تازہ ترین

چھاندل ٹنگمرگ اور پٹن میں نوجوان رضاکارانہ طور سرگرم عمل

بارہمولہ//تیرن کے بعد چھاندل ٹنگمرگ اور پٹن میں مقامی نوجوانوں نے رضاکارانہ طور پر کرونا وائرس سے بچنے کیلئے لوگوں کی نقل و حمل کم کرنے کیلئے گشت کرنا شروع کر دیا۔ یہ رضاکار لوگوں کو کورونا وائرس سے متعلق جانکاری بھی دیتے ہیں اورلائوڈ سپیکر پر اعلان کرکے لوگوں سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اپنے اپنے گھروں میں ہی رہیں۔یہ رضاکار لاک ڈاؤن کو عملانے کے لیے مکمل کام کررہے ہیں تاکہ علاقہ کو اس خطر ناک وائرس سے محفوظ رکھاجاسکے۔ یا د رہے کہ اس سے قبل ٹنگمرگ کے ہی تیرن علاقے میں مقامی نوجوانوں نے یہ مہم شروع کی تھی۔  

کاچھون اننت ناگ پینے کے صاف پانی سے محروم

سرینگر//اننت ناگ سے 45کلو میٹر دورعلاقہ کاچھون علاقہ میںپینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی کے نتیجے میں لوگ گوناگوں مشکلات سے دوچار ہیں۔ مقامی لوگوںکا کہناہے کہ 1998میں علاقے کیلئے واٹر سپلائی سکیم منظور ہوئی اور سکیم کے تحت 30پوائنٹ نل نصب کئے گئے لیکن24گھنٹوں کے دوران محض ایک گھنٹہ ہی پانی فراہم کیا جاتا ہے اوراس کیلئے بھی کوئی وقت مقرر نہیں ہے ۔ مقامی لوگوںنے اس صورتحال کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف وباء نے انہیں پریشان کیا ہے اور دوسری جانب پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی ان کیلئے ایک بڑا مسئلہ بنا ہوا ہے۔سی این آئی  

مزید تشخیصی مراکز کا قیام ناگزیر:انجینئر نذیر

سرینگر// پی ڈی پی لیڈر انجینئر نذیر احمد اتیو نے کہا کہ ہے کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے کشمیر میں مزید تشخیصی مراکز اور طبی سازو سامان کی ضرورت ہے تاہم مرکز نے یہاں صرف 2مراکز ہی قیام کئے ہیں جبکہ یہاں دن بہ دن متاثرین کی تعداد بڑھ رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ کشمیر میں ہر کوئی اس وباء کے پھیلنے سے پریشان ہے اور ایسے میں تشخیصی مراکز کی کمی ایک بڑا مسئلہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں اگر کسی مریض کا ٹیسٹ کیا جاتا ہے تو اگر اس کی رپورٹ منفی بھی ہو تو اسے گھر واپس جانے کیلئے انتظار کرنا پڑتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ  رپورٹ میں تاخیر کی وجہ سے ایسے افراد کو ہسپتالوں میں ہی رکنا پڑتا ہے حالانکہ ان مراکز میں بیڈ بھی کم ہیں ۔انہوں نے کہا کہ  طبی عملہ اپنے فرائض انجام خوش اسلوبی کے ساتھ انجام دے رہا ہے۔  

بینک فراڈ کیس میں ہلا ل راتھر کی ضمانت مسترد

سرینگر//177کروڑ  روپے کے بینک فراڈ کیس میں مبینہ طور ملوث نیشنل کانفرنس کے لیڈر اورجموں کشمیر کے سابق وزیرخزانہ عبدالرحیم راتھر کے بیٹے  ہلال راتھر کوجموں کی خصوصی سی بی آئی عدالت نے عبوری ضمانت دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے ’’ جیل سے باہر انہیں خطرہ ہے اور جیل کے اندر وہ محفوظ ہیں‘‘ ۔ہلال راتھر نے ضمانتی عرضی دائر کرتے ہوئے کہا تھا کہ جیل کے اندر اُنہیں کوروناوائرس میں مبتلاء ہونے کا خوف ہے اس لئے اُنہیں ضمانت پر رہا کیا جائے۔ضمانت کی عرضی رد کرتے ہوئے سی بی آئی کے خصوصی جج راجیش سیکھری نے کہا’’ موجودہ حالات میں اُنہیں جیل سے باہروائرس لگنے کااندیشہ ہے اوران کی رہائی سے لاک ڈائون کے مقاصد بھی ناکام ہوں گے‘‘ ۔راتھر نے وٹس ایپ کے ذریعے سی بی آئی کے خصوصی جج کو درخواست دی تھی کہ اُنہیں طبی بنیادوں پرعبوری ضمانت دی جائے ۔انہوں

کورونا وائرس۔۔۔ | گاندربل میں جراثیم کش ادویات کا چھڑکائو جاری

گاندربل//کروناوائرس کے سلسلے میں احتیاطی تدابیر کے پیش نظر میونسپل کمیٹی گاندربل کی جانب سے پچھلے دس روز سے گاندربل قصبہ سمیت دیگر علاقوں میں صفائی مہم اور جراثیم کش ادویات کا چھڑکاؤجاری ہے۔کمیٹی کے چیئرمین الطاف احمد نے بتایا کہ گاندربل میونسپل حدود میں آنے والی مساجد(جامع)، بنک،اے ٹی ایم اوردوائی کی دوکانوں کے اردگرد جراثیم کش ادویات کا چھڑکاؤ کیاجارہا ہے جبکہ ریڈ زون قرار دیئے گئے علاقوں میں یہ سلسلہ جاری رہے گا تاکہ کوروناوائرس کو پھیلنے سے روکا جاسکے ۔  

ضلع بارہمولہ میں 700افراد زیرنگرانی | 106 اسپتالوں میں،186 خصوصی مراکز میں قرنطین

 بارہمولہ // مہلک کورونا وائرس کے پیش نظر شمالی ضلع بارہمولہ میں  700کے قریب افراد اسپتالوں یا ضلع کے دیگر علاقوں میں قائم کئے گئے نگرانی مراکز کے اندر قرنطین کئے گئے ہیں۔محکمہ صحت کے ذرائع نے بتایا کہ بارہمولہ ضلع  میں ریاست سے باہر ، دوسرے ممالک سے آنے والے یا اُن کے رابطے میں آنے والے 700 کے قریب افراد کونگرانی میں رکھا گیا ہے تاکہ وائرس کو پھیلنے سے روکا جاسکے ۔مذکورہ افراد میں سے 186 انتظامیہ کی جانب سے قائم کئے گئے مراکز جبکہ106 افرادضلع کے اسپتال میں داخل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 70  کے قریب افراد جو ضلع سے باہر مختلف اسپتالوں یا خصوصی مراکز میں زیر نگرانی تھے، نے نگرانی کے 14 دن مکمل کرلئے ہیں اور وہ اپنے اپنے گھر وںکو واپس چلے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ زیادہ تر وہ لوگ ہیں جو عمرہ سے واپس آئے  تھے یا جوملک اور اس سے باہرکے کالجوں اور یونیورسٹیوں میں زی

عوام کی راحت کیلئے ٹھوس اقدامات ضروری:این سی

سرینگر//جموںوکشمیر نیشنل کانفرنس نے کہا ہے کہ عالمگیر وباء کورونا وائرس سے پیدا شدہ صورتحال کاعام لوگوں پر براہ راست اثر روکنے کیلئے انتظامیہ پر فرض بنتا ہے کہ وہ عوام کی راحت رسانی میں مزید سرعت لائے اور زمینی سطح پر لوگوں کو درپیش مسائل و مشکلات کا ازالہ کرنے کیلئے کارگر اور ٹھوس اقدامات کرے۔ پارٹی کے ترجمان عمران نبی ڈار نے ایک بیان میںکہا کہ لاک ڈائون کے دوران اس بات کو یقینی بنانا ضروری ہے کہ لوگوں کو ضروریاتِ زندگی اُنکی دہلیز پر دستیاب اور تمام سہولیات بآسانی میسر ہوں۔ غذائی اجناس کی فراہمی کے علاوہ اس بات کو بھی یقینی بنانا ضروری ہے کہ بیماروں کو علاج و معالجہ کی سہولیات میسر ہوں اور ادویات کی سپلائی ہر حال میں جاری رہنی چاہئے۔ اس کے علاوہ ہر ایک جگہ پر ایمرجنسی کی صورت میں ایمبولنسوں کی دستیابی بھی ہونی چاہئے۔ ترجمان نے حکومت سے پُرزور اپیل کی کہ غریبی کی  سطح سے نیچے زن

سیاسی قیدیوں کو رہا کیا جائے:حریت (ع) کا مکرر مطالبہ

سرینگر// حریت کانفرنس (ع) نے اپنا یہ مطالبہ دہرایا ہے کہ مہلک کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے وبا ء کے پیش نظر جموں وکشمیر کے تمام سیاسی نظر بندوں اور اسیران، جو جموںوکشمیر سمیت بھارت کے مختلف جیلوں میں قید و بند کی زندگیاں گذار رہے ہیں، کوفوری طور رہا کیا جائے تاکہ محبوسین اور اسیران کے عزیز و اقربا ء اور متعلقین کوانکی صحت اور سلامتی کے تئیں شدید ذہنی اضطراب اوربے چینی سے نجات مل سکے۔حریت (ع) نے ایک بیان میں حقوق انسانی کی معتبر اور مستند تنظیموں پر بھی زور دیا کہ وہ انسانیت کی عظیم قدروں کو مد نظر رکھتے ہوئے جموںوکشمیر کے جملہ اسیران کی رہائی ممکن بنانے میں اپنا کردار ادا کریں۔حریت (ع)نے عالمی سطح پر سنگین اور جان لیوا کورونا وائرس کی بڑھتی ہوئی گرفت پر سخت فکر و تشویش کا اظہار کرتے ہوئے جموںوکشمیر کے عوام سے ایک بار پھر پْر زور تاکید کی کہ وہ اس مہلک اور متعدی وبا ء سے خودکواور اپنے سما

کرغستان میں کشمیری طلاب کی کسمپرسی

سرینگر//نجی اسکولوں کی انجمن نے حکومت ہنداور جموں کشمیرسرکارپرزوردیا ہے کہ وہ کرغستان میں پھنسے کشمیری طالب علموں تک پہنچنے کی کوشش کریں کیوں کہ انہیں وہاں خوراک اور پیسوں کی عدم دستیابی کی وجہ سے شدید مشکلات درپیش ہیں ۔انجمن نے کہا ہے کہ کرغستان ،بنگلہ دیش کے بعد ایم بی بی ایس کی تعلیم حاصل کرنے کیلئے کشمیرکے طلاب کی مقبول جگہ ہے لیکن مقامی حکومت نے اس ملک کو مکمل طور نظر اندازکیا ہے ۔ نجی اسکولوں کی انجمن  کے صدرجی این وارنے کہا ’’ ہمارے اندازے کے مطابق وہاں جموں کشمیر کے500طالب علم مختلف میڈیکل کالجوں میں ایم بی بی ایس کی تعلیم حاصل کررہے ہیں،یہ تعداد بنگلہ دیش کے بعد دوسرے نمبر پر ہے، لیکن ستم ظریفی یہ ہے کہ یہ ملک حکام کی نظر میں نہیں ہے‘‘ ۔ کرغستان حکومت نے کروناوائرس کی روکتھام کیلئے ملک میں مکمل لاک ڈائون کااعلان کیا ہے اورانہوں نے ہوسٹلوں سے طلباء

درماندہ افراد کو انسانی بنیاد پر واپس لایا جائے

سرینگر// سی پی آئی ایم کے لیڈر یوسف تاریگامی نے لیفٹیننٹ گورنر کے نام مکتوب میں اپیل کی ہے کہ مختلف ریاستوں میں درماندہ کشمیری طلباء و طالبات اور مزدوروں کو انسانی ہمدردی کی بنیاد پر واپس لانے کیلئے اقدامات کئے جائیں ۔لیفٹیننٹ گورنر جی سی مرمو کے نام مکتوب میں تاریگامی نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں کوروناوائرس کی وجہ سے دہشت مچی ہوئی ہے اور ملک بھر میں جاری لاک ڈائون کی وجہ سے مختلف ریاستوں میں پھنسے کشمیری طلاب ،مزدوروں اور تاجروں کی واپسی کا معاملہ متعلقہ ریاستوں کے ساتھ اٹھایا جانا چاہئے ۔انہوں نے کہا ہے کہ پنجاب ،ہریانہ ،ہماچل پردیش ،دلی ،اتر پردیش اور دیگر ریاستوں میں کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے لاک ڈائون کی وجہ سے جموں و کشمیرسے تعلق رکھنے والے طلباء ،تاجر اور مزدوردرماندہ ہیں اوران میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں،جو پریشانیوں میں مبتلاء ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ان افراد کومح

کیرن میں جنگجوئوں کی کمین گاہ تباہ | کرناہ میںبھی اسلحہ بر آمد کرنے کا دعویٰ

کپوارہ//سرحدی ضلع کپوارہ میں حد متارکہ پر واقع کیرن علاقے میںپولیس اور فوج نے ایک مشترکہ کاروائی کے دوران جنگجو ئوںکی کمین گا ہ تباہ کی اور بھاری مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود ضبط کر نے کا دعویٰ کیا ۔پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ انہوںنے ایک مصدقہ اطلاع ملنے کے بعد کیرن علاقہ میں جنگجوئوں کی کمین گاہ کا پتہ لگایا اور منگل علی الصبح مقامی فوجی یونٹ 6راشٹریہ رائفلز اور سپیشل آپریشن گروپ کے اہلکارو ں نے دریا ئے کشن گنگا کے متصل ایک چھاپہ مار کارروائی کے دوران جنگجوئوں کی کمین گاہ سے 6اے کے میگزن ،1اے کے47رائفل ،1چینی ساخت پستول ،180راؤنڈ گولیا ں بر آمدکیں ۔واضح رہے کہ گزشتہ ہفتہ سوپور پولیس نے کئی جنگجو ئوںکو گرفتار کیا جس کے بعد ان کی نشاندہی پر کیرن میں ان کے ساتھ کام کررہے 5بالائی ورکرو ں کو گرفتار کیا گیا اور ان کی تحویل سے بھاری اسلحہ و گولہ بارود بر آمد کرنے کا دعویٰ کیا گیا ۔اس دو

برفباری اور بارشوں کے بعد کیرن اور مژھل کی سڑکیں بند

کپوارہ//محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے عین مطابق شمالی ضلع کپوارہ کے میدانی علاقوں میں منگل کی صبح سے ہی بارشو ں کا سلسلہ شروع ہوا جبکہ پہاڑی علاقوں میں ہلکی برف باری ہونے کی اطلاع مو صول ہو ئی ہے جس کے نتیجے میں کیرن اور مژھل کی سڑکیں گا ڑیو ں کی نقل و حمل کے لئے بند کر دی گئیں ۔ضلع کے میدانی علاقوں میں موسلا دار بارشو ں کا سلسلہ دن بھر جاری رہا جبکہ کیرن کی فرکیا ں گلی اور زیڈ گلی مژھل پر ہلکی برف جمع ہونے کی اطلاع مو صول ہوئی ہے ۔چوکی بل کرنا ہ سڑک کو اگرچہ 4روز کے بعد ضرورت مند لوگوں کے لئے کھول دیا گیا لیکن تازہ برف باری کی وجہ سے سڑک دو بارہ بند ہوگئی ہے ۔اس دوران کیرن کی سڑک پر بھاری پسیا ں گر آئی ہیں جس کے باعث اس سڑک کی حالت دوبارہ بگڑ گئی ۔میلیال میں کیرن کے درماندہ مسافرو ں نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ وہ کئی روز سے میلیال میں درماندہ ہیں کیونکہ وہ ضروری کام کے لئے کپوارہ آئے

محکمہ موسمیات کی پیش گوئی ، آج گرج چمک اور بارش کا امکان

سرینگر //محکمہ موسمیات نے اگلے 24گھنٹوں کے دورا ن ٹنل کے آرپار بالائی اور میدانی علاقوں میں گرج چمک کے ساتھ بارشیں ہونے کا امکان ظاہر کیا ہے ۔وادی میںمنگل کو دن بھر موسم ابرالودہ رہا اور کئی ایک علاقوں میں بارشیں بھی ہوئیں جس کے نتیجے میں ایک مرتبہ پھر ٹھنڈ میں اضافہ دیکھنے کو ملا ۔محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر سونم لوٹس کے مطابق شمالی ومغربی کشمیر کے علاوہ جموں کے کچھ پہاڑی علاقوں میں بارشیں ہو رہی ہیں اور اگلے  24 گھنٹوں کے دوران جموں وکشمیر میں گرج چمک کے ساتھ بارشیں ہونے کا امکان ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2اپریل کی دوپہر سے موسم میں بہتری آئے گی ۔محکمہ موسمیات کے ترجمان کے مطابق منگل صبح 6بجے سے شام 6بجے تک پہلگام میں 2.2ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے، جبکہ ضلع کپوارہ میں 7.8ملی میٹر بارش ہوئی ۔ کپوارہ سے اطلاع ہے کہ وہاں لولاب ،سوگام ، ویلگار ، ہندوارہ اور کرناہ میں شدید بارشیں ہو رہ

کورونا وائرس | کرناہ کے6امشتبہ مریض بارہمولہ منتقل

کپوارہ//شمالی ضلع کپوارہ میں حد متارکہ پر واقع کرناہ میں اُن 6افراد کو بارہمولہ منتقل کیا گیا ہے جنہیں کورونا کے مشتبہ مریض قرار دیتے ہوئے قرنطین کیا گیا ہے۔کورنا وائرس کے پھیلا ئو کو روکنے کیلئے ضلع انتظامیہ کپوارہ نے بھی ایسے افراد کی نشاندہی کی ہے جو متاثرہ افراد کے رابطے میں آئے ہیں ۔کرناہ کے ایسے 6افراد بھی ان میں شامل ہیں جو کورنا وائرس سے متاثرہ شخص کے رابطے میں آئے تھے ۔مذکورہ افراد کو انتظامیہ نے ڈاک بنگلہ کرناہ اور ڈاک بنگلہ نیچین میں قائم خصوصی مراکز میں قرنطین کیا تاہم پیر کو انہیں بارہمولہ کے جے ایم سی اسپتال منتقل کیا گیا جہا ں ان سے نمونے حاصل کرکے اُن کے ضروری ٹیسٹ کئے جائیں گے ۔کرناہ سے منتقل کئے گئے ان افراد نے الزام عائد کیا ہے کہ سب ضلع اسپتال کپوارہ میں اُن کے ساتھ رات بھربہتر برتائو نہیں کیا گیا اور اُنہیں بھوک اور پیاس کی حالت میں ہی منگل کو بارہ مولہ منتقل کیا

ٹروما اسپتال پٹن میں’ کورونا مرکز ‘قائم | زیر علاج حاملہ خواتین کو پرانے ضلع اسپتال منتقل کرنے کی مانگ

 بارہمولہ // شمالی ضلع بارہمولہ کے پٹن علاقے کی حاملہ خواتین جو فی الوقت زچگی کیلئے سب ضلع اسپتال پٹن کے بجاے ٹروما اسپتال پٹن میں داخل ہیں ، اس بات کو لیکرپریشان ہیںکہ انتظامیہ نے ٹروما اسپتال کوکورونا کے خصوصی مرکز میں تبدیل کیا ہے۔معلوم ہوا ہے کہ مذکورہ اسپتال کے اندر کورونا کے مشتبہ افراد کی بھی نگرانی کی جارہی ہے اور حاملہ خواتین کا بھی علاج ومعالجہ چل رہا ہے۔ پٹن علاقے سے تعلق رکھنے والی ان خواتین کے اہل خانہ نے کہا کہ یہ اسپتال قصبے سے دور بھی ہے جس کے نتیجے میں اُنہیں لاک ڈاون کے دوران ٹرانسپورٹ کی سہولیات میسر نہیں ہیںجس کی وجہ سے بھی اُنہیں کافی دشواریوں کا سامنا ہے۔انہوں نے مزید کہا اگر چہ پٹن قصبہ میں دو اسپتال موجود ہیں لیکن انتظامیہ نے نا معلوم وجوہات کی بنا پر زچگی خواتین کیلئے مخصوص اسپتال کو ہی کورونا مرکز کے طور قائم کیا ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ سبھی حاملہ خوات

وادی کے اسپتال کورونا مریضوں کیلئے مخصوص کرنا لازم:ڈاک

سرینگر//ڈاکٹرس ایسوسی ایشن ،کشمیر(ڈاک)نے وادی کے اسپتالوں کو کوروناوائرس میں مبتلاء شدیدبیماروں کیلئے مخصوص رکھنے پرزوردیا ہے۔ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر نثار الحسن نے ایک بیان میں کہا کہ کورونا وائرس کے انفیکشن میں مبتلاء اکثر لوگوں کو اسپتال میں داخل کرنے کی ضرورت نہیں پڑتی ہے ۔انہوں نے کہا ’’ ہمیں اسپتالوں اور انسانی وسائل کواُن لوگوں کیلئے محفوظ رکھنا چاہیے جنہیں اس کی ضرورت ہے‘‘ ۔انہوں نے مزیدکہا ’’ ہمیں اُن لوگوں کو اسپتالوں میں رکھنے کی ضرورت ہے جنہیں اس کی ضرورت ہے‘‘ ۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ جن لوگوں کو کوروناوائرس کی ہلکی انفیکشن ہے وہ گھروں میں دوہفتوں تک الگ تھلگ رہ سکتے ہیں اورفون پر ڈاکٹر سے رابطہ کرسکتے ہیں ۔ان مریضوں کوایک Paracetamolکی گولی سے افاقہ ہوگااور وہ اپنے آپ ٹھیک ہوجائیں گے ۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ صرف ان مریضوں ک

تازہ ترین