لوگ اجازت کے بغیر کرناہ کپواڑہ شاہراہ پر سفر کرنے سے گریز کریں

سرینگر //ایس ڈی ایم کرناہ ڈاکٹر گلزار احمد راتھر نے لوگوں سے تلقین کی ہے کہ وہ انتظامیہ کی اجازت کے بغیر کرناہ کپواڑہ شاہراہ پر سفر کرنے سے گریز کریں، کیونکہ شاہراہ پر پسیاں اور پتھر گر آنے کے سبب اُن کی زندگیوں کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔   ایس ڈی ایم نے کہا کہ علاقے کے لوگوں کےلئے لگاتار ایڈوائزری جاری کی جاتی ہے، کہ وہ سفر کرنے سے قبل انتظامیہ کے کنٹرول روم نمبرات سے رابطہ قائم کریں، لیکن اس کے باوجود بھی کچھ ایک لوگ ہدایات پر عمل نہیں کرتے ہیں ۔   انہوں نے لوگوں سے کہا کہ جو بھی شخص حکام کی جانب سے جاری ہدایات پر عمل نہیں کرے گا اُس کے خلاف ضابطہ کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ کپواڑہ سے کرناہ کےلئے چاپر سروس موسم کی بہتری کے ساتھ بحال ہو گی اور کل ہیلی کاپٹر کے زریعے مسافروں کو اپنی اپنی منزلوں تک پہنچایا جائے گا۔  

حسنین مسعودی کا مرکزی وزیر خزانہ کو تحریری خط

سری نگر//جموں و کشمیر نیشنل کانفرنس کے ممبر پارلیمنٹ جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے مرکزی وزیر خزانہ سے مطالبہ کیا ہے کہ جموں و کشمیر میں یومیہ اجرت پر کام کرنے والے ڈیلی ویجر اور کنٹریکچول ملازمین کی مستقلی اور ان کی تنخواہوں میں تفاوت دور کیا جائے۔   مرکزی وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن کو لکھے ایک خط میں مسعودی نے جموں و کشمیر کے مختلف سرکاری محکموں، بلدیاتی اداروں، پبلک سیکٹر کے اداروں اور دیگر محکموں میں خدمات انجام دینے والے ڈیلی ویجروں، عارضی، کیجول، کنٹریکٹ، نیڈبیسڈ، سیزنل اور دیگر ورکروں کو درپیش سنگین مسائل اور مشکلات اُجاگر کئے۔   اس معاملے پر اپنی اپیلوں کے بعد متعلقہ وزارت کی کارروائی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے مسعودی نے کہایہ بات قابل اطمینان ہے کہ یکم دسمبر 2021 کو وقفہ صرف کے دوران میرے ذریعہ اٹھائے گئے مسئلے پر وزارتِ داخلہ نے ضروری معلومات کے حصول کے

سرحد پار 135 جنگجو دراندازی کرنے کے انتظار میں: آئی جی بی ایس ایف

سری نگر// بی ایس ایف کے انسپکٹر جنرل کشمیر فرنٹئر راجا بابو سنگھ کا کہنا ہے کہ سرحد پار مختلف لانچنگ پیڈس پر قریب ڈیڑھ سو جنگجو در اندازی کرنے کے انتظار میں بیٹھے ہوئے ہیں۔   انہوں نے کہا کہ یہاں سے کچھ گائیڈس بھی سر پار چلے گئے ہیں تاہم ان پر کڑی نظر گذر رکھی جا رہی ہے۔   ان کا کہنا تھا کہ سال گذشتہ کے اوائل میں جنگ بندی معاہدے پر عملدر آمد کے بعد سے لائن آف کنٹرول پر مجموعی طور پرامن و شانتی کا ماحول چھایا ہوا ہے۔   موصوف آئی جی بی ایس ایف نے ان باتوں کا اظہار پیر کے روز یہاں ہمہامہ میں قائم بی ایس ایف ہیڈ کوارٹرز پر منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔   انہوں نے کہا: ’انٹلی جنس رپورٹس کے مطابق سرحد پار مختلف لانچنگ پیڈس پر 104 سے135 جنگجو در اندازی کرنے کے انتظار میں بیٹھے ہوئے ہیں‘۔   ان کا کہ

یوم جمہوریہ کے پر امن انعقاد کے لئے سیکورٹی کے تمام تر انتظامات کئے گئے ہیں: آئی جی پی کشمیر

