وادی کے واحد امراض سینہ اسپتال کا او پی ڈی 10ماہ سے بند

 سرینگر //سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں 10ماہ تک او پی ڈی بند رہنے کی وجہ سے دمہ اور سینہ کے مختلف امراض میں مبتلا مریضوں کو سخت مشکلات کاسامنا ہے۔ مریضوں کا کہنا ہے کہ اسپتال میں او پی ڈی بند ہونے کی وجہ سے وہ مختلف اسپتالوں کے چکر کاٹنے پر مجبور ہورہے ہیں اور اگر کسی مریض کو خصوصی علاج کی ضرورت پڑے، تو وہ کہیں دستیاب نہیں ہے۔انہوں نے بتایا کہ انہیں ان ادویات اور آکسیجن کیلئے ہزاروں روپے صرف کرنے پڑرہے ہیں جنہیں اسپتال میں مفت فراہم کیا جاتا تھا۔واضح رہے کہ اسپتال میں روزانہ قریب 500 مریضوں کا طبی معائنہ کیا جاتا تھا جبکہ 20سے زیادہ مریضوں کا داخلہ کیا جاتا تھا۔ اسپتال میں اسوقت صرف 17کورونا وائرس مریض زیر علاج ہیں جن میں 6کو آکسیجن کی ضرورت پڑتی ہے اور ان ہی 6مریضوں کیلئے اسپتال کو عام مریضوں کیلئے بند رکھا گیا ہے۔ اسپتال میں شعبہ امراض چھاتی کے سربراہ ڈاکٹر نوید نذیر نے کشمیر عظمیٰ

کورونا ٹیکہ کاری عمل کو جلد مکمل کیا جائے: اتل ڈلو

سرینگر // جموں و کشمیر میں 1 لاکھ12ہزار 893ہیلتھ ورکروں کی ٹیکہ کاری کا عمل جاری ہے اور ابتک 15ہزار 403ہیلتھ ورکروں کو  100ویکسین پوئنٹس پر ٹیکے لگائے گئے ہیں۔ ان باتوں کا اظہار فائنانشل کمشنر ہیلتھ اتل ڈلو نے محکمہ صحت و طبی تعلیم کی ایک میٹنگ کے دوران کیا ۔ میٹنگ میں ڈائریکٹر ہیلتھ جموں، ڈی پلاننگ( صحت و طبی تعلیم) اور یو این ڈی پی کے علاوہ تمام چیف میڈیکل افسران اور ہیلتھ افسران موجود تھے ۔ پرنسپل جی ایم سی سرینگر ، ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر ، چیف میڈیکل آفسران ، میڈیکل سپر انٹنڈنٹوں نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کی ۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ پیر کو 4ہزار ہیلتھ ورکروں کو کورونا مخالف ٹیکے لگائے گئے اور ہر گزرتے دن کے ساتھ اس میں اضافہ ہورہا ہے۔ میٹنگ میں مزید کہا گیا کہ ایک لاکھ12ہزار 893ہیلتھ ورکروں میں سے 15ہزار 403 کو ٹیکہ لگائے گئے ہیں۔ اتل ڈلو نے افسران کو حکم

شہر کے سیول لائنز علاقے میں بدترین ٹریفک جام

سرینگر// سونہ وار اسٹیڈیم میں26جنوری کی تقریب کے پیش نظر رام منشی باغ سے ٹی آر سی تک سڑک کو بند کرنے کے نتیجہ میں بٹوارہ سے ڈلگیٹ تک پیرکو بد ترین ٹریفک جام رہا۔ سونہ وار کرکٹ اسٹیڈیم کے متصل رام منشی باغ سڑک کو  ریڈیو کشمیر کراسنگ تک عام ٹریفک کی نقل و حمل کیلئے پیر کے روز بند کیا گیا ۔ سڑک بند کرنے کی وجہ سے تمام گاڑیوں کو سونہ وار سے ڈلگیٹ کی جانب موڑ دیا گیا،جس کے نتیجے میں بدترین ٹریفک جام کے مناظر دیکھنے کو ملے۔ مسافروں کا کہنا ہے کہ اتھواجن بائی پاس سے لیکر ڈلگیٹ تک سینکڑوں گاڑیاں ٹریفک جام میں پھنس گئیں،جبکہ بٹوارہ سے لیکر ڈلگیٹ تک گاڑیوں کی طویل قطاریںلگ گئیں۔ ڈرائیوروں کا کہنا تھا کہ انتظامیہ اور ٹریفک سے متعلق ایجنسیوں نے پیشگی کوئی بھی ٹریفک پلان مشتہر نہیں کیا جس کی وجہ سے یہ صورتحال پیدا ہوئی۔ٹریفک جام کی وجہ سے گاڑیوں میں مسافر درماندہ رہ گئے اور بعد میں بیشتر مساف

تازہ ترین