غزلیات

دِل میں ہرغم آنے دو ایسے اِسے بہلانے دو اِس دِل میں ہیں غم لاکھوں پھربھی مُجھے مُسکانے دو اِس سے حوصلہ بڑھتاہے  دِل پر چوٹیں کھانے دو وہ باتیں جونہیں اچھی  اُن باتوں کوجانے دو دِل ہلکاہوجائے گا مُجھ کواشک بہانے دو جیسے بھی ہومیری سُنو غم کی آگ بُجھانے دو اپنے شعروسُخن سے ہتاشؔ اِس دُنیا کو جگانے دو   پیارے ہتاش دور درشن گیٹ لین جانی پورہ جموں موبائل نمبر؛8493853607     جس طرح ملتا تھا ہم سے اس طرح ملتا نہیں وہ جو گزرا ہے اِدھر سے اس طرف دیکھا نہیں جس کی خاطر ہم نے چھوڑا تھا لڑکپن کا سفر مڑ کے دیکھا غور سے جب وہ بھی اپنا تھا نہیں سازِ ہستی کی صدا ہے غور سے سن لیں میاں ہوش والوں کی نظر میں یہ کہیں ملتا نہیں آپ نے تو مجھ سے پوچھا کیا ہوا ہے تیرا دل دل کے

تازہ ترین