سری نگر// کشمیر زون پولیس کے انسپکٹر جنرل وجے کمار کا کہنا ہے کہ وادی کشمیر میں یوم جمہوریہ کی تقریبات کے پر امن اور احسن انعقاد کے لئے سیکورٹی کے تمام تر انتظامات کو عملی جامہ پہنایا گیا ہے۔   انہوں نے کہا کہ گذشتہ ایک ہفتے سے سری نگر اور وادی کے دیگر ضلع صدر مقامات پر پولیس، فوج اور سی آر پی ایف کی طرف سے سیکورٹی ڈرلز کا انعقاد کیا جا رہا ہے اور تمام حساس علاقوں میں سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔   موصوف انسپکٹر جنرل نے ان باتوں کا اظہار پیر کے روز یہاں شیر کشمیر کرکٹ اسٹیڈیم میں یوم جمہوریہ کی مناسبست سے منعقدہ فل ڈرس ریہرسل پریڈ کے حاشیے پر نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرنے کے دوران کیا۔   انہوں نے کہا: ’گذشتہ ایک ہفتے کے سری نگر میں ڈرون نگہداشت کی جا رہی ہے اور وادی کے باقی ضلع صدر مقامات پر پولیس، فوج اور سی آر پی ایف کی طرف سے سیک

کشمیر میں بارشوں اور برف باری کے بعد موسم میں بہتری

  سری نگر//بارش اور برفباری کے ایک ہفتہ کے بعد، پیر کو جموں و کشمیر اور لداخ میں موسم میں بہتری آئی ہے وہیں محکمہ موسمیات نے مہینے کے آخر تک موسم خوشگوار رہنے کی پیش گوئی کی ہے۔   آئی ایم ڈی کے ایک اہلکار نے بتایا کہ پیر کی صبح سے جموں و کشمیر اور لداخ میں موسم بہتر ہونا شروع ہو گیا ہے اور مہینے کے آخر تک خشک رہنے کا امکان ہے۔   دریں اثنا، سری نگر میںمنفی 2.8ڈگری سیلسیس، پہلگام میں منفی 0.8اور گلمرگ میں منفی 9.5ڈگری سیلسیس کم سے کم درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا۔   لداخ کے علاقے دراس میں رات کا سب سے کم درجہ حرارت منفی 8.4ڈگری، لیہہ منفی 9.1اور کرگل میں منفی 9.6درج کیا گیا۔   اس کے علاوہ جموں شہر میں 7.6ڈگری، کٹرہ 6.2، بٹوت 0.1، بانہال صفر اور بھدرواہ میں 0.2درجہ حرارت کم سے کم درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا۔  

میدانی علاقوں میں ہلکی بارشیں

سرینگر //اتوار کو پیر پنچال کے آر پار بیشتر بالائی علاقوں میںتیسرے روز بھی ہلکی برف باری اور میدانی علاقوں میں وقفے وقفے سے بارشوں کا سلسلہ جاری رہا ۔ محکمہ موسمیات نے آج سے ایک ہفتے تک موسم خشک رہنے کا امکان ظاہر کیا ہے ۔ سرینگر کے ساتھ ساتھ وادی کے مختلف علاقوں میں جمعہ کی شب بارشوں اور برفباری کا تازہ سلسلہ شروع ہوا جو اتوار تیسرے روز بھی وقفے وقفے سے جاری رہا۔ کپواڑہ سے اشرف چراغ کے مطابق نستہ چھن گلی پر قریب اڑھائی فٹ تازہ برف جمع ہونے کی اطلاعات ہیں ۔ادھر کیرن ،مژھل ، جمگنڈ علاقے صدر ضلع مقامات سے 6روز سے کٹے ہوئے ہیں۔اتوار کو تیسرے روز بھی مژھل کی زیڈ گلی ، پھرکیاں ٹاپ اور کرناہ سادھنا ٹاپ پر تازہ برف باری ہوئی ۔ سادھنا ٹاپ پر  قریب 6فٹ برف جمع ہے جبکہ پھرکیاں ٹاپ اور زیڈ گلی پر بھی تازہ ایک سے 2فٹ برف جمع ہوئی ہے۔بانڈی پورہ سے عازم جان نے بتایا کہ ضلع میں اتوار کو رک رک

