مرحوم ٹاک زینہ گیری کشمیر کا ایدھی

آج کے جدید اور بے ہنگم دور میں ایسے فلاحی اداروں کا قیام جو خالصتاٌ رضاکارانہ طور اِنسانی خدمات کیلئے معرض ِ وجود میں آئے ہوں، در اصل انبیائی اصولوں کی پاسداری اور اتباع کی عملی شکل ہے۔اِس تناظر میں جموں و کشمیر یتیم ٹرسٹ کا قیام بھی 1972ء میں مرحوم عبد الخالق ٹاک زینہ گیری کے مبارک ہاتھوں ہوا۔مرحوم ٹاک صاحب ایک عظیم ا لمرتبت اِنسان دوست اور سلیم ا لفطرت تھے۔ اعلیٰ سوچ کے حامل قلمکار اور شاعر ہونے کے ساتھ ساتھ آپ ایک ایماندار اور قابل سرکاری آفیسر تھے۔غریب ، نادار ، اور مفلس عوام کے تئیں ایک ہمدردانہ دل اور محبت بھرا جذبہ رکھتے تھے۔مرحوم موصوف جموں و کشمیر یتیم ٹرسٹ کی بنیاد ڈالنے سے پہلے ہی انفرادی طور اور اپنے کچھ رضاکاران کے ساتھ مل کر خدمتِ خلق کے عظیم کام میں ہمہ تن مصروف ِ عمل ہو چکے تھے۔ چونکہ وہ محکمہ مال سے وابستہ تھے ، اور ایک بنیادی ممبر کی حیثیت سے اکثر دیہات اور دوسری

تازہ ترین