تازہ ترین

فوج کا کپوارہ میں ایل او سی پر دراندازی کوشش کو ناکام بنانے کا دعویٰ

سرینگر//فوج نے شمالی کشمیر کے ضلع کپوارہ میں فرکیاں گلی سیکٹر میں لائن آف کنٹرول پر جنگجووں کے ایک گروپ کی طرف سے در اندازی کرنے کی ایک کوشش کو ناکام بنانے کا دعویٰ کیا ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ کپوارہ میں فرکیاں گلی سیکٹر میں ایل او سی پر پیر اور منگل کی درمیانی شب فوج نے چھ سے آٹھ جنگجووں پر مشتمل ایک گروپ کی طرف سے در اندازی کرنے کی کوشش کو ناکام بنا دیا۔ انہوں نے کہا کہ جنگجوو¿ں کا یہ گروپ تاریکی کا فائدہ اٹھا کر واپس بھاگنے میں کامیاب ہوا۔ سری نگر میں قائم فوج کی پندرویں کور کے آفیشل ٹویٹر ہینڈل پر ایک ٹویٹ میں کہا گیا”کپوارہ میں فرکیاں گلی سیکٹر میں ایل او سی پر 29 اور 30 جون کی درمیانی شب چھ سے آٹھ افراد کی مشکوک نقل حمل دیکھی گئی۔ ہمارے فوجی جوانوں نے فائر کھول کے ان دراندازوں کو چلینج کیا اور وہ تاریکی کا فائدہ اٹھا کر بھاگ گئے، مزید تفصیلات کا انت

جموں کشمیر میں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد100ہوگئی

سرینگر//جموں کشمیر میں منگل کے روز کورونا وائرس سے چار افراد جاں بحق ہوگئے جس سے مرکز کے زیر انتظام علاقے میں مہلک وائرس سے مرنے والوں کی تعداد100تک جا پہنچی۔ آج دن کی پہلی کورونا ہلاکت کٹھوعہ ضلع میں ہوئی جہاں ایک 85سالہ خاتون ،جو کئی امراض میں مبتلاءتھی، دم توڑ بیٹھی۔ اس کے بعد شمالی کشمیر کے بارہمولہ کا ایک50سالہ تاجر کورونا وائرس کی وجہ سے جاں بحق ہوگیا ۔یہ جموں کشمیر میں ہونے والی98ویں کورونا ہلاکت تھی۔ بعد ازاں سی ڈی اسپتال میں زیر علاج شوپیان کا ایک23سالہ نوجوان جاں بحق ہوگیا جبکہ اس کے بعد اسی اسپتال میں باغات سرینگر کی ایک خاتون چل بسی۔ان دو ہلاکتوں سے جموں کشمیر میں کورونا سے مرنے والوں کی تعداد ایک سو تک جا پہنچی۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ سی ڈی اسپتال ڈاکٹر سلیم ٹاک کے مطابق شوپیان کے نوجوان کو گذشتہ روز صدر اسپتال سے سی ڈی اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔اُس کے سر میں گہ

مژھل کی 20ہزار آبادی کو برقی رو کا انتظار

سرینگر // دشوار گزار پہاڑی ڈھلوانوں سے بجلی کی ترسیلی لائنوں اور کھمبوں کو نصب کرنے کے دوران حکام نے کوئی بھی ٹھوس منصوبہ نہیں بنایا ہے اور یہی وجہ ہے کہ اُن پسماندہ علاقوں تک بجلی نہیں پہنچ سکی ہے جہاں کی آبادی برقی رو کیلئے ترس رہی ہے ۔ سال2020کے آخر تک ہر گھر کو بجلی پہنچانے کے سرکاری دعوئوں کے بیچ 20ہزار نفوس پر مشتمل مژھل کی آبادی آج کے اس جدید دور میں بھی چوب چراغ جلا کر اپنے گھروں کو روشن کر رہی ہے ۔مژھل کیلئے ڈیڑھ سال قبل شروع کی گئی دین دیال اپادھیائے سکیم بھی مکمل ہونے کا نام نہیں لے رہی ہے ۔ حکام کا کہنا ہے کہ پہاڑی علاقوں اور گھنے جنگلوں میں گذشتہ سال بھی نومبر میں برف باری کے نتیجے میں بجلی کے کھمبوں اور لائنوں کو نقصان پہنچا تھا  ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ انہیں کوئی اُمید نہیں ہے کہ اس سال بھی علاقہ بجلی سے فیضیاب ہو گا ۔یاد رہے کہ سال2018میں حکام نے مژھل کو بجل

