تازہ ترین

میگھوال نے ادھمپور میں خود سواری کر کے سائیکل ریلی کو جھنڈی دکھائی

 اودھمپور//عوامی آؤٹ ریچ پروگرام کے دوسرے دن مرکزی وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور اور ثقافت ارجن رام میگھوال نے گورنمنٹ ماڈل ہائیر سکینڈری اسکول اودھمپور کا دورہ کیا ۔ پروگرام میں ڈپٹی کمشنر اودھمپور اندوکنول چب ، ایس ایس پی سرگون شکلا، اے ڈی ڈی سی کانتا دیوی ، اے ڈی سی محمد سید خان ، چیف پلاننگ آفیسر راجیو بھوشن کے علاوہ دیگر اعلیٰ حکام موجود تھے ۔ مرکزی وزیر نے ڈی سی اودھمپور کے ہمراہ امر سنتوش آرٹ گیلری کا افتتاح کیا اور یہاں جی ایم ایچ ایس ایس میں ضلع اودھمپور کی ثقافت اور تاریخی یادگاروں پر ایک دستاویزی فلم جاری کی ۔ افتتاح کے بعد مرکزی وزیر نے اسٹالوں اور فوٹو نمائش کا معائینہ کیا جس میں پرانی یادگاریں ، پتھر کے اوزار ، جیواشم ، تانبے اور پیتل کے برتن ، پرانی کتابیں /دستاویزات ، ہتھیار ، مغلیہ دور سے لیکر تاریخی موریہ ، قدیم آلات ، سکالچر آئیکنو گراف ، زیورات کشمیری ،

مرکزی وزیر نے بڑی برہمنا سانبہ میں ترقیاتی پارک کا سنگ بنیاد رکھا

جموں//مرکزی حکومت کی طرف سے شروع کئے گئے عوامی رَسائی پروگرام کے ایک حصے کے طور پر وزیر براے مائیکرو، سمال اینڈ میڈیم اِنٹرپرائزز ( ایم ایس ایم اِی) نارائن تاتو رانے  نے ترقیاتی پارک کا سنگ بنیاد رکھا اور بڑی براہمنا سانبہ میں تاجروں اور پی آر آئی کے وفود سے تبادلہ خیال کیا۔اِفتتاحی تقریب کے دوران رکن پارلیمنٹ جُگل کشور شرما ، ضلع ترقیاتی کونسل کے چیئرمین کیشودت شرما، ضلع ترقیاتی کمشنر سانبہ انورادھا گپتا ، ڈائریکٹر لوکل باڈیز اَصغر حسین ، نائب صدر میونسپل کارپوریشن بڑی براہمنا کے علاوہ پی آر آئی اور میونسپل کارپوریشن کے نمائندے موجود تھے۔اِس موقعہ پر مرکزی وزیر نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت لوگوں کو اُن کی دہلیز پر بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لئے پُر عزم ہے ۔اُنہوں نے حکومت کی جانب سے شروع کئے گئے مختلف فلاحی اور ترقیاتی پروگراموں کے مؤثر عمل آوری کے

آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کا دورہ جموں اگلے ماہ

جموں//راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کے سربراہ موہن بھاگوت اگلے ماہ کے پہلے ہفتے کے دوران جموں کا دورہ کریں گے ۔سنگھ کے اندرونی ذرائع نے بتایا کہ شیڈول کے مطابق موہن بھاگوت ماہ اکتوبر کے پہلے ہفتے میں جموں کا تین روزہ دورہ کرنے والے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ اس ضمن میں آنے والے دنوں میں باقاعدہ اعلان کیا جائے گا اور یہ دورہ یکم اکتوبر سے تین اکتوبر تک ہوگا۔مذکورہ ذرائع نے بتایا کہ پانچ اگست 2019 میں جموں و کشمیر کے خصوصی درجے کے خاتمے اور اس کو دو وفاقی حصوں میں منقسم کرنے کے بعد یہ ان کا پہلا دورہ جموں ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ موہن بھاگوت دفعہ 370 کے خاتمے کے بعد آر ایس ایس کے موقف کا خاکہ پیش کرنے کے علاوہ سنگھ کی تنظیمی سرگرمیوں کا بھی جائزہ لیں گے ۔ان کا کہنا تھا کہ کورونا کے پیش نظر وہ تین اکتوبر کو صبح کے ساڑھے دس بجے زوم ایپ کے ذریعے سوئم سیوک کارکنوں سے خطاب کریں گے ۔مذکورہ ذرائ

جموں بھا جپاکے کھوکھلے نعروں کا شکارہوگیا: منجیت سنگھ

جموں//اپنی پارٹی صوبائی صدر جموں منجیت سنگھ نے کہاکہ جموں بی جے پی کی ووٹ بنک سیاست کا شکار ہوا جن کے ساتھ کئے گئے وعدوں کو کبھی بھی عملی جامہ نہیں پہنایاگیا۔پارٹی دفتر گاندھی نگر میں دو اعلیحدہ علیحدہ پروگراموں سے خطاب کرتے ہوئے منجیت سنگھ نے کہاکہ بی جے پی نے 5اگست20419سے پہلے ترقی کے جوخواب دکھائے دئے اور لوگوں کے ساتھ جووعدے کئے تھے ، وہ ابھی تک پورے نہیں ہوئے۔ پروگرام کا اہتمام خواتین ونگ صوبائی سیکریٹری ایڈووکیٹ نیشا بھگت نے کیاتھا جس میں فلاں منڈال سے پانچ درجن سے زائد ولگوں نے سنیئرلیڈران کی موجودگی میں اپنی پارٹی کا دامن تھاما۔منجیت سنگھ نے مزید کہاکہ ’’نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کے وعدے سے گمراہ کیاگیا جبکہ بے روزگاری میں حد درجہ اضافہ ہوا ہے ، جہاں تک ترقی کا تعلق ہے، تو یہ کہیں دکھائی نہیں دیتی‘‘۔ انہوں نے کہاکہ بی جے پی کی ناقص کارکردگی نے لوگوں

کشمیری مائیگرنٹ ریلیف ہولڈرز ایسو سی ایشن کا جموں میں احتجاج

جموں//کشمیری مائیگرنٹ ریلیف ہولڈرز ایسو سی ایشن نے جمعرات کے روز یہاں ریلیف کی ادائیگی میں تاخیر کے خلاف احتجاج درج کیا۔ احتجاجی ‘بھارت ماتا کی جئے ’، ‘وندے ماترم’ جیسے نعرے بلند کر رہے تھے ۔اس موقع پر ایک احتجاجی نے میڈیا کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ ریلیف بند ہونے کی وجہ سے ڈیڑھ لاکھ لوگ مشکلات میں ہیں۔انہوں نے کہا: ’جب ملی ٹنسی عروج پر تھی تو ہم نے کروڑوں روپیے مالیت کی جائیداد چھوڑ کر ملک کے باقی حصوں خاص کر جموں میں پناہ لے لی کیونکہ ہمیں امید تھی کہ ہندوستان ہمارا ہے ‘۔ان کا کہنا تھا: ’لیکن آج ہمیں پتہ چل رہا ہے کہ ہمارے پیچھے پاکستان کی گولی ہے اور آگے ہندوستان کی کھائی ہے‘۔انہوں نے الزام عائد کیا کہ ہمیں نوے کی دہائی میں کشمیر میں بے سہارا چھوڑا گیا کیونکہ ہمارے تحفظ کے لئے کوئی انتظام نہیں کیا گیا۔موصوف احتجاجی نے کہا کہ آ