نفرت کی سیاست کا اثر منی پور اور ہریانہ میں عیاں: فاروق عبداللہ

File Image

یو این آئی

سری نگر// جموں وکشمیر نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے نوح ہریانہ میں انسانیت سوز واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت اور ملامت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے واقعات کیلئے حکومت براہ راست ذمہ داری ہے۔
موصوف نے ان باتوں کااظہار پارلیمنٹ کے باہر نامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران کیا ۔
انہوں نے کہا کہ نوح ہریانہ میں مسجد کے اندر امام کا سفاکانہ اور وحشیانہ قتل اور اس کے بعد رونما ہوئے فرقہ وارانہ فسادات پر شدیر برہمی اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایک جمہوری اور سیکولر ملک میں اس قسم کے واقعات نہیں ہونے چاہئیں، میں اس کیلئے براہ راست حکومت کو ذمہ دار سمجھتا ہوں کیونکہ یہ لوگ اپنے حقیر سیاسی مفادات کیلئے طبقوں کو ایک دوسرے لڑوانے کیلئے نفرتیں پھیلا رہے ہیں ۔
اسی نفرت کی سیاست کا اثر ہمیں منی پور میں دیکھنے کو مل رہا ہے اور نوح ہریانہ کے بہیمانہ واقعات بھی اسی سیاست کانتیجہ ہے۔
انہوں نے کہا کہ نفرت سیاست کا ہی نتیجہ ہے کہ کل ایک ریلوے پولیس اہلکا رنے اپنے افسر سمیت 4افراد کو گولیوں سے ابدی نیند سلا دیا۔ یہ سب ان ہی (حکمرانوں) کی مہربانی سے ہورہاہے۔
انہوں نے کہا کہ ہندوستان سب کا دیش ہے ، یہ ملک ہر ایک مذہب اور طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد کا ہے، اس کی یہی خصوصیت ہے اور میں حکمرانوں نے اپیل کرتا ہوں کہ وہ اپنی روش کو ترک کرکے ملک کو بچانے کی سعی کرے۔