تازہ ترین

غزلیات

دھڑکنیں قید ہیں زندان کی دیوار کے بیچ شور کیسا ہے یہ زنجیر کی جھنکار کے بیچ آئینہ دیکھ کے آ جائیں گے سب یاد تُمہیں میرے نالے نہیں چھپتے کسی اخبار کے بیچ خس وخاشاک سے آنچل کو بچا لو جاناں خاک ہی خاک ہے اب تک دلِ مسمار کے بیچ اے مسیحا تری آمد پہ ہی دم توڑ گیا کوئی حسرت ہی نہیں تھی ترے بیمار کے بیچ تُم تصّور میں بھی آتے ہو کئی حِصوں میں کیوں اُترتے نہیں یکسر مرے اشعار کے بیچ عین ممکن ہے کہ مل جائیں نصیبوں سے تمہیں  ہم وہ یوسف نہیں آ جائیں جو بازار کے بیچ میں نے بھی رکھ دیا جاویدؔ جلا کر دل کو حوصلہ دیکھئے کتنا ہے مرے یار کے بیچ   سردارجاویدخان  مینڈھر، پونچھ موبائل نمبر؛ 9419175198   اک عکس نے آئینےمیں اظہار کیا ہے جذبوں نے ترے تجھ کو گرفتار کیا ہے   ہے حسُن اُسکا جوشِ ج

تازہ ترین