تازہ ترین

کورونا کیخلاف جنگ

 کورونا وائرس کا بحران سنگین سے سنگین تر ہوتا جارہا ہے ۔ملک اور باقی دنیا کی طرح جموںوکشمیر خاص کر وادی کشمیر میں کورونا متاثرین کی تعداد تشویشناک رفتار سے بڑھ رہی ہے اور یہ تعداد اب دو سو کا ہندسہ چھونے والی ہے جس کا مطلب یہ ہے کہ یہ لڑائی مستقبل قریب میں ختم ہونے والی نہیں ہے تاہم ہمیں ہار بھی نہیں ماننی چاہئے۔ ایک ہی آپشن بچا ہے کہ ہم یہ جنگ لڑیں اور جیتیں بھی لیکن سرخرو ہونے کیلئے صبر و تحمل سے کام لینے کے ساتھ ساتھ ایک منظم طریقہ کار اختیار کرنے کی بھی ضرورت ہے ۔منظم طریقہ کار کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ یہ آپ میں تھکان کے عنصر کو پنپنے نہیں دیتا ہے اور یہ ہمیشہ ایک نئے ولولہ کے ساتھ نئے سرے سے سوچنے اور نئی حکمت عملی مرتب کرنے کا حوصلہ فراہم کرتا ہے ۔اس جنگ میں جو انفرادی ،خانگی ،ہمسائیگی اور انتظامی سطح پر بیک وقت کئی محاذوں پر لڑی جارہی ہے ،ہر محاذ کو اپنا کردار نبھانا ہ