بانڈی پورہ کے کئی دیہات پینے کے پانی سے محروم

سرینگر// شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کے سوناواری بلاک سے وابستہ کئی دیہات موجودہ دور میں بھی پینے کے صاف پانی سے محروم ہیں جس کی وجہ سے ان علاقوں کی خواتین کو صاف پانی لانے کے لئے کئی کلو میٹر کی دشوار گزار مسافت طے کرنا پڑتی ہے۔نوگام، اندر کوٹ، شگن پورہ وغیرہ سے تعلق رکھنے والے لوگوں کا کہنا ہے کہ متعلقہ محکمے نے گھروں میں نل تو نصب کئے ہیں لیکن گذشتہ ایک ماہ سے یہ نل مکمل طور پر خشک ہیں جس کی وجہ سے موجودہ وبائی صورتحال میں بھی علاقے کے ہزاروں لوگ پانی کی شدید قلت سے دوچار ہیں۔انہوں نے کہا کہ متعلقہ حکام پینے کے پانی کی فراہمی کے حوالے سے زبانی وعدے کررہے ہیں لیکن زمینی سطح پر کوئی کار گر کارروائی انجام نہیں دی جارہی ہے۔دریں اثنا جل شکتی کشمیر کے چیف انجینئر عبد الواحد نے اس ضمن میں کہا’’میرے پاس ان علاقوں میں پانی کی قلت ہونے کے بارے میں کوئی شکایت نہیں آئی ہے تاہم اگ

وائل پارک کی حالت ناگفتہ بہ

گاندربل//وائل گاندربل میں 2013 کے دوران نالہ سندھ کے کنارے پر لگ بھگ دو کروڑ روپے کی لاگت سے فاروق عبداللہ انوائرانمنٹ پارک تیار کرکے عوام کے نام وقف کی گئی جو محکمہ کی عدم توجہی اور لاپرواہی سے تباہی کے دہانے پر پہنچ گئی ہے۔ 2010 میں محکمہ جنگلات کے ماحولیات شعبہ نے 40 کنال سرکاری اراضی پر اس پارک کو تعمیر کرنا شروع کردیا جسے دو سال کے عرصے میں لگ بھگ دو کروڑ روپے کی لاگت سے مکمل کیا گیا۔پارک تعمیر کرنے کے دوران اس بات کا خیال رکھا گیا کہ یہاں آنے والے لوگ نالہ سندھ کی ٹھنڈی ہوائوں اور تیز بہاو والے پانی سے لطف اندوز ہوسکیں۔ 2013 میں اسے عوام کے نام وقف کیا گیا اورپارک کے رکھ رکھاؤ اور تجدید کے لئے محکمہ ماحولیات کو ذمہ داری سونپی گئی۔ پارک میں گاندربل کے ساتھ ساتھ دیگر اضلاع سے بھی لوگ کافی تعداد میں آتے تھے۔کوروناوائرس نے جہاں عالمی سطح پر تباہی مچائی وہیں اس پارک کو بھی محکمہ نے

