تازہ ترین

برطرفی کاحکم نامہ واپس لیا جائے | سماجی بہبود محکمہ کی ہیلپروںکا خالی تھالیاں بجا کر احتجاج

سرینگر//محکمہ سماجی بہبود میں سپر وائزروں کے ساتھ کام کررہی  ہلپروں نے سرینگر میں اپنی برطرفی کے فیصلے کے خلاف خالی تھالیاں بجا کر زورداراحتجاج کیا۔  جموںوکشمیر ہلپرس ٹو سپر وائزر س ایسوسی ایشن (آ ئی سی ڈی ایس) کے بینر تلے برطرف شدہ ہلپرس ٹو سپروائزرس نے سرینگر کی پریس کالونی میں نمودار ہو سرکار کے فیصلے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے زورداد نعرہ بازی کی ۔برطرف کی گئی ان ہلپرس نے ہاتھوں میں خالی پلیٹ اٹھا رکھے تھے جنہیں بجا بجا کر وہ احتجاج کر رہی تھیں ۔احتجاج کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ10 ستمبر کو سوشل میڈیا پر ڈائر یکٹر آئی سی ڈی ایس نے ایک آ رڈر نکالاہے جو انہیں منظور نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے دس برسوں تک اپنی سروس کے ساتھ اس محکمہ کو اپنا خون بھی دیا ہے اور اچانک ہمیں باہرنکالا گیا۔احتجاج میں شامل ہیلپرحکم نامے کو فوری طور واپس کرنے کا مطالبہ کر رہی تھیں۔انہوں نے الزام

برطرفی کاحکم نامہ واپس لیا جائے | سماجی بہبود محکمہ کی ہیلپروںکا خالی تھالیاں بجا کر احتجاج

سرینگر//محکمہ سماجی بہبود میں سپر وائزروں کے ساتھ کام کررہی  ہلپروں نے سرینگر میں اپنی برطرفی کے فیصلے کے خلاف خالی تھالیاں بجا کر زورداراحتجاج کیا۔  جموںوکشمیر ہلپرس ٹو سپر وائزر س ایسوسی ایشن (آ ئی سی ڈی ایس) کے بینر تلے برطرف شدہ ہلپرس ٹو سپروائزرس نے سرینگر کی پریس کالونی میں نمودار ہو سرکار کے فیصلے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے زورداد نعرہ بازی کی ۔برطرف کی گئی ان ہلپرس نے ہاتھوں میں خالی پلیٹ اٹھا رکھے تھے جنہیں بجا بجا کر وہ احتجاج کر رہی تھیں ۔احتجاج کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ10 ستمبر کو سوشل میڈیا پر ڈائر یکٹر آئی سی ڈی ایس نے ایک آ رڈر نکالاہے جو انہیں منظور نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے دس برسوں تک اپنی سروس کے ساتھ اس محکمہ کو اپنا خون بھی دیا ہے اور اچانک ہمیں باہرنکالا گیا۔احتجاج میں شامل ہیلپرحکم نامے کو فوری طور واپس کرنے کا مطالبہ کر رہی تھیں۔انہوں نے الزام

برطرفی کاحکم نامہ واپس لیا جائے | سماجی بہبود محکمہ کی ہیلپروںکا خالی تھالیاں بجا کر احتجاج

سرینگر//محکمہ سماجی بہبود میں سپر وائزروں کے ساتھ کام کررہی  ہلپروں نے سرینگر میں اپنی برطرفی کے فیصلے کے خلاف خالی تھالیاں بجا کر زورداراحتجاج کیا۔  جموںوکشمیر ہلپرس ٹو سپر وائزر س ایسوسی ایشن (آ ئی سی ڈی ایس) کے بینر تلے برطرف شدہ ہلپرس ٹو سپروائزرس نے سرینگر کی پریس کالونی میں نمودار ہو سرکار کے فیصلے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے زورداد نعرہ بازی کی ۔برطرف کی گئی ان ہلپرس نے ہاتھوں میں خالی پلیٹ اٹھا رکھے تھے جنہیں بجا بجا کر وہ احتجاج کر رہی تھیں ۔احتجاج کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ10 ستمبر کو سوشل میڈیا پر ڈائر یکٹر آئی سی ڈی ایس نے ایک آ رڈر نکالاہے جو انہیں منظور نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے دس برسوں تک اپنی سروس کے ساتھ اس محکمہ کو اپنا خون بھی دیا ہے اور اچانک ہمیں باہرنکالا گیا۔احتجاج میں شامل ہیلپرحکم نامے کو فوری طور واپس کرنے کا مطالبہ کر رہی تھیں۔انہوں نے الزام

عمرآبادشاہ ہمدان سیکٹر 2زینہ کوٹ میں پانی جمع ؔ راہگیروںکومشکلات ، میونسل حکام سے مداخلت کی اپیل

سرینگر //عمرآبادشاہ ہمدان سیکٹر (2)زینہ کوٹ ایچ ایم ٹی سرینگر کی سڑک حالیہ بارشوں کے بعد پانی سے بھری پڑی ہے جس کے نتیجے میں راہگیروں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سڑک پر پچھلے ہفتے کی بارش کی وجہ سے پانی جمع ہوا ہے اور عوام کو چلنے میں کافی دشواریاں پیش آتی ہیں ۔مقامی لوگوں نے کہا کہ انہوں نے متعدد بار اس تعلق سے میونسپل حکام سے رابطہ قائم کیا لیکن محکمہ کی ٹیمیں کہیں نظر نہیں آرہی ہیں اور نہ ہی پانی کو نکالنے کیلئے کوئی کارروائی عمل میں لائی جاتی ہے ۔انہوں نے ایل جی انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ وہ اس جانب فوری دھیان دیں تاکہ لوگوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔  

گرمی پہنچانے کی جدید سہولیات کے باوجود کانگڑی کی اہمیت برقرار

  سرینگر//وادی کشمیر میں جدید ترین گرمی دینے والے آلات کے باوجود کانگڑی کی اہمیت برقرار ہے ۔وادی میں موسم سرما شروع ہوتے ہی لوگ سردی سے بچنے کے لئے کانگڑیوں کا استمال کرتے ہیں۔جنوبی ضلع پلوامہ کے رہمو علاقے سے تعلق رکھنے والے غلام  احمد بھگت 50 برسوں سے کانگڑی بنانے کی صنعت سے وابستہ ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ وادی کے لوگ کانگڑی کا استعمال صدیوں سے کرتے آرہے ہیں اور دور جدید میں بھی اس کی اہمیت برقرار ہے۔  کے این ایس کے مطابق جدید ٹیکنالوجی کے دور جہاں گرمی دینے والے کئی طرح کے آلات موجود ہیں، اس کے باوجود بھی کشمیرمیں سردیوں کی مہارانی کانگڑی کی اہمیت کم نہیں ہوئی ہے۔پلوامہ کے رہمو علاقے میں کئی افراد کانگڑی بنانے کے پیشہ سے وابستہ ہیں۔ غلام احمد بھگت نامی شخص پچھلے 50 برسوں سے کانگڑی بنانے کے پیشہ سے وابستہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ اسی پیشہ سے روزگار حاصل کر کے اپنے گھر کو