تازہ ترین

گیس پائپ لائن منصوبہ کب مکمل ہوگا؟

  گزشتہ دنوںمقامی میڈیا میں بٹھنڈا سرینگر گیس پائپ لائن منصوبے سے متعلق ایک خبر شائع ہوئی تھی جس میں اس کی مسلسل تاخیر کا احوال پیش کیاگیا تھا۔جون2011میں اُس وقت کے وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے بٹھنڈا پنجاب سے جموں کے راستے سرینگر تک328 کلو میٹر گیس پائپ لائن کے اہم پروجیکٹ کی منظوری دی تھی جسے تین سال میں مکمل کرنے کا اعلان کیاگیا تھا۔پانچ ہزار کروڑ روپے مالیت کے اس پروجیکٹ کو جولائی 2011میں ہی شروع کیاگیااورجولائی2014تاریخ تکمیل مقرر کی گئی تھی تاہم10برس بیت جانے کے بعد بھی آج صورتحال یہ ہے کہ اس پروجیکٹ کا عملی آغاز ہونا باقی ہے ۔ یہ پروجیکٹ اس لئے انتہائی اہمیت کا حامل تھا کیونکہ یہ متبادل توانائی کامؤثر ذریعہ بن سکتا تھا ۔یہی وجہ ہے کہ مقررہ مدت کے اندر اندر اس پروجیکٹ کو مکمل کرنے کی ہدایت دی گئی تھی اور اس کے بعد اس پروجیکٹ پر پیش رفت کے حوالے سے جائزہ میٹنگیں بھی طلب کی جا