تازہ ترین

نگروٹہ تصادم آرائی پر اہم پیش رفت،سرحدسرنگ کے ذریعہ عبور کی:دلباغ سنگھ | ’جٹوال میں ٹرک پر سوارہونے سے قبل 14 کلومیٹر کی مسافت طے کی‘

جموں// ایک اہم پیش رفت میں سیکورٹی فورسز نے دعویٰ کیا ہے کہ سانبہ سیکٹر میں ایک سرنگ کا پتہ لگایا گیا ہے جسے جیش محمد کے 4  جنگجوؤں نے پاکستان سے بھارتی حدود میں داخل ہونے کیلئے استعمال کیاتھا جنہیں نگروٹہ میں جاں بحق کردیاگیا۔یہ جیش محمد سے وابستہ جنگجو تھے۔واضح رہے کہ نگروٹہ کے بن ٹول پلازہ میں 19 نومبر 2020 کو ایک ٹرک کو روکا گیا اور تلاشی کے دوران ٹرک کاڈرائیور وہاں سے فرار ہوگیا جس پر شبہ ہوجانے پر باریکی سے ٹرک کے اندر تلاشی جاری رکھی گئی جس دوران جھڑپ میں چار جنگجوئوں کی ہلاکت ہوئی ۔انسپکٹر جنرل بی ایس ایف جموں فرنٹیئر این ایس جموال نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا، ’’ہمارے پاس انٹلیجنس اطلاعات تھیں کہ جنگجو جٹوال (سانبہ) سے ٹرک پر سوار ہوئے تھے لہٰذا ہم سرنگ کا پتہ لگانے کے لئے کام پر لگ گئے ، سرنگ کو تازہ کھودا گیا تھا‘‘۔ آئی جی بی ایس ایف نے مزید بتایا کہ

پونچھ میں حدمتارکہ پر تعینات فوجی کا انتہائی اقدام

جموں //پونچھ مین حدمتارکہ پر تعینات ایک سپاہی نے مبینہ طور اتوار کواپنی ہی سروس بندوق سے اپناخاتمہ کیا۔مہلوک کی شناخت حوالدارراجندرکمار کے طور ہوئی ہے ۔اُس نے سالوتری علاقہ مین اتوار صبح8بجکر25منٹ پرخودکو اپنی ہی بندوق سے گولی مار دی۔اُسے دیگر ساتھیوں نے فوری طوراسپتال پہنچایا جہاں اُس نے 10بجکر05منٹ پر دم توڑ دیا۔حکام کے مطابق  حوالدار راجندر کمار کے اس انتہائی قدم کے پیچھے محرکات کاپتہ ابھی نہیں چلاہے ۔پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے۔بتادیں کہ جموں و کشمیر میں سیکورٹی فورسز اہلکاروں کی طرف سے خودکشی کرنے کے رجحان میں کئی تدابیر اپنانے کے باوجود بھی کوئی تفاوت دیکھنے کو نہیں مل رہی ہے۔ مبصرین کا کہنا ہے کہ سیکورٹی فورسز اہلکاروں میں خودکشی کے بڑھتے ہوئے رجحان کی وجہ سخت ڈیوٹی، اپنے عزیز و اقارب سے دوری اور گھریلو و ذاتی پریشانیاں ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگرچہ

تازہ ترین