لداخ کے مطالبات پر مرکزی حکومت کے ساتھ 2 میٹنگیں بے نتیجہ اختتام پذیر

File Photo

عظمیٰ ویب ڈیسک

نئی دہلی// لداخ کے لوگوں کے مطالبات پر غور کرنے کیلئے بنائی گئی ایک ذیلی کمیٹی پیر کو مرکزی حکومت کے عہدیداروں کے ساتھ دو طرفہ ملاقاتوں کے بعد کسی بھی پیش رفت کرنے میں ناکام رہی اور اس نے خطہ کے لوگوں سے مشورہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
لیہہ اپیکس باڈی (LAB) اور کرگل ڈیموکریٹک الائنس (KDA) لداخ کو ریاست کا درجہ دینے، آئین کے چھٹے شیڈول میں لداخ کو شامل کرنے اور ایک خصوصی پبلک سروس کمیشن کے قیام کا مطالبہ کر رہے ہیں۔
دونوں تنظیموں کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق، ایل اے بی اور کے ڈی اے کی ذیلی کمیٹی نے مرکزی وزارت داخلہ کے حکام اور مرکز کے زیر انتظام علاقہ لداخ کے مشیر کے ساتھ میٹنگ کی۔
بیان میں کہا گیا ہے، “اجلاس بغیر کسی ٹھوس نتیجے کے ختم ہو گیا”۔
اس کے بعد ذیلی کمیٹی نے مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے ساتھ ان کی رہائش گاہ پر میٹنگ کی۔ تنظیموں نے کہا ، “اس ملاقات کا بھی کوئی مثبت نتیجہ نہیں نکلا”۔
بیان کے مطابق، تنظیموں نے لداخ کے دو اضلاع لیہہ اور کرگل کے لوگوں سے مشاورت کے بعد مستقبل کا لائحہ عمل وضع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
ذیلی کمیٹی 19 فروری کو لداخ کیلئے اعلیٰ اختیاراتی کمیٹی (HPC) کے درمیان ہونے والی میٹنگ کے بعد تشکیل دی گئی تھی جس کی سربراہی وزیر مملکت برائے داخلہ نتیانند رائے کر رہے تھے اور LAB اور KDA کے 14 رکنی وفد نے یونین ٹیریٹری کی مختلف تنظیموں کی نمائندگی کی تھی۔
ایل اے بی کی نمائندگی کرنے والے تھوپستان چھیوانگ، چیرنگ دورجے لکروک اور نوانگ رگزن جورا اور KDA کی نمائندگی کرنے والے قمر علی اخون، اصغر علی کربلائی اور سجاد کرگلی ذیلی کمیٹی کے ممبر ہیں۔
اخون، چھیوانگ، لکروک اور کربلائی نے پیر کو جاری ہونے والے پریس بیان پر دستخط کیے۔
ذرائع نے پہلے بتایا کہ وفد کے دیگر مطالبات میں لوک سبھا کی دو نشستیں (ایک کرگل اور ایک لیہہ ) اور یونین ٹیریٹری کے باشندوں کے لیے ملازمت کے مواقع شامل ہیں۔
لداخ میں فی الحال ایک لوک سبھا حلقہ ہے۔

کشمیر عظمیٰ کے وہاٹس گروپ میں شامل ہونے کیلئے یہاں کلک کریں
وزارت داخلہ (ایم ایچ اے) نے لداخ کیلئے نتیا نند رائے کی سربراہی میں HPC تشکیل دی ہے جس کا مینڈیٹ ہے کہ اس کے جغرافیائی محل وقوع اور تزویراتی اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے خطے کی منفرد ثقافت اور زبان کے تحفظ کے لیے اٹھائے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا جائے۔
ایچ پی سی زمین اور روزگار کے تحفظ، خطے میں جامع ترقی اور روزگار پیدا کرنے کے اقدامات، لیہہ اور کرگل کی لداخ خود مختار پہاڑی ترقیاتی کونسلوں (LAHDCs) کو بااختیار بنانے سے متعلق اقدامات اور آئینی تحفظات کے لیے بھی تشکیل دی گئی ہے۔