لاک ڈائون سے بیشتر طبقے معاشی بدحالی کا شکار:ڈاکٹر فاروق

سرینگر //نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کل سٹی سینٹر سنگر مال کمپلیکس میں آیس کریم شاپ و ریسٹورنٹ کا افتتاح کیا ۔اس موقعہ پر وہاں لوگوں کی ایک بڑی تعداد موجود تھی تاہم افتتاحی تقریب کے بعد ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے میڈیا سے کوئی بھی بات نہیں کی۔سنیچر کو پونے 12بجے ڈاکٹر فاروق عبداللہ سنگر مال پہنچے اور نیرولاس نامی آیس کریم شاپ کا افتتاح کیا۔جس دوران پولیس کی بھاری نفری وہاں تعینات تھی جبکہ میڈیاسے وابستہ افراد کو بھی اندر جانے کی اجازت نہیں دی گئی ۔قریب آدھے گھنٹے کے بعد ڈاکٹر فاروق اپنی گاڑی میں سوار ہوئے اور واپس اپنی رہائش گاہ پہنچے۔ اس سے قبل میڈیا نمائندوں نے ڈاکٹر فاروق عبداللہ سے بات کرنے کی کوشش کی تاہم انہوں نے انکار کر دیا ۔اس دوران نیشنل کانفرنس نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ مسلسل لاک ڈائون سے کا یہاں کا ہر ایک شعبہ متاثر ہوا ہے ۔ 5اگ

سماجی ذمہ داری نبھانے کا جذبہ اور قمرواری کے نوجوان کی پہل

  سری نگر// کورونا وائرس میں مبتلا ہو کر انتقال کرنے والوں کی تجہیز و تکفین جب ایک سماجی مسئلے کا رخ اختیار کر گیا تو سری نگر سے تعلق رکھنے والے ایک تاجر پیشہ نوجوان نے ذاتی خرچے پر ان متوفین کی لاشوں کی تدفین کا بیڑا اٹھایا۔ قمر واری علاقے سے تعلق رکھنے والے 38 سالہ سجاد احمد خان نے بیس لڑکوں پر مشتمل رضاکاروں کی ایک ٹیم تیار کی ہے جنہیں چار چار رضاکاروں کے گروپس میں منقسم کیا ہے۔ سجاد احمد سری نگر کے کسی علاقے سے کووڈ مریض کے انتقال کے متعلق کال حاصل کرتے ہی ان رضاکاروں کو حفاظتی لباس فراہم کر کے جائے موقع پر متوفی کی تجہیز و تکفین کے لوازمات کی ادائیگی کے لئے روانہ کرتے ہیں، جہاں وہ لوازمات کی ادائیگی کے بعد حفاظتی لباس کو خاکستر کر کے سیدھے قرنطینہ میں چلے جاتے ہیں۔ وہ ان رضاکاروں کے حفاظتی لباس کا خرچہ خود برداشت کرتے ہیں۔سجاد احمد نے اپنی اس اہم پہل کے حوالے بتایا کہ کور

سولنہ سلک فیکٹری احاطے کوثقافتی مرکز کے طور پر ترقی دی جا رہی ہے : دویدی

جموں //کمشنر سیکرٹری صنعت و حرفت منوج کمار دویدی نے کل عالمی بنک کی معاونت والے جہلم توی فلد ریکوری پروجیکٹ کے روز گار کے عنصر کا تفصیلی جائیزہ لیا ۔ میٹنگ میں منیجنگ ڈائریکٹر (جے کے آئی )، ڈائریکٹر خزانہ  و ایڈیشنل سیکرٹری محکمہ صنعت و حرفت اور جے ٹی ایف آر آر پی کے دیگر افسران موجود تھے ۔ پروجیکٹ کے تحت سولنہ سلک فلچرس احاطے کو فن ، دستکاری اور ثقافتی مرکز کے طور ترقی دی جا رہی ہے ۔ اس موقعہ پر بتایا گیا کہ اس ضمن میں مفصل پروجیکٹ رپورٹ کو مرتب کرنے کیلئے پہلے ہی کنسلٹینٹ مقرر کیا گیا ہے اور پروجیکٹ پر عنقریب کام شروع ہو گا ۔ پروجیکٹ کے تحت جموں کشمیر کے کاریگروں کی مفصل تفصیل مرتب کی جا رہی ہے اور مکمل ہونے پر جموں کشمیر قریباً 2.50 لاکھ کاریگروں کی معاشرتی و معاشی حالاتِ زندگی میں بہتری لانے کیلئے موثر اقدامات اٹھائے جائیں گے ۔ پروجیکٹ کے تحت 5 دستکاری و ہینڈ لوم کلسٹروں کو