سیاحتی مرکز گلمرگ میں6کمروں پر مشتمل ہٹ خاکستر | ملہ پھاک ہارون میں رہائشی مکان تباہ

 ٹنگمرگ+سرینگر // سیاحتی مقام گلمرگ میں واقع مشہور ہوٹل ہائی لینڈس پارک کی ایک ہٹ جوکہ چھ کمروں پر مشتمل تھی 22اور23جنوری کی درمیانی رات کو اتشزدگی کی ایک واردات میں مکمل طور پرخاکستر ہوگئی ۔یہ ہٹ جہاں جدید طرز پر تعمیر کی گئی تھی وہیں اس کی تعمیر میں دیودار لکڑی استعمال کی گئی تھی ۔ جس وقت ہٹ سے آگ نمودار ہوئی اس وقت اس میں چار سیاح ٹھہرے ہوئے تھے جنہیں ہوٹل کے عملے اور گلمرگ پولیس نے بحفاظت باہر نکالا۔اگرچہ فائر سروس گلمرگ فوری طور جائے واردات پر پہنچ گیا تاہم آگ اس قدر پھیلی تھی کہ چھ کمروں پرمشتمل جدید سہولیات سے لیس یہ ہٹ دیکھتے ہی دیکھتے راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوگئی۔ ابتدائی طور آگ لگنے کی وجہ بجلی شارٹ سرکٹ بتائی جاتی ہے اور نقصان کا تخمینہ کروڑوں روپئے لگایا جارہا ہے۔ گلمرگ پولیس نے اس سلسلے میںکیس درج کرلیا ہے۔ادھرہارون سرینگر کے علاقہ ملہ پھاک کے مقدم محلہ میں شبانہ ا

غیر قانونی کان کنی | بارہمولہ میں ٹریکٹر اورجے سی بی ضبط

بارہمولہ// بارہمولہ میں پولیس نے معدنیات غیر قانونی طورنکالنے کے الزام میں 2 ٹپر ضبط کئے ہیں۔ایس ڈی پی او پٹن شیری محمد نوازکھانڈے کی نگرانی میں ایس ایچ او تھانہ پٹن کی قیادت میں پولیس نے کھن پیٹھ سنگھ پورہ پٹن علاقہ میں معدنیات کی غیر قانونی کان کنی کے الزام میں 1 ٹریکٹر اور1 جے سی بی ضبط کیا۔پولیس نے لوگوں سے درخواست کی ہے کہ وہ کسی بھی نالے سے کسی بھی قسم کی غیر قانونی کان کنی کی سرگرمیوں میں ملوث نہ ہوں کیونکہ یہ حکومتی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔ غیر قانونی کان کنی کی سرگرمیوں میں ملوث پائے جانے والے افراد کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔   

سوپور اور اس کے بیشتر علاقوں میں بجلی کٹوتی جاری | مقامی لوگوں میں محکمہ کے خلاف اظہار ناراضگی

سوپور//شمالی قصبہ سوپور اور اس کے گرد نواح میں بجلی کی آنکھ مچولی سے لوگوں کو ذہنی کوفت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ان علاقوں میں بیشتر اوقات گھپ اندھیرا چھایا رہتا ہے۔بجلی کی اس قدر کٹوتی اور عدم دستیابی کو لیکر قصبہ اور دیگر علاقوں کے لوگوں نے کئی مرتبہ سڑکوں پر آکر پی ڈی ڈی محکمہ کے خلاف زور دار احتجاج کیا تھا تاہم کافی یقین دہانیوں کے باوجود بھی کوئی ٹھوس اقدام نہیں کیا جارہا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ پورے موسم سرما میں گنڈ براٹھ، بومئی، سیر جاگیر، تجرشریف، رامپورہ راجپورہ، جانوارہ، مقام اور ہتھ لنگو وغیرہ میں بجلی سپلائی کافی متاثر رہی۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ گزشتہ تین ماہ سے بجلی کی ناقص فراہمی سے لوگ تنگ آچکے ہیں۔لوگوں کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال محکمہ بجلی نے جو کٹوتی شیڈول مرتب کیا اس پر عمل درآمد نہیں کیا جارہا ہے بلکہ علاقوں میں بجلی 24 گھنٹوں میں صرف چ

بجلی ٹرانسفارمر پھر خراب | زنڈفرن بارہمولہ کی آبادی گھپ اندھیرے میں

 بارہمولہ// زنڈفرن بارہمولہ میں نصب ایک بجلی ٹرنسفارمر ایک مرتبہ پھر خراب ہوگیا جس کے نتیجے میں مقامی آبادی گزشتہ کئی روزسے بجلی سے محروم ہیں ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ لوگوں کو سردیوں کے ان ایام میں سخت تکلیف کا سامنا ہے ۔ ایک مقامی شہری اعجاز احمد نے بتایا کہ زم زم پورہ زنڈفرن میں نصب ایک 100کے وی بجلی ٹرانسفارمر چند روز قبل خراب ہوا تھا جس کو بعد میں مرمت کرکے واپس لایا گیا تاہم صرف تین روز بعد ہی ٹرانسفارمردوبارہ جل گیا جس کے نتیجے میںبستی گھپ اندھرے میں ہیں۔لوگوں کے مطابق یہ ٹرانسفامر با ر بار جل جاتا ہے جس کا خمیازہ عوام کو بھگتنا پڑا ہے ۔انہو ںنے محکمہ پی ڈی ڈی کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ گائوں میںایک موزون اور مناسب ٹرانسفارمر نصب کیا جائے تاکہ لوگوں کے مشکلات کا ازالہ ہو سکے۔  

لار گاندربل میں شیپ ہسبنڈری عملہ پر لاپرواہی کا الزام | بھیڑ دو میمنوں سمیت ہلاک،ملازم ضلع دفتر سے منسلک

گاندربل//گاندربل ضلع میں محکمہ شیپ ہسبنڈری کی غفلت اور لاپرواہی سے ہزاروں روپے مالیت کی حاملہ بھیڑ مبینہ طورغلط علاج ومعالجہ کرنے سے دو بچوں سمیت ہلاک ہوگئی۔یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب لار میں تعینات عملہ نے وقت پر نہ پہنچنے اور غلط علاج کرنے سے تین گھنٹوں کے دوران ہی حاملہ بھیڑ اور اس کے پیٹ میں پل رہے دو بچے لقمہ اجل بن گئے۔ شوکت احمد نامی شہری نے اس بارے میں بتایا کہ اس نے سالوں قبل اپنی محنت اور لگن سے لار میں بھیڑوں کا فارم قائم کیا جس کے لئے اس نے اپنے پڑھے لکھے بچوں کو بھی اس جانب راغب کیا۔تین بھیڑوں سے بڑھ کر اس وقت اس کے پاس چالیس سے زائد بھیڑیں موجود ہیں تاہم اس وقت اس پر قیامت گزری جب قصبہ لار میں موجود شیپ ہسبنڈری محکمہ میں تعینات عملہ کی غفلت اور لاپرواہی سے اس کی حاملہ بھیڑ اور اس کے پیٹ میں پلنے والے دو بچے سپروائزر کے غلط علاج کرنے سے تین گھنٹوں کے دوران ہی مرگئے۔اگرچہ

بارہمولہ میں 2افراد منشیات سمیت گرفتار

بارہمولہ// پولیس نے بارہمولہ میں 2 افراد کومنشیات سمیت گرفتار کیا۔گانٹہ مولہ بارہمولہ میں قائم ایک چوکی پر موجود اہلکاروں نے 2 افراد کو روکا جن کی شناخت خورشید احمد خان اور رئوف احمد خان ساکن ٹتھم اللہ بونیارکے بطور ہوئی۔ تلاشی کے دوران ان کے قبضے سے 9 کلو بھنگ کے خشک پتے اور 90 گرام چرس برآمد کرنے میں کامیاب ہوئے۔ انہیں گرفتار کر کے تھانے منتقل کر دیا گیا جہاں وہ زیر حراست ہیں۔اسی مناسبت سے پولیس تھانہ شیری میں قانون کی متعلقہ دفعات کے تحت مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی گئی۔  

وادی کے مضافاتی علاقوں میں عبور و مرور کا بحران، لوگوں کو گوناگوں مشکلات درپیش

کرناہ //کرناہ میں کاجی ناگ اور بت موجی نالوںپر رابطہ پلوں کی اشد ضرورت کے باوجود حکام برسوں پہلے منظور کئے گئے پل تعمیرکرنے میںناکام ہیں اورچند ایک پل لاکھوں روