تازہ ترین

اوگمونہ ٹنگمرگ میں پینے کے پانی کی قلت | پائپ لائن جگہ جگہ اکھڑگئی ہے،عوام کو مشکلات درپیش

گاندربل// اوگمونہ ٹنگمرگ میں چار دہائیاں قبل جل شکتی محکمہ کی جانب سے بچھائی گئی پائپ لائن زنگ آلودہ ہوچکی ہے اور جگہ جگہ اکھڑ جانے سے پورے علاقہ میں پینے کے صاف پانی کی سخت قلت پیدا ہوگئی ہے۔ جل شکتی محکمہ کی جانب سے ایک سال قبل نئی پائپ لائن بچھانے کے کام کی الاٹمنٹ بھی ہوگئی ہے لیکن ایک سال گزرنے کے باوجود بھی ابھی تک کام شروع نہیں کیا جاسکا ہے ۔مقامی آبادی کے مطابق 90 کی دہائی میں پیر محلہ میںسنگی وارہ ٹنگمرگ فلٹریشن پلانٹ سے پائپ لائن بچھاکرپینے کا پانی فراہم کیا گیا تھا لیکن تب علاقہ کی آبادی بہت کم ہوا کرتی تھی جبکہ تب سے لیکر آبادی کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے لیکن پائپ لائن وہی ہے۔اس پائپ لائن میں زنگ لگنے اور جگہ جگہ اکھڑ نے کی وجہ سے پانی زیادہ ضائع ہورہا ہے اور آبادی کو سخت قلت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ جل شکتی نے 2019 میں نئی پائپ لائن بچھانے کا منصوبہ بنایا تھا اور 7/1170-

پروفیسررحمت اللہ نے وائس چانسلر مانوکا عہدہ سنبھالا

حیدرآباد//پبلک ایڈمنسٹریشن کی تدریس کے ماہرپروفیسر ایس ایم رحمت اللہ نے گذشتہ جمعہ(دوپہر) 31 جولائی 2020 کو پروفیسر فاطمہ بیگم سے وائس چانسلر ،انچارج مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کی حیثیت سے عہدہ کا جائزہ حاصل کیا۔وہ اُردو یونیورسٹی کے سینئر ترین پروفیسر ہیں۔ انہیں درس و تدریس و تحقیق کا 38 سالہ تجربہ ہے۔ پروفیسر رحمت اللہ نے جو اپنی نئی ذمہ داری سے قبل رجسٹرار انچارج کی ذمہ داری نبھارہے تھے، یکم مارچ 2007 کو یونیورسٹی میں بطور پروفیسر ، شعبہ پبلک ایڈمنسٹریشن میں اپنی خدمات کا آغاز کیا۔ انہیں جنوری 2019 میں سری کرشنا دیورایا یونیورسٹی (ایس کیو) ، اننتا پور ، آندھرا پردیش کا وائس چانسلر بھی مقرر کیا گیا تھا۔اس سے قبل انہوں نے مانو میں فروری 2013 سے جنوری 2015 تک کل وقتی رجسٹرار کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دی ہیں۔ انہوں نے یونیورسٹی میں مختلف حیثیتوں میں نمایاں خدمات انجام دی ہیں

رکشا بندھن پرچہل پہل مفقود | کورونا کے پیش نظر تقریبات متاثر

 رینگر// کورونا وائرس کی وجہ سے جموں و کشمیر میں عید قربان کے ساتھ ساتھ رکشا بندھن کا تہوار بھی متاثر رہا۔ اس موقع پر اگرچہ روایتی چہل پہل مفقود رہی تاہم بہنوں نے بھائیوں کی کلائیوں پر راکھیاں باندھنے کی رسم انجام دے دی۔رکشا بندھن یا راکھی کا تہوار دنیا بھر میں موجود ہندو برادری جوش وخروش سے مناتی ہے۔ یہ بہن بھائیوں کے پیار اور ان کے اٹوٹ رشتے کا تہوار ہے۔ اس دن ہندو گھرانوں میں بہنیں دیا، چاول اور راکھیوں سے سجی تھالی تیار کرتی ہیں اور اپنے بھائیوں کی کلائی پر پیار سے راکھی باندھ کر ان کی صحت مندی، عمر درازی اور کامیابیوں کے لئے دعا کرتی ہیں۔وادی میں رکشا بندھن کی مناسبت سے گہما گہمی کورونا کی نذر ہوگئی تاہم بہنوں نے گھروں میں ہی بھائیوں کی کلائی پر راکھی باندھنے کی رسم انجام دی اور ان کی سلامتی، کامیابیوں اور خوشحالی کے لئے دعائیں کیں۔دوسری جانب صوبہ جموں میں بھی یہ تہوار کورونا

والدین تنائو کا شکار | بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات میں اضافہ

سرینگر //انسٹی ٹیوٹ آف مینٹل ہیلتھ اینڈ نیورو سائنسز سرینگر کے چائلڈ گائیڈنس اینڈ ویل بینگ سینٹر کے پروگرام کارڈی نیٹر عادل فیاض وڈو نے کہا ہے کہ کورونا کے باعث بے روز گاری بڑھ جانے سے بچوں کے ساتھ زیادتیوں کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ والدین کی ذمہ داری ہے کہ بچوں کی ضروریات کا خاص خیال رکھیں اور ان کے ساتھ خوشگوار تعلقات قائم رکھیں۔موصوف نے ان باتوں کا اظہار محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کے خصوصی پروگرام 'سکون' میں کیا ہے۔انہوں نے کہا: 'کووڈ کی وجہ سے بے روزگاری بڑھ گئی ہے، جو والدین بے روزگار ہوگئے ہیں اور گھر میں بیٹھ کر ذہنی دباؤ کا شکار ہوگئے ہیں وہ اپنا غصہ بچوں پر نکالتے ہیں کیونکہ بچے ہمیشہ آسان ٹارگٹ ہوتے ہیں جس کی وجہ سے بچوں کے ساتھ جسمانی زیادتیوں کے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے'۔عادل فیاض نے کہا کہ بچوں کے ساتھ جسمانی زیادتیوں کی وجہ سے گھر

پاکستان کشمیریوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا:قریشی

سرینگر//پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی جدوجہد جاری رہے گی اورپاکستانی قوم کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہے۔سی این آئی کے مطابق کشمیریوں سے اظہاریکجہتی کیلئے پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر دفاع پرویزخٹک اورمشیرقومی سلامتی معید یوسف نے عسکری حکام کے ہمراہ حدمتارکہ کے چری کوٹ سیکٹرکا دورہ کیا۔ اس موقع پرفوجی حکام بھی وفاقی وزرا کے ہمراہ تھے۔ دورے کے دوران فوجی حکام نے پاکستان کے وزیرخارجہ کو حالات کی جانکاری بھی دی گئی۔پاکستانی وزیرخارجہ نے حدمتارکہ پرتعینات پاک فوج کے جوانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا پوری قوم اپنے ان جری سپوتوں کی جوانمردی اور بہادری پرفخرکرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت جو مرضی کر لے، کشمیریوں نے 5 اگست 2019کے اقدام کو مسترد کر دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پانچ اگست کے اقدام کوکوئی قبول نہیں کرے گا۔ کشمیریوں کی حق خود

ہند پاک مسئلہ کشمیرکے حل کیلئے بامعنی بات چیت شروع کریں :حریت ع | 5اگست2019تاریخ کا افسوسناک باب

سری نگر//حریت کانفرنس (ع)نے بھارت اور پاکستان کی حکومتوں پر زوردیا ہے کہ وہ مسئلہ کشمیرکوپر امن طور حل کرنے کیلئے بامعنی بات چیت کاآغازکریں ۔ ایک بیان میںحریت کانفرنس(ع) نے گزشتہ برس5اگست کے مرکزی حکومت کے اقدامات کو یکطرفہ اور اس کے نتیجے میں قوانین کے نفاذ کو جموں کشمیرکی تاریخ کاایک انتہائی افسوسنا ک باب قراردیا ہے۔ بیان میں حریت نے کہا کہ ایک برس گزرچکا ہے اور لاک ڈائون اور گرفتاریوں اورنظر بندیوں کاسلسلہ ہنوزجاری ہے جبکہ ایک بعد ایک کشمیرمخالف اوراکثریت مخالف اقدامات اور قوانین اور آرڈیننسزکوعوام پر مسلط کیا جارہا ہے جو حکومت کی جارحانہ پالیسیوں کاعکاس ہے ۔بیان میں کہاگیا ہے کہ یہاں تک کہ مذہبی تقاریب پر بھی پابندیاں ہنوزجاری ہیں ۔حریت نے کہا کہ جموں کشمیرکی آبادی کے تناسب کو بگاڑنے کی کوششوں کے نتیجے میں اس کی متنازعہ حیثیت اورہیت کوتبدیل نہیں کیاجاسکتااورنہ ہی اس حقیقت سے فرا

لداخ سے چینی فوج کے انخلا ء میں تاخیر | فوجی کمانڈروں کے درمیان11گھنٹے تک بات چیت

نئی دہلی //بھارت اور چین کے فوجی کمانڈروں کے درمیان بات چیت کے بعد ہندستان  نے چین پر زور دیا ہے کہ وہ ایل اے سی پر کشیدگی والے علاقوں سے پوری طرح پیچھے ہٹیں۔ہندستان اور چین کے درمیان کشیدگی ختم کرنے کو لے کر اتوار کو ایک بار پھر سے پانچویں دور کی کمانڈر سطح کی بات چیت ہوئی۔ تقریبا 11 گھنٹے تک چلی اس میٹنگ میں ہندستان کی طرف سے لیہہ میں واقع 14 کور کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل ہریندر سنگھ تھے، جبکہ چین کی قیادت جنوبی شنجیانگ فوجی علاقہ کے کمانڈر، میجرل جنرل لیو لن نے کی۔ اس بات چیت کے بعد ہندستان نے چین کو ایک بار پھر سے دو ٹوک لفظوں میں ایل اے سی کے کشیدگی والے سارے علاقوں سے پیچھے ہٹنے کو کہا ہے۔ دونوں فریقوں کے درمیان یہ میٹنگ صبح 11 بجے سے رات کے تقریبا 10 بجے تک چلی۔ ذرائع کے مطابق، بات چیت کے دوران ہندستان نے پینگ یانگ جھیل اور مشرقی لداخ میں ایل اے سی کے پاس ٹکرائو والے سبھی جگہ

مزید خبرں

چدمبرم کا مرکز پر وار | ’’کشمیر کی صورتحال نہ ختم ہونے والی داستان الم‘‘  سرینگر// کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم نے جموںوکشمیر کو لیکر ایک مرتبہ پھر مرکزی سرکار کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کشمیر کی موجودہ صورتحال کو نہ ختم ہونے والی داستان الم قرار دیا ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کے آزادی اظہار رائے پر قدغن لگائی گئی ہے اور پوری وادی کو قید خانے میں تبدیل کردیا  گیاہے۔ سی این آئی کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنی ٹویٹ میں سابق وزیر خزانہ پی چدم برم نے انڈین ایکسپریس میں شائع ہونے والے اپنے کالم کا لنک شیئر کیا ہے۔انہوں نے اپنے کالم کا عنوان ’’ نہ ختم ہونے والی داستان الم‘‘ رکھا ۔اپنے کالم میں سابق وزیر خزانہ نے لکھا کہ تاریخ میں کبھی بھی بھارت کو کشمیر جیسے لاک ڈاون کا سامنا نہیں کرنا پڑا، جہ