تازہ ترین

وجودِ زن سے تصویر ِکائنات میں رنگ

 جموںوکشمیر ہائی کورٹ نے خواتین کے خلاف تشدد پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے متاثرین کی امداد کیلئے سرکاری سکیموں کی وسیع تشہیر پر زور دینے کے علاوہ تشدد کے اس سلسلہ کے خاتمہ کی بھی وکالت کی ہے ۔مفاد عامہ کی ایک عرضی کی سماعت کے دوران ایک مفصل حکم نامہ جاری کیاگیا ہے جس میں خواتین کیخلاف تشدد کا جو نقشہ کھینچا گیا ہے ،وہ دل دہلادینے والا ہے۔اُن تفصیلات میں جائے بغیر ماہرین سماجیات کی جانب سے گزشتہ برس کئے گئے ایک سروے کے مطابق کشمیر میں40فیصد سے زائد خواتین گھریلو تشدد کی شکار ہیں۔سروے کے مطابق گھریلو تشدد کے بیشتر معاملات میں وجوہات جہیز ،سسرال والوں کی مداخلت ،غلط فہمی ،شوہر کی طرف سے زیادتیاں، بچیوں کو جنم دینا وغیرہ شامل ہیں۔ سابق ریاستی خواتین کمیشن کے اشتراک سے2003میں ایک سروے کیاگیاتھا جس میں پایا گیا تھا کہ کشمیر میں30فیصد خواتین کو اپنے شوہروں کی جانب سے جسمانی تشدد کا س