ پولیس نے غیر قانونی کان کنی کی سرگرمیوں کے خلاف فیصلہ کن کارروائی شروع کی ہے، جس کے نتیجے میں غیر قانونی کارروائیوں میں ملوث 1ہزار378 متعدد گاڑیوں کو ضبط کیا گیا ہے۔
ایک افسر نے بتایا کہ غیر قانونی کان کنی کی سرگرمیوں میں ملوث گاڑیوں کے رجسٹریشن کو منسوخ کرنے کا عمل متعلقہ محکمہ کے ساتھ شروع کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ضبط کی گئی یہ گاڑیاں ماحولیاتی ضوابط کو نظر انداز کرتے ہوئے غیر قانونی کان کنی کے کاموں میں سرگرم پائی گئیں، جو مقامی ماحولیاتی نظام کیلئے ایک اہم خطرہ ہیں۔
سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس (ایس ایس پی) جموں ونود کمار نے کہا، ”غیر قانونی کان کنی کے ذریعے ہمارے قدرتی وسائل کے استحصال کو برداشت نہیں کیا جائے گا“۔
انہوں نے کہا کہ پولیس کی طرف سے کی جانے والی کارروائیوں کا مقصد ان غیر قانونی سرگرمیوں کو روکنا ہے اور لوگوں کو ایسے طریقوں میں ملوث ہونے سے روکنا ہے جو ہمارے ماحول کو نقصان پہنچاتے ہیں اور عوامی تحفظ کو خطرے میں ڈالتے ہیں۔
اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ جموں پولیس اس طرح کی غیر قانونی کارروائیوں کی چھان بین اور ان کو روکنے کے لیے تندہی سے کام کر رہی ہے، ایس ایس پی نے کہا کہ گاڑیوں کے مالکان اور آپریٹرز جو غیر قانونی کان کنی کی سرگرمیوں میں ملوث ہیں، ان کو اپنی گاڑیوں کی رجسٹریشن کی منسوخی کا سامنا کرنا پڑے گا۔
انہوں نے مزید کہا، “اس بات کو یقینی بنانے کے لیے تیز اور سخت اقدامات کیے جا رہے ہیں کہ غیر قانونی کان کنی میں ملوث گاڑیوں کو فوری طور پرکسی بھی طرح کی ٹرانسپورٹیشن سے روک دیا جائے، جس سے ماحول کے تحفظ اور قانونی اصولوں کو برقرار رکھنے کے عزم کو نقصان پہنچے”۔
ایس ایس پی نے مزید کہا کہ اسی طرح کی غیر قانونی سرگرمیوں سے متعلق متعلقہ معلومات متعلقہ حکام کو فراہم کرنے والے افراد کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