تازہ ترین

سری نگر میں ’ویک اینڈ‘ لاک ڈاون سے معمولات زندگی متاثر

سری نگر// سری نگر میں ہفتے کے رو ’ویک اینڈ‘ لاک ڈاون نافذ رہنے سے معمولات زندگی متاثر ہو کر رہ گئے۔ یاد رہے کہ گذشتہ ہفتے عید الاضحی کے پیش نظر ’ویک اینڈ‘ لاک ڈاون کو منسوخ کیا گیا تھا تاکہ لوگ عید خریداری کر سکیں۔ آج شہر میں ایک بار پھر ’ویک اینڈ‘ لاک ڈاون نافذ رہا جس کے باعث بازاروں میں تمام دکان بند رہے تاہم سڑکوں پر ٹرانسپورٹ کی نقل و حمل جزوی طور پر جاری رہی۔  

رعناواری اسپتال میں ٹیلی آئی سی یومنصوبے کا افتتاح

سرینگر //محکمہ صحت و طبی تعلیم کے ایڈیشنل چیف سیکریٹری اتل ڈلو نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی تیسری لہر سے بچنے کیلئے کورونا مخالف قوائد و ضوابط پر عمل کرنا لازمی ہے۔ جواہرلال نہرو میموریل اسپتال رعناواری میں ٹیلی آئی سی یو منصوبہ کا فتتاح کرنے کے بعد ایڈیشنل چیف سیکریٹری نے کہا کہ کورونا وائرس کی ممکنہ تیسری لہر سے نپٹنے کیلئے تیاریوں کا سلسلہ جار ی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے لڑنے کیلئے پہلا ہتھیار قوائد و ضوابط پر عمل کرکے ماسک پہننا اور سماجی دوری کا اہتمام کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا مخالف دوسرا ہتھیار ٹیکہ کاری ہے اور ٹیکہ کاری کا عمل پورے جموں و کشمیر میں جاری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ابتک چند اضلاع میں 45سال تک کے افراد کی ٹیکہ کاری مکمل کر لی گئی ہے جبکہ دیگر اضلاع میں ٹیکہ کاری کا عمل جاری ہے۔ اتل ڈلو نے کہا کہ تیسرا ہتھیار آکسیجن کی سپلائی کو یقینی بنانا ہے ۔ انہوں ن

۔25سے27جولائی تک

 سرینگر//ٹریفک پولیس سرینگر نے کہا ہے کہ 25سے 27جولائی تک بلیوارڈ ۔ گپکار روڑ پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل رہے گی۔محکمہ ٹریفک نے گاڑیاں چلانے والوں سے استدعا کی ہے کہ وہ رام منشی باغ، ڈل گیٹ، رعناواری، حضرت بل، حبک ، فور شور، نشاط راستہ کاانتخاب کریں۔ بیان کے مطابق رام منشی باغ کراسنگ، بڈیاری کراسنگ ڈلگیٹ اور نشاط۔فورشور کراسنگ پر ٹریفک کو موڑا جائیگا۔

تعمیری اجازت ناموں کا حصول

سری نگر/یو این آئی/سری نگر میونسپل کارپوریشن کے میئر جنید عظیم متو کا کہنا ہے کہ بلڈنگ اجازت نامے حاصل کرنے میں جس قدر سہولیات بہم ہوں گی اتنے ہی 'غیر قانونی تعمیراتی کام' کم ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ لوگوں کی بلڈنگ اجازت نامے حاصل کی جانے والی درخواستیں21  دنوں میں منظور یا مسترد ہونی چاہئے۔ان کا کہنا تھا کہ سری نگر میں ہمارے افسروں کو دس دس بارہ بارہ ماہ ان کیسوں کو حل کرنے میں لگتے ہیں۔انہوںنے ان باتوں کا اظہار جمعے کے روز یہاں نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرنے کے دوران کیا۔انہوں نے کہا: 'لیفٹیننٹ گورنر صاحب نے ایک دو دن قبل ایک میٹنگ میں کہا کہ بلڈنگ اجازت نامے حاصل کرنے کی درخواستیں 21 دنوں میں منظور یا مسترد ہونی چاہئے لیکن سری نگر میں ہمارے افسروں کو دس دس بارہ بارہ ماہ ان کیسوں کو حل کرنے میں لگ جاتے ہیں'۔ان کا کہنا تھا: 'اگر ہمارے افسران سمجھتے ہیں کہ ایسا کر