کٹھوعہ میں ترقیاتی پروجیکٹوں کا معائنہ

کٹھوعہ//لیفٹیننٹ گورنر کے مشیر بصیر احمد خان نے دیہی ترقی محکمہ کی جانب سے جاری مختلف کاموں کا معائنہ کیا۔انہوںنے ضلع میں دیہی ترقی ، بجلی محکموں اور سیاحتی شعبے کے کام کاج کا جائزہ لیا۔مشیر کے ہمراہ ضلع ترقیاتی کمشنر کٹھوعہ، ایس ایس پی کٹھوعہ ، ڈائریکٹر محکمہ دیہی ترقی ، جے پی ڈی سی ایل کے چیف انجینئر ، جوائنٹ ڈائریکٹر محکمہ سیاحت ، اے سی ڈی کٹھوعہ اور دیگر متعلقہ افسران تھے۔مشیر موصوف نے مرحین بلاک کے سسون موڑپر 14ویں مالی کمیشن کے تحت 1.30لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر کئے گئے پسنجر شیڈکا اِفتتاح کیا۔ اُنہوں نے منریگا کے تحت 2.96 لاکھ روپے کی لاگت سے ٹنڈا دیہات میں ٹریکٹر سڑکوںکی زیر تعمیر کا بھی معائنہ کیا۔ پنچایتی راج اِداروں کے نمائندوںکے ساتھ تبادلہ خیال کرتے ہوئے مشیر موصوف نے اُنہیں عوامی اِفادیت کے حامل مزید منصوبوں اور پروجیکٹوں کو سامنے لانے کے لئے کہا۔مشیر بشیر خان نے برنوتی ب

ڈوماسائل قوانین کے نفاذ پر خاموشی افسوسناک: وکیل

سرینگر// پیپلز کانفرنس کے سینئر نائب صدر عبدالغنی وکیل نے جموںوکشمیر میں ڈومیسائل قوانین نافذ کرنے کی سخت الفاظ میں مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ اس فیصلے سے باہر کے لوگوں کو شہریت دینا جموںوکشمیر خاصکر کشمیر کے تہذیب وتمدن کو مسخ کرنے کے مترادف ہے۔ایک بیان میں وکیل نے کہاکہ جموں وکشمیر خاصکر کشمیر کی تہذیب وتمدن ایک منفرد حیثیت رکھتی ہے اور اس منفردحیثیت کو ختم کرنا کونسا انصاف ہے اور مرکزی سرکار کیوں کشمیر یت کو ختم کرنے کے پر تلی ہوئی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ مرکز کے اس فیصلے سے جموں وکشمیر کے عوام کو قومی دھارے سے دوری بڑھ سکتی ہے جو کسی بھی صورت میں ملک کے مفاد میں نہیں ہو سکتا ہے۔وکیل نے کہاکہ اس وقت ضرورت اس بات کی ہے کہ مرکزی سرکار جموں کشمیر کے عوام کی فلاح وبہوداکیلئے اقدامات کریں جس سے یہاں کے عوام میں پیدا ہوئی مایوسی دور ہو سکے۔ وکیل نے جموں وکشمیرکے ان لیڈروں کی بھی سخت الفاظ میں نکت

پانچ برس سے کم عمر کے70فیصدبچوں کو لاک ڈائون کے دوران طبی سہولیات تک رسائی نہ ہوئی

سرینگر//کوروناوائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے حکومت کی طرف سے نافذکئے گئے ملک گیر لاک ڈائون کے دوران جموں کشمیرمیںپانچ برس سے کم عمرکے سترفیصدبچوں کوبنیادی صحت سہولیات جیسے ٹیکہ کاری تک رسائی حاصل نہیں تھی۔ اس بات کااظہار سوموار کو جاری ایک رپورٹ میں کیاگیا۔کرائی نامی رضاکارتنظیم کی طرف سے جموں کشمیرسمیت پورے ملک میں کئے گئے اس سروے میں لاک ڈائون کے پہلے اوردوسرے مرحلے میں والدین اور بنیادی سہولت کاروں کاردعمل جانا گیا۔ جاری ایک بیان کے مطابق جموں کشمیرمیں اس سروے میں 387لوگوں نے شمولیت کی ۔’چائلڈرائٹس اینڈ یو‘نامی تنظیم نے کہا کہ کروناوائرس کی روکتھام کیلئے جموں کشمیرمیں لازمی طور نافذکئے گئے لاک ڈائون کے دوران پانچ برس تک کے سترفیصدبچوں کو بنیادی صحت سہولیات جیسے ٹیکہ کاری تک رسائی حاصل نہیں تھی۔ بیان کے مطابق ٹیکہ کاری پروگرام کو ملک بھر میں لاک ڈائون کے دوران شدیددھچکہ

کرناہ میں 2سالہ بچی نالہ میں گرکر غرقآب

کرناہ // کرناہ میں دو الگ الگ حادثات کے دوران ایک پولیس اہلکار ہلاک اور2سالہ بچی نالہ میں گرکر غرقآب ہوئی۔ صبح قریب 11بجے سکھوندر سنگھ ولد چرن سنگھ ساکن کرناہ موٹر سائیکل زیر نمبر PB2BC/1357 پر جارہا تھا اور چھمکوٹ کے مقام پر ٹپر گاڑی زیر نمبرJK09/2973کی زد میں آگیا۔ خون میں لت پت مذکورہ شہری کو ہسپتال پہنچایا تاہم ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا۔ ادھر گومل کرناہ میں اس وقت کہرام مچ گیا جب وہاں2سالہ بچی نالہ میں مردہ پائی گئی ۔عینی شاہدین کے مطابق ان کے گھر کے پاس سے نالہ گزرتا ہے اور وہ اس میں بہہ کر لقمہ اجل بن گئی ۔بچی کی شناخت زکیہ بانوں دخیر طارق احمد اعوان کے طور پرہوئی ۔پولیس نے دونوں معاملوں میں کیس درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔  

کپوارہ پولیس کامنشیات مخالف پروگرام

سرینگر // کپوارہ پولیس نے ڈسٹرکٹ پولیس لائنز میں منشیات کے خاتمہ کیلئے ایک پروگرام کا انعقاد کیا۔اس پروگرام کا اصل مقصد منشیات کی لت سے نجات پانے کے لئے جانکاری فراہم کرنا تھا۔ڈی ایس پی ڈی اے آرجاوید احمد نے پولیس کی طرف سے منشیات سے متعلق مراکز میں منشیات کی لت اور علاج و معالجے کی سہولیات کے بارے میں بات کی۔ اس کے علاوہ انہوں نے منشیات کے اسباب اور نتائج پر روشنی ڈالی۔لوگوں نے ایسے پروگرام انعقاد کرنے کی پولیس کاوشوں کو سراہا۔  

مزید خبرں

۔1,72,735درماندہ شہریوں کی یوٹی واپسی  جموں//حکومت جموں وکشمیر نے کووِڈلاک ڈاون کے سبب ملک کے مختلف حصوں میں درماندہ جموںوکشمیر کے  1,72,735 شہریوں کو براستہ لکھن پور اور کووِڈخصوصی ریل گاڑیوں اور بسوں کے ذریعے تمام رہنما خطوط اور ایس او پیز پر عمل پیرا رہ کر یوٹی واپس لایا۔سرکاری اعداد و شما ر کے مطابق جموںوکشمیر کے مختلف اَضلاع کی اِنتظامیہ نے ملک کی مختلف ریاستوں اور یوٹیز سے55,332درماندہ مسافروں کو لے کر جبکہ براستہ لکھن پور1,17,403افراد کو حکومت نے68کووِڈ خصوصی ریل گاڑیوںکے ذریعے اودھمپو ر اور جموں ریلوے سٹیشوں پر خیرمقدم کیا ۔حکومت نے لکھن پور کے ذریعے اب تک بیرون ملک سے 657مسافرو ں کویوٹی واپس لایا ہے ۔اِس طرح جموںوکشمیر حکومت نے اب تک 68 کووِڈ خصوصی ریل گاڑیوں اور براستہ لکھن پور بسو ںکے کاروان میں اب تک بیرون یوٹی درماندہ 1,72,735 شہریو ں کو کووڈِ۔19 وَبا سے متعل

تازہ ترین