کشمیری پنڈت کی ہلاکت؛ عمر، محبوبہ مفتی، تاریگامی اور الطاف بخاری نے مذمت کی

سری نگر//جموں وکشمیر کی سبھی سیاسی پارٹیوں نے جنوبی ضلع پلوامہ میں ملی ٹینٹوں کے ہاتھوں کشمیری پنڈت کی ہلاکت پر سخت برہمی کا اظہار کیا ہے۔
نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ نے کہا کہ سنجے پنڈت کی ہلاکت کی خبر سن کر بہت دکھ ہوا۔ سنجے بینک سیکورٹی گارڈ کے طورپر کام کر رہا تھا اور آج صبح ملی ٹینٹوں کے حملے میں از جان ہوا۔
عمر نے کہا کہ میں اس حملے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتا ہوں۔
پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا،’ واد ی کشمیر میں قتل و غارت گری کا سلسلہ جاری ہے۔ “انہوں نے کہاکہ مرکزی حکومت جموں وکشمیر میں اقلیتوں کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔انہوں نے کشمیری پنڈت کے کنبے کے ساتھ اپنی گہری ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ متاثرہ کنبے کے ساتھ اظہار ہمدردی کرنے کے لئے الفاظ کم پڑ رہے ہیں کیونکہ ان پر مصیبت کا جو پہاڑ ٹوٹ پڑا، اس کا مداوار کرنے کے لئے کوئی بھی الفاظ ناکافی ہیں۔
پی اے جی ڈی کے ترجمان ایم وائی تاریگامی نے کشمیری پنڈت کے قتل کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاکہ اس بدقسمت واقعے نے ایک بار پھر وادی میں گزشتہ سال کی نفرت انگیز ٹارگیٹ کلنگ کے واقعات کو جنم دیا ہے۔انہوں نے کہاکہ سوگوار خاندان کے دکھ درد میں برابر کا شریک ہوں۔
اپنی پارٹی کے صدر سید محمد الطاف بخاری نے کشمیری پنڈت کی ہلاکت پر اپنے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے کہا، ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ ہم اس خونین سلسلے کے خلاف اپنی آواز بلند کریں۔