ہمہامہ اور مگھر مل باغ میں آگ

سرینگر//سرینگرائرپورٹ روڈ پر ہمہامہ چوک میںآگ کی ایک واردات میں2منزلہ تجارتی عمارت کو زبردست نقصان پہنچا جبکہ مگھر مل باغ میں2 رہایشی مکانات خاکستر ہوئے ۔عینی شاہدین کے مطابق سنیچر کی صبح10بجے ہمہامہ چوک میں دو منزلہ تجارتی عمارت جس کی پہلی اور دوسری منزل میں دوکانیں ہیں اور اوپری منزل پر ہال ہے ،سے آگ نمودار ہوئی ۔اس موقعہ پر دکانداروں اور مقامی لوگوں نے از خود آگ بجھانے کی کوشش کی جس کے ساتھ ہی محکمہ فائر اینڈ ایمر جنسی نے آگ پر قابو پانے کی کارروائی کی اور آگ کو مزید پھیلنے سے روک لیا ۔آگ سے عمارت کی اوپری منزل جل گئی اور اس میں موجود لاکھوں روپے مالیت کا سامان راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوا۔یہ عمارت عبدالرشید حجام ساکنہ ہمہامہ کی ملکیت ہے۔آگ لگنے کی وجہ شارٹ سرکٹب بتائی جاتی ہے ۔پولیس نے کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی ہے۔اس دوران تحصیلدار بڈگام نے جائے واردات کا دورہ کرکے آگ سے ہ

مسافر گاڑیوں کے ڈرائیوروں کا پریس کالونی میں احتجاج

سرینگر //سر ینگر جموں شاہراہ پر چلنے والی چھوٹی مسافر بردار گاڑیوں کے ڈرائیوروں اور مالکان نے شاہراہ پر سروس بحال کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا۔ سومو ڈرائیوروں نے سنیچر کو پریس کالونی میں احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ،موجودہ لاک ڈائون کی وجہ سے ان کی مالی حا لت خراب ہو ئی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر موجودہ لاک ڈاون میں جموں وکشمیر اور اسکے باہر سومو گاڑ یوں کو چلنے کی اجازت دی گئی لیکن  سرینگر سے جموں اور وہاں سے واپس انہیں مسافروں کو سوارکرنے کی اجاز ت نہیں دی جارہی ہے۔مظاہرین نے کہا کہ اگر چہ انتظا میہ نے انہیں پانچ ہی افراد کو سوارکرنے کی اجا زت دی ہے جس کیلئے بھی وہ تیار ہے لیکن پھر بھی اجازت نہیں دی جارہی ہے۔ انہوںنے کہا کہ 250سومو، تویرااور ا ینوا گاڑ یاں گھروں میںبے کار ہیں۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ ایک طرف وہ گاڑیوں کا فا ئنا نس ادا نہیں کر پارہے ہیں وہیں دوسری طرف گاڑیاں بے کار

کرسو راجباغ میں سڑکوں کی حالت ناگفتہ بہہ

سرینگر //کرسو راجباغ میں سڑکوں کی حالت ناگفتہ بہہ ہے اور یہ سڑکیں کھنڈرات کا منظر پیش کر رہی ہیں۔ماڈرن ہسپتال کے قریب کرسو کی طرف جانی والی سڑک اس قدر خستہ ہے کہ لوگ اس پر گاڑیاں چلانے سے کتراتے ہیں کیونکہ اس سڑک پر گہرے کھڈے پیدا ہو چکے ہیں اور اکثر ان کھڈوں کی وجہ سے گاڑیوں کو نقصان پہنچتا ہے ۔بارش ہوتے ہی ان کھڈوں میں پانی جمع ہو جاتا ہے اور دھوپ میں گردوغبار کے بادل چھا جاتے ہیں ۔مقامی لوگوں نے کہا کہ انہوں نے متعدد بار حکام سے رجوع کیا لیکن اس جانب دھیان دینے کے بجائے محکمہ آر اینڈ بی خاموش تماشائی بنا ہوا ہے ۔  

تازہ ترین