امرناتھ یاترا: لکھن پور سے امرناتھ گپھا تک 60 ہزار سے زائد سیکورٹی اہلکاروں کی تعیناتی

جموں//یکم جولائی سے شروع ہونے والی 62 روزہ امرناتھ یاترا کے دوران نیم فوجی دستوں کے 60ہزار سے زیادہ سیکورٹی اہلکار لکھن پور سے امرناتھ گپھا تک تعینات کیے جائیں گے۔
یہ تعیناتی 20 جون سے متوقع ہے۔
سرکاری ذرائع نے منگل کو بتایا کہ یکم جولائی سے شروع ہونے والی شری امرناتھ یاترا کے لیے سخت حفاظتی انتظامات کیے جا رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ 60ہزار سے زیادہ سیکورٹی اہلکار جن میں زیادہ تر سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کے شامل ہیں، کے علاوہ آئی ٹی بی پی، بی ایس ایف، ایس ایس ایف، سی آئی ایس ایف کی کمپنیاں بھی یاترا کی مدت کے دوران سیکورٹی ڈھانچہ کو مضبوط بنانے کے لئے ان کے ساتھ شامل ہوں گی۔
ذرائع نے کہا، “ہر سال سیکورٹی ہمیشہ ایک چیلنج ہوتی ہے کیونکہ ملک دشمن عناصر کی طرف سے یاترا کے ہموار انعقاد میں خلل ڈالنے کی کوششوں کو رد نہیں کیا جا سکتا لیکن ہماری سیکورٹی فورسز کسی بھی صورت حال سے نمٹنے کے لیے کافی اہل ہیں”۔
انہوں نے کہا کہ اس سال لکھن پور سے امرناتھ گپھا تک 60ہزار سے زیادہ فوجی اہلکاروں کو نہ صرف حفاظتی اقدام کے طور پر بلکہ یاترا کو آسانی سے سہولت فراہم کرنے کے لیے بھی تعینات کیا جا رہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ “سی آر پی ایف کی اضافی کمپنیاں اس ہفتے تک پہنچنے کی توقع ہے اور 20 جون سے شاہراہ اور بالتل اور پہلگام کے راستوں پر تعیناتی کی جائے گی”۔
انہوں نے کہا کہ معمول کی تعیناتی کے علاوہ کئی مقامات پر اسنائپر اور شارپ شوٹر بھی تعینات کیے جائیں گے جبکہ امرناتھ یاترا کے قافلے کو تکنیکی آلات سے لیس سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ لے جایا جائے گا۔
ایک اہلکار نے کہا،”جیسا کہ گزشتہ سال سٹکی بم دھماکوں، ڈرون کے ذریعے اسلحے کی سمگلنگ اور دیگر واقعات کی اطلاع ملی تھی، اس لیے سیکورٹی ایک چیلنج بنی ہوئی ہے لیکن ہم یاتریوں کے استقبال کے لیے تیار ہیں اور وہ بغیر کسی خوف کے گپھا میں جا کر یاترا کے لیے آ سکتے ہیں”۔
انہوں نے مزید کہا کہ “صرف اندرونی علاقوں میں ہی نہیں، سرحد کے اس پار سے ہونے والی کسی بھی شرارت کو ناکام بنانے کے لیے لائن آف کنٹرول اور بین الاقوامی سرحد پر بھی سیکورٹی کو مزید سخت اور سخت کر دیا گیا ہے”۔
دریں اثناءانتظامیہ نے جموں شہر کے نمایاں مقامات پر پانچ ‘تتکال’ (فوری) رجسٹریشن کاو¿نٹر قائم کئے ہیں۔
“تتکال رجسٹریشن کے لیے تمام پانچ کاو¿نٹرس وشنوی دھام، مہاجن سبھا، پنچایت گھر میں اور دو گیتا بھون اور رام مندر میں سادھوو¿ں کے رجسٹریشن کے لیے قائم کیے گئے ہیں”۔
یاترا کے لیے آن لائن ہیلی کاپٹر ٹکٹوں کی بکنگ بھی اس ہفتے سے شروع ہو جائے گی۔
بالتل، پہلگام اور سری نگر کے راستوں کی بکنگ اس ہفتے شروع ہو جائے گی اور اس سال چار لاکھ سے زیادہ یاتریوں کے آنے کی امید ہے۔
انتظامیہ نے سیاحت کو فروغ دینے اور زیادہ سے زیادہ سیاحوں کو جموں و کشمیر کی طرف راغب کرنے کے لیے یاتریوں کے لیے ’جموں درشن‘ کا منصوبہ بھی بنایا ہے۔
اب تک تقریباً 3 لاکھ یاتریوں نے مبینہ طور پر یاترا کے لیے خود کو آن لائن رجسٹر کرایا ہے۔