اوڈیسہ میں خود کو پی ایم او آفیشل، فوجی ڈاکٹر ظاہر کرنے والا کشمیری شخص گرفتار

عظمیٰ ویب ڈیسک

بھونیشور// اوڈیسہ پولیس کی سپیشل ٹاسک فورس (ایس ٹی ایف) نے ایک کشمیری شخص کو پرائم منسٹر آفس میں ایک اعلیٰ عہدیدار اور ایک فوجی ڈاکٹر کا روپ دھار کر لوگوں کو دھوکہ دینے، پیسے لوٹنے اور شادیاں کرنے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔
ایس ٹی ایف کے آئی جی جے این پنکج نے بتایا کہ 37 سالہ شخص جس کے مبینہ طور پر پاکستان میں کئی لوگوں سے تعلقات ہیں اور کیرالہ میں مشکوک عناصر نے کئی ریاستوں میں متعدد خواتین سے شادیاں بھی کیں ہیں۔
ایک خفیہ اطلاع کے بعد، ایس ٹی ایف نے جمعہ کو جاج پور ضلع کے نیل پور گاوں سے سید ایشان بخاری عرف ایشان بخاری عرف ڈاکٹر ایشان بخاری کے نامی ملزم کو گرفتار کیا۔
آئی جی نے بتایا،”ملزم ایک نیورو سپیشلسٹ، ایک آرمی ڈاکٹر، پی ایم او میں ایک افسر، این آئی اے کے اعلیٰ عہدیداروں کے قریبی ساتھی اور دیگر کی نقالی کرتا ہوا پایا گیا’۔
پنکج نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ متعدد جعلی دستاویزات جیسے امریکہ کی کارنل یونیورسٹی، کینیڈین ہیلتھ سروسز انسٹی ٹیوٹ، اور دیگر کی طرف سے جاری کردہ میڈیکل ڈگری سرٹیفکیٹ بھی ضبط کر لیے گئے ہیں۔
اس کے علاوہ جموں و کشمیر کے کپواڑہ ضلع سے تعلق رکھنے والے شخص سے کئی حلف نامے، بانڈ، اے ٹی ایم کارڈ، بلینک چیک، آدھار کارڈ اور وزیٹنگ کارڈ بھی ضبط کیے گئے۔
پنکج نے کہا، “یہ بھی پتہ چلا ہے کہ ملزم نے کشمیر، یوپی، مہاراشٹر اور اوڈیشہ سمیت بھارت کے مختلف حصوں سے کم از کم 6 سے 7 خواتین سے شادی کی ہے”۔
پولیس اہلکار نے بتایا کہ بین الاقوامی ڈگریوں کے حامل ڈاکٹر کی نقالی کرتے ہوئے، وہ متعدد خواتین کے ساتھ رومانوی تعلقات میں بھی تھا۔
پنکج نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ ملزم دھوکہ دہی اور جعلسازی کے معاملے میں کشمیر پولیس کو بھی مطلوب ہے اور اس کے خلاف ایک غیر ضمانتی وارنٹ زیر التوا ہے۔ وہ مبینہ طور پر کئی پاکستانی شہریوں اور کیرالہ میں کچھ مشکوک افراد سے رابطے میں تھا۔ ایک سوال کے جواب میں پنجکج نے کہا کہ ایس ٹی ایف کو ان کا آئی ایس آئی سے کوئی تعلق نہیں ملا۔
پنکج نے کہا، ”پنجاب، کشمیر اور اڈیشہ کی پولیس کی ایک مشترکہ ٹیم اس سے پوچھ گچھ کرے گی“۔