تازہ ترین

محکمہ بجلی کے عارضی ملازمین کی پریشانیاں | حفاظتی کٹ اور خصوصی کارڈوں کی فراہمی کا مطالبہ

سرینگر// وادی میں کرئونا کرفیو کے دوران لازمی خدمات فراہم کرنے والے محکمہ بجلی کے عارضی ملازمین نے اس مہلک وائرس سے بچائو کیلئے ضروری ساز و سامان سے لیس کرنے اور اُنہیں خصوصی شناختی کارڈ فراہم کرنے کامطالبہ کیا ہے۔ کرونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے لاک ڈائون کے دوران لازمی سروس فراہم کرنے والے محکمہ بجلی کے عارضی ملازمین نے انہیں کام کے دوران ضروری ماسکوں اور سینی ٹائزروں سے لیس کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی جان کو خطرے میں ڈال کر فی الوقت لازمی سروس فراہم کر رہے ہیں۔عارضی ملازمین کی انجمن پی ڈی ایل و ٹی ڈی ایل ڈیلی ویجرس ایسو سی ایشن کا کہنا ہے کہ عارضی ملازمین نہ صرف اپنی بلکہ اپنے اہل و عیال کی سلامتی کو خطرے میں ڈال کر پُرخطر صورتحال میں کام کر رہے ہیں اور ہمہ وقت بجلی کی سپلائی کو یقینی بنانے کیلئے میدان میں ہیں،تاہم انہیں سینی ٹائزروں اور ماسکوں کی شدید قلت کا سامنا

مختلف علاقوں میں اساتذہ نے رضاکارانہ طور آن لائن تدریس شروع کی

سرینگر//شیر کشمیر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ کے سربراہ ڈاکٹر اے جی آہنگر نے کورونا وائیرس کے پھیلاؤ سے متعلق اُن کے نام سے پھیلائی جا رہی غلط خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ لوگوں کو افواہوں پر دھیان نہیں دینا چاہئے ۔ سوشل میڈیا پر پھیلائی جا رہی ایک خبر کے تعلق سے ڈائریکٹر سکمز نے کہا کہ اس خبر میں کوئی سچائی نہیں ہے ۔ ڈائریکٹر سکمز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ من گھڑت باتیں ہیں اور ان میں کوئی حقیقت نہیں ہے ۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ غیر تصدیق شدہ واقعوں میں یقین نہ کریں ۔   

لاک ڈاؤن کی مہربانی | دودھ سپلائی کرنیوالوں کو بھی روک دیا گیا

سرینگر //کورونا وائرس کے پھیلائو کی روک تھام کیلئے انتظامیہ نے شہر بھر میں سخت بندشیں عائد کر دی ہیں اور عوام کی صحت کا خیال رکھتے ہوئے انہیں گھروں میں ہی رہنے کی اپیل کی جا رہی ہے تاہم اس بیچ شہر کے متعدد علاقوں میں گھروں میں محصور لوگوں کو دودھ سپلائی نہیں ہو سکا ہے کیونکہ متعدد علاقوں میں دودھ سپلائی کرنے والوں کو بھی روک دیا گیا۔ اس دوران پولیس کا کہنا ہے کہ سرکاری ہدایات کے مطابق کرفیو پاس کے بغیر کسی کو بھی چلنے کی اجازت نہیں ہو گی۔ شہر میں جو دودھ گھر گھر  سپلائی کیا جاتا ہے اس کی قلت پیدا کا امکان ہے ۔شہر سرینگر میں اس وقت جو دودھ پہنچ رہا ہے وہ  چاڈورہ ، پلوامہ ، بڈگا م اور دیگر علاقوں سے آتا ہے اور دودھ سپلائی کرنے والوں کو روکنے سے شہر میں دودھ کی کمی ہونے کا امکان ہے۔حیدپورہ ، صنعت نگر ، چھان پورہ ، باغات ، برزلہ ، بمنہ ، ایچ ایم ٹی سمیت کئی علاقوں سے لوگوں نے کش

تازہ ترین