بانہال میں سرکاری ملازم کے خلاف عصمت دری کا مقدمہ درج، ملزم فرار

File Image

محمد تسکین

بانہال// بانہال پولیس نے محکمہ تعلیم کی سماگرہ شکشا سکیم میں تعینات ایک انجینئر کے خلاف مبینہ عصمت دری اور دھوکہ دہی کا ایک کیس درج کرکے فرار ملزم کی تلاش شروع کر دی ہے۔
بانہال پولیس نے بتایا کہ 23 فروری 2024 کی صبح دس بجے ایک 19 سال کی لڑکی ( نام ظاہر نہیں کیا گیا )نے اپنے والد کے ہمراہ پولیس تھانہ بانہال میں ایک تحریری شکایت درج کرائی جس میں سید یاور امین ولد محمد امین پیر ساکنہ بانہال ، شاکر احمد آہنگر ولد غلام نبی آہنگر ساکنہ صوف شالی کوکرناگ اور شوبی بیگم زوجہ سید یاور امین ساکنہ بانہال کے خلاف عصمت دری اور دھوکہ دہی کے الزامات عائد کئے۔
پولیس نے بتایا کہ تحریری شکایت میں متاثرہ نے الزام لگایا کہ ملزم نمبر 02 شاکر احمد نے اسے اعتماد میں لیا کہ وہ اسے ملازمت دلائے گا اور اس کے بعد شاکر احمد نے اسے اپنے ساتھ لیکر بانہال میں ملزم نمبر 01 سید یاور امین اور ملزم نمبر 03 شوبی بیگم کے گھر 6000 روپئے ماہانہ تنخواہ پر گھریلو ملازمہ کے طور کام کرنے کیلئے بھیج دیا۔
شکایت میں متاثرہ نے الزام لگایا کہ بانہال میں کام پر رہنے کے 18 دن بعد ملزم نمبر تین شوبی بیگم کسی کام کے سلسلے میں جموں چلی گئیں اور تین دن میں جموں سے واپس آنے کی یقین دہانی کرائی لیکن وہ تیراں روز کے بعد بانہال واپس آئیں۔
متاثرہ نے اپنی تفصیلی شکایت میں پولیس کو بتایا کہ ان 13 دنوں کے درمیان ایک دن درخواست گزار گھریلو ملازمہ بیمار ہو گئی اور اس نے اپنے مالک یعنی ملزم نمبر ایک یاور امین کو بتایا کہ اس کی طبیعت ٹھیک نہیں ہے اور اسی رات گئے ملزم نمبر ایک یاور امین نے اسے بغیر ڈھانپے دوائی کی ایک گولی دی اور مذکورہ دوا لینے کے بعد وہ اپنے کمرے میں سو گئی۔
شکایت گزار نے مزید کہا کہ وہ دوائی لیتے ہی بے ہوشی کی حالت میں گہری نیند سو گئی، لیکن جب اگلی صبح وہ نیند سے بیدار ہوئی تو اس نے خود کو بغیر کپڑوں کے دیکھا اور اپنے کمرے کا دروازہ بھی کھلا دیکھا۔ متاثرہ نے الزام لگایا کہ ملزم نمبر ایک سید یاور امین نے اس کے ساتھ مبینہ طور پر عصمت دری کی ہے۔
متاثرہ نے پولیس کو بتایا کہ اس واقع ہونے کے بعد جب ملزم کی اہلیہ شوبی بیگم جموں سے واپس بانہال پہنچیں تو اس نے پوری کہانی اسے سنائی لیکن اس نے اس جرم کو سرے سے ہی مسترد کرکے اس واقع کے ہونے سے ہی انکار کر دیا اور متاثرہ لڑکی کو ہی گھر سے باہر نکال دیا۔
بانہال پولیس نے بتایا کہ لڑکی کی تحریری شکایت پر پولیس سٹیشن بانہال میں ایک مقدمہ زیر ایف آئی آر نمبر 29 /2024 زیر دفعہ 376 اور 420 آئی پی سی درج کرکے تحقیقات شروع کر دی ہے تاہم ملزم فرار ہے۔
پولیس نے بتایا کہ فرار مرکزی ملزم سید یاور امین جو ضلع رام بن میں محکمہ تعلیم کی مرکزی سکیم سماگرہ شکشا ابھیان میں اسسٹنٹ انجینئر کے طور تعینات ہے ۔
اُنہوں نے بتایا کہ مفرور ملزم کو گرفتار کرنے کیلئے پولیس تکنیکی اور انسانی ذرائع کا استعمال کر رہی ہے اور جلد ہی ملزم کو گرفتار کر کے سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا جائے گا۔
انہوں نے کہا کہ سب ضلع ہسپتال بانہال میں لڑکی کی طبی جانچ کرائی گئی ہے اور میڈیکل رپورٹ کا انتظار ہے۔