جموں میں درجہ حرارت مئی کے آخر تک 44 ڈگری سینٹی گریڈ کو عبور کرسکتا ہے: محکمہ موسمیات

File Image

عظمیٰ ویب ڈیسک

جموں// محکمہ موسمیات موسمیات نے مزید پیش گوئی کی ہے کہ موجودہ گرمی کی لہر کے پیشِ نظر مئی کے آخر تک زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت جموں میں 44 ڈگری سیلسیس سے تجاوز کر سکتا ہے۔
منگل کو آئی ایم ڈی کے عہدیدار نے کہا کہ بارش کی کوئی پیش گوئی نہیں ہے اور مئی کے آخر تک موسم عام طور پر خشک رہے گا۔ اُنہوں نے بتایا، “چونکہ دن کا درجہ حرارت 41 ڈگری سے 42 ڈگری کے درمیان ریکارڈ کیا جاتا ہے، اس لیے آنے والے دنوں میں یہ 44 ڈگری کو عبور کرنے کی توقع ہے”۔
آئی ایم ڈی امیج کے مطابق، جموں میں 26 مئی 1984 کو زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 47.4 ڈگری ریکارڈ کیا گیا تھا اور یہ اب تک کا سب سے زیادہ تھا۔ 23 مئی 2023 کو زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 42.0 ریکارڈ کیا گیا تھا۔ 15 مئی 2022 کو یہ 43.9 ڈگری سلسیس تھا۔ 27 مئی 2021 کو 41.6، 28 مئی 2020 کو 42.6، 31 مئی 2019 کو 44.1، 30 مئی 2018 کو 43.5، 27 مئی 2017 کو 41.7، 20 مئی 2016 کو 43.2، 26 مئی 2015 کو 40.5 اور 29 مئی 2014 کو 41.8 ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا تھا۔
عہدیدار نے کہا کہ 21 سے 28 مئی 2024تک عام طور پر خشک موسم کے ساتھ الگ تھلگ مقامات پر گرج چمک کے ساتھ بارش کے امکان کو رد نہیں کیا جا سکتا جبکہ مجموعی طور پر 28 مئی تک کوئی بڑی موسمی سرگرمی نہیں ہوگی۔
انہوں نے کہا کہ جموں صوبہ کے میدانی علاقوں میں گرمی کی لہر پہاڑی اضلاع اور کشمیر صوبہ کے میدانی علاقوں میں گرم اور خشک موسم اگلے 5 دنوں کے دوران جاری رہنے کا امکان ہے۔
دریں اثنا جموں کے سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے سکول کے اوقات میں تبدیلی کی ہے۔ گرمی کی موجودہ لہر کے پیش نظر سکول اب صبح 8 بجے سے دوپہر 12 بجے تک کام کریں گے۔
لیہہ میں موسمیاتی مرکز کے ڈائریکٹر سونم لوٹس نے کہا، “سوموار کو زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 42.3 ڈگری ریکارڈ کیا گیا اور منگل کو یہ 42.5 ڈگری ریکارڈ کیا گیا”۔
انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں پارہ مزید اوپر جائے گا۔