جموں و کشمیر گرمی کی لہر برقرار، قاضی گنڈ میں پارہ 34 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ پہلگام، کوکرناگ میں مئی کا دوسرا گرم ترین دن، بھدرواہ میں 23 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا

غروبِ سورج کے وقت ڈل جھیل کا دلکش نظارہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ عکاسی: امان فاروق

عظمیٰ ویب ڈیسک

سرینگر// جموں و کشمیر میں شدید گرمی کا سلسلہ جاری ہے۔ اسی دوران قاضی گنڈ میں مئی کے مہینے کے دوران دن کا سب سے زیادہ درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا جبکہ پہلگام اور کوکرناگ میں بالترتیب گزشتہ 23 اور 22 سالوں میں دوسرے گرم ترین دن رہے۔
محکمہ موسمیات کے عہدیدار نے بتایا کہ قاضی گنڈ میں پیر کو دن کا زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 34 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا، جو 31 مئی 1981 کو 33.6 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیے جانے پر 43 سال کا سب سے زیادہ ہے۔
پہلگام نے مئی کے دوران اب تک کا دوسرا سب سے زیادہ درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا جب پارہ 28.6 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا اور یہ دنیا کے مشہورسیاحتی مقام کے لئے ریکارڈ کردہ اب تک کی بلند ترین سطح سے ایک ڈگری سیلسیس سے کم تھا، 23 مئی 2000 کو زیادہ سے زیادہ 30.8 ڈگری سینٹی گریڈ تھا۔
اس کے علاوہ کوکرناگ میں درجہ حرارت 31.6 ڈگری سینٹی گریڈ پر دوسرا سب سے زیادہ درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا اور یہ گزشتہ 22 سالوں میں سب سے زیادہ تھا کیونکہ 15 مئی 2001 کو پارہ 32.6 ڈگری سینٹی گریڈ کو چھو گیا تھا۔
انہوں نے کہا کہ 34.6 ڈگری سینٹی گریڈ پر بھدرواہ نے 23 سالوں میں اپنا سب سے زیادہ دن کا درجہ حرارت ریکارڈ کیا، جو 26 مئی 2024 کو 34.7 ڈگری سینٹی گریڈ اور 30 مئی 2000 کو 37.6 ڈگری سینٹی گریڈ درج کیا گیا تھا۔
انہوں نے کہا کہ جموں میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 42.8 ڈگری سینٹی گریڈ، کٹرہ میں 39 ڈگری سینٹی گریڈ، سرینگر میں 32.2 ڈگری سینٹی گریڈ، کپواڑہ میں 30.9 ڈگری سینٹی گریڈ اور گلمرگ میں 22.2 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔
یہ بھی پڑھیں: تین دن بعد گرمی کی لہر سے راحت متوقع: محکمہ موسمیات
محکمہ موسمیات کے ترجمان نے کہا کہ وادی میں 28 مئی تک موسم خشک رہنے کا امکان ہے اور اس دوران کہیں کہیں گرج چمک کے ساتھ ہلکی بارشوں کا امکان ہے۔
انہوں نے کہا کہ بعد ازاں وادی میں 29 سے 31 مئی تک موسم جزوی ابر آلود رہ سکتا ہے اور اس دوران بعد دوپہر کہیں کہیں گرج چمک کے ساتھ ہلکی بارشیں متوقع ہیں۔
ترجمان نے کہا کہ وادی میں 31 مئی تک موسم میں کسی بڑی تبدیلی کا کوئی امکان نہیں ہے۔
انہوں نے کہا تاہم اگلے چار دنوں کے دوران جموں صوبہ کے میدانی علاقوں میں گرمی کی لہر جاری رہ سکتی ہے اور وادی کشمیر اور جموں کے پہاڑی اضلاع میں موسم خشک اور گرم رہ سکتا ہے۔
محکمے نے لوگوں بالخصوص عمر رسیدہ افراد، بچوں اور مریضوں کو زیادہ مقدار میں پانی پینے اور خاص طور پر دوپہر 12 بجے سے دن کے 3 بجے تک گرمی سے بچنے کی تاکید کی ہے۔
کسانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے آپریشنز جاری رکھ سکتے ہیں۔
دریں اثنا وادی کا شبانہ درجہ حرارت بھی مسلسل معمول سے زیادہ ریکارڈ ہو رہا ہے۔
گرمائی دارلحکومت سری نگر میں کم سے کم درجہ حرارت 15.6 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے 3.6 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔
وادی کے شہرہ آفاق سیاحتی مقام گلمرگ میں کم سے کم درجہ حرارت 11.2 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے4.1 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔
وادی کے دوسرے مشہور سیاحتی مقام پہلگام میں کم سے کم درجہ حرارت 7.7 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے 1.6 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔
سرحدی ضلع کپوارہ میں کم سے کم درجہ حرارت 12.0 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے1.4 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔
گیٹ وے آف کشمیر کے نام سے مشہور قصبہ قاضی گنڈ میں کم سے کم درجہ حرارت 12.4 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے1.7 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔
یہ بھی پڑھیں: راجوری کے جنگل میں زبردست آگ بھڑک اٹھی