عارضی ملازمین کی ہڑتال جاری | دربار مو کے بعد جموں میں سیول سیکریٹریٹ کا گھیرائو کرنے پر آمادہ

جموں// جموں و کشمیر کیجول لیبررز فرنٹ کے ذریعہ 9 نومبر کو جموں میں سیول سیکریٹریٹ کھلنے کے دن سیکریٹریٹ کا گھیرائو کرنے کاپروگرام تیار کیاجارہاہے ۔عارضی ملازمین کی تنظیم کے صوبائی صدر عمران پرے نے بتایا’’یہ بہت بدقسمتی کی بات ہے کہ حکومت نے ہماری باقاعدگی سے متعلق کوئی سنجیدہ اقدام نہیں کیا، ہم 61ہزار سے زائد عارضی ملازمین مختلف محکمہ جات میں دن رات 25 سال سے زیادہ عرصہ سے کام کررہے ہیں‘‘۔پرے نے کشمیرعظمیٰ بتایا کہ انہوں نے 1995-96 سے کام کیا ہے اوروہ بھی اس وقت جب عسکریت پسندی عروج پر تھی اور کوئی دوسرا شخص محکموں کی خدمت کے لئے تیار نہ تھا۔عمران پرے نے کہا’’وادی کشمیر میں 10 سے زائد عارضی ملازمین نے خودکشی کرلی ہے اور بہت سے دوسرے فرائض کے دوران اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں اور ان کے اہل خانہ کو مبینہ طور پر حکومت کی طرف سے کوئی مالی مدد یا نوکری

رام بن کا نوجوان | یوپی حکومت میں ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل مقرر

جموں// اتر پردیش حکومت نے جموں وکشمیر کی سرزمین سے تعلق رکھنے والے ایڈووکیٹ شرن دیو سنگھ ٹھاکر کو اپنا ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل مقرر کیا ہے تاکہ وہ سپریم کورٹ میں ریاست کی نمائندگی کریں۔جموں و کشمیر کے رام بن ضلع کے رہائشی ایڈووکیٹ شرن دیو سنگھ ٹھاکر سابق چیف جسٹس ٹی ایس ٹھاکر کے بیٹے اور جموں و کشمیر کے سابق نائب وزیر اعلیٰ ڈی ڈی ٹھاکر کے پوتے ہیں۔ وہ مذکورہ عہدہ سنبھالنے والے کم عمر ترین وکیلوں میں سے ایک ہیں۔وہ بنگلور یونیورسٹی سے قانون کے شعبہ سے فارغ التحصیل ہیں اور انہوں نے برطانیہ کی واروک یونیورسٹی سے ایل ایل ایم کی ڈگری حاصل کی ہے۔ انہوں نے اشوریہ بھٹی کی اس خالی جگہ کو پُر کیا جنہیں حال ہی میں ہندوستان کی مرکزی حکومت کی نمائندگی کے لئے سپریم کورٹ میں ایڈیشنل سالیسٹر جنرل کے طور پر تعینات کیاگیاہے ۔  

تازہ ترین