تازہ ترین

کپوارہ میں گرمی کی تپش سے کھیت و کھلیان سوکھنے لگے

کپوارہ// شمالی کشمیر میں ضلع کپوارہ میںدرجہ حرارت میں نمایا ں اضافہ کے پیش نظر ندی نالو ں میں پانی کی سطح کم ہوگئی ہے اورکھیت اور کھلیان سوکھ گئے ہیں، جس سے دھان کی فصل بری طرح متاثر ہورہی ہے۔کپوارہ ضلع میں گرمی کی تپش سے ندی نالو ں میں پانی کی سطح میں کافی حد تک کمی واقع ہوگئی ہے جس کی وجہ سے دھان کی پنیری والے کھیت اور کھلیان سو کھ گئے ہیں۔کپوارہ اور ہندوارہ میں کم سے کم ایسے 6بڑے  ندی نالے ہیں جن میں پانی کی سطح تشویشناک حد تک کم ہوگئی ہے۔ضلع کے کنڈی علاقے سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔نالہ وارسن،نالہ گزریال، نالہ درد پورہ، نالہ آوورہ، راجواڑ نالہ اورسوکھ ناگ نالہ کم و بیش سوکھ گئے ہیں جن کی وجہ سے کپوارہ اور ہندوارہ کے درجنوں دیہات درد پورہ، راشن پورہ، وارسن، ریشی گنڈ،گزریال، زرہامہ، آوورہ، لچھم پورہ ، ستی کوجی، بہمنی پورہ، وڈر بالا  اور دیگر درجنوں دیہات میں کھیت سوکھ چکے

ترال کے کئی علاقوں میں پینے کے پانی کی قلت

ترال//ترال کے متعدد علاقوں میں پینے کے پانی کی شدید قلت پائی جا رہی ہے جس کے نتیجے میں لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ تانترے محلہ آری پل گزشتہ پندرہ دنوں سے پینے کے صاف پانی سے محروم ہے جس کے نتیجے میں لوگوں کو مشکلات کاسامنا کرنا پڑ رہا ہے۔اسی طرح گلشن پورہ کے پرے محلہ،پیر محلہ اور سکھ محلوں میں بھی پانی کی عدم دستیابی کے سبب لوگ پریشان ہیں ۔ادھر پنیر جاگیر ترال میں لوگ اسی طرح کی شکایت کر رہے ہیںجہاں لوگوں نے گور نر کی شکایت سیل کے ساتھ بھی رابطہ قائم کیا تاہم تاحال کوئی راحت نصیب نہیں ہوئی۔تمام لوگوں نے محکمہ کے اعلیٰ حکام سے مداخلت کی اپیل کی ہے ۔  

پلوامہ اور پانپورمیں آوارہ کتوں کی ہڑ بھونگ

سرینگر//ضلع پلوامہ کے بیشتر علاقوں میں آوارہ کتوں کی تعداد میں تشویشناک حد تک اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ سے لوگ خاص طور پر چھوٹے بچے گھروں سے باہر نکلنے میں ڈر محسوس کر رہے ہیں۔ ادھر زعفران قصبہ پانپور، کا کا پورہ، مارول، نہامہ، مرن، پلوامہ میں بھی آوارہ کتوں کی تعداد میں بہت حد تک اضافہ ہوا ہے۔پلوامہ قصبہ کے ملک پورہ، پرچھو، ڈلی پورہ، چاٹہ پورہ، ڈانگر، وشہ بگ اور نیوکالونی علاقوں میں آوارہ کتوں کی موجودگی سے راہگیروں کو آمدورفت میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ ادھر چند روز قبل پلوامہ کے پرچھو علاقے میں آوارہ کتوں نے کئی افراد کو زخمی بھی کیا ۔ اُدھر پانپور میں بھی آوارہ کتوں نے ہڑبونگ مچائی ہے جس کی وجہ سے عوام خوفزدہ ہے اور شام کے وقت یہ آوارہ کتے گلی کوچوں میں گھومتے رہتے ہیں۔ کا کا پورہ، مارول، کھدرموہ کے علاوہ دیگر علاقوں سے بھی ایسی ہی شکایات موصول ہو رہی ہیں۔  

ناربل سے ٹنگمرگ تک سٹریٹ لائٹس بیکار

 ٹنگمرگ// نار بل سے ٹنگمرگ تک نصب اسڑیٹ لائٹس گزشتہ کئی سالوں سے بے کار پڑی ہیں جس کی وجہ سے رات کے اوقات میں پیدل چلنے والے لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ماگام کے ایک بزرگ سماجی کارکن حاجی محمد یوسف رنگریز نے اسٹریٹ لایٹوں کی خرابی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگرچہ انہوںنے کئی بار انتظامیہ کی توجہ اس جانب مبذول کرائی تاہم انتظامیہ کی یقین دہانی کے باوجود بھی اسٹریٹ لائٹس ٹھیک کرنے میں لیت ولعل ہو رہا ہے ۔لوگوں نے اتنظامیہ سے اپیل کی کہ نارہ بل سے ٹنگمرگ تک نصب سٹریٹ لائٹس فوری طور ٹھیک کی جائیں۔  

عارضی ملازمین کی مستقلی میں تاخیرکیخلاف آج ہونے والا احتجاج مؤخر | 14جولائی کو احتجاج کیا جائیگا: ایجیک

سرینگر//ملازمین اتحاد ایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے عارضی ملازمین کی مستقلی میں تاخیر کے خلاف6جولائی کو سرینگر میں سیکریٹریٹ کھلنے کے موقعہ پر احتجاجی کال کو موخر کرنے کا اعلان کرتے ہوئے14جولائی کو احتجاج کی کال دی ہے۔سرینگر کی پریس کالونی میں اتوار کو بعد از دوپہر ایجیک لیڈرشپ فیاض شبنم کی قیادت میں نمودار ہوئی اور نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے پیر کو سیکریٹریٹ کے سامنے احتجاج کی کال کو موخر کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ نے اُن کے مطالبات کو حل کرنے کیلئے کچھ وقت کی مہلت طلب کی ہے۔ایجیک صدر فیاض شبنم نے کہا کہ حکام کے ساتھ ملاقاتوں کے کئی رائونڈئوں کے بعد ایجیک کی میٹنگ میں6جولائی کے احتجاج کو موخر کرنے کا فیصلہ لیا گیا اور اب احتجاج14جولائی کو ہوگا۔فیاض شبنم نے کہا کہ روزانہ اُجرت پر کام کرنے والے ملازمین، آئی ٹی آئی ورکرس ، این ایچ ایم ملازمین ، سیزنل اور مختلف قسم کے عا

پلوامہ اور شوپیان میں محاصرے

شوپیان // فورسز نے شوپیان اور پلوامہ کے کئی دیہات کا اتوار کو بھی  دو دن کے وقفے کے بعد محاصرہ کیا۔44آر آر، سی آر پی ایف اور پولیس ٹاسک فورس نے اتوار کی شام آری ہل پلوامہ کا محاصرہ کیا۔ پولیس نے محاصرہ کرنے کے فوراً بعد روشنیوں کا انتظام کیا، کیونکہ انہیں اطلاعات ملی کہ گائوں میں جنگجو موجود ہیں۔رات دیر گئے تک تلاشی کارروائی جاری تھی۔ادھر 34آر آر، 178بٹالین سی آر پی ایف اور پولیس نے ننگہ چک امام صاحب گائوں کا محاصرہ کیا اور تلاشی کارروائی کی۔ادھرغلام نبی رینہ کے مطابق گجر پتی تھیون کنگن میں اتوار کو  24آر آر اور ایس او جی کنگن نے گھر گھر تلاشی  لی تاہم تلاشی کاروائی کے دوران کسی کی بھی گرفتاری عمل میں نہی لائی گئی۔  

وادی میں تیزآندھی سے مکانوں کی چھتیں اُڑ گئیں

سرینگر // وادی میںاتوار کی شام کو موسم نے کروٹ لی اور متعدد علاقوں میںتیز ہوائوں کے نتیجے میں مکانوں اور دکانوں کی چھتوں کو نقصان پہنچا جبکہ پھلدار درخت بھی جڑوں سے اکھڑ گئے۔ اس دوران ژالہ باری سے کھڑی فصلوں کو نقصان  ہونے کی بھی اطلاع ہے ۔شہر سرینگر میں بھی کچھ وقت کیلئے تیز ہوائیں چلیں جس سے کئی علاقوں میں بجلی سپلائی متاثر ہوئی، تاہم ہوائوں کے چلنے سے گرمی میں کسی حد تک کمی واقعہ ہوئی۔ اُدھرسوپور سے نمائندے غلام محمد کے مطابق سوپور اور اس سے ملحقہ علاقوں میں تیزآندھی سے مکانوں اور دکانوں کی چھتوں کو نقصان پہنچا ۔قصبہ میں ساڑھے 7بجے پہلے آسمان پر کالے بادل چھا گئے، اس کے بعد دیکھتے ہی دیکھتے تیز ہوائیں چلنے لگیں ۔تیز ہوائیں اس قدر شدید تھیں کہ راہگیر محفوظ جگہوں کی تلاش کرتے رہے اور بجلی بھی گل ہو گئی جبکہ قصبہ کے بائی پاس ، سنگرامہ ، فروٹ منڈی روڑ پر زبردست ژالہ باری بھی ہوئی

حکومت کیلم کولگام کے سیلاب متاثرین کو گھر فراہم کرنے میں ناکامؔ| 6برسوں سے عارضی شیڈوں میں مقیم24کنبوں کومشکلات

اننت ناگ// سال  2014 کے تباہ کن سیلاب میں کولگام ضلع کے ٹینکی پورہ کیلم کے چوبیس کنبے چھ برس گزر جانے کے باجود بھی ابھی ٹین کے عارضی شیڈوں می رہائش پزیر ہیں اور سرکار ان کے لئے رہائشی بندوبست کرانے میں مکمل ناکام ہوگئی ہے۔ کولگام ضلع کے ٹینکی پورہ کیلم میں 2014کے تباہ کن سیلاب نے قریباََ2درجن مکانوں کو بہا لیا تھا جس کے سبب ان مکانوں میں رہائش پزیر کنبے کھلے آسمان تلے آگئے تھے ۔ حکومت نے متاثرہ کنبوں کو غلام مصطفی میموریل اسپتال کیلم اور اس کے بغل میں قائم سرکاری ٹین شیڈوں میں منتقل کیا تھااور اعلان کیا تھا کہ حکومت اُنہیں جلد سرکاری زمین فراہم کرے گی تاکہ یہ لوگ پھر سے اپنے مکانات تعمیر کر سکیں ،تاہم 6سال کے طویل عرصہ  گزرنے کے بعد بھی نئے گھروں کی تعمیر کااُن کا خواب شرمندہ تعبیر نہ ہوسکا۔محمودہ نامی ایک خاتون نے نم آنکھوں سے کشمیر عظمٰی کو بتایا کہ وہ لوگ سخت مشکلات سے

دریائے جہلم میں ریت کی غیرقانونی برآمدگی | بارہمولہ میں18گرفتار،4ٹریکٹراورٹپرضبط:پولیس

 بارہمولہ//  بارہمولہ پولیس نے ضلع میں غیر قانونی طور پردریائے جہلم سے ریت نکالنے کی پاداش میں 18 افراد کو گرفتار کیا ہے۔ پولیس  کے مطابق خوجہ باغ مقام پر دریائے جہلم سے غیر قانونی طور پر ریت نکالنے کی اطلاع  ملنے پر کارروائی کرتے ہوئے پولیس نے اتوار کو ایک کاروائی کے دوران موقعہ پر ہی 18 افراد کو گرفتار کرکے چار ٹریکٹر اور ایک ٹپر کو بھی ضبط کیا جب وہ غیر قانونی طور پر گاڑیوں میں ریت لوڈ کرتے ہوئے پائے گئے ۔ اس سلسلے میں بارہمولہ پولیس تھانہ میں ایک  ایف آئی آر زیر نمبر  /2020 106 تحت دفعہ 188/379/447/427 تعزیرات ہند درج کرکے تحقیقات کا آغاز کیا گیا ۔ پولیس نے کہا ہے کہ جو بھی ریت کی غیرقانونی کان کنی میں ملوث پایا جاے گا، اس کے خلاف سخت سے سخت کاروائی کی جائے گا ۔  

تازہ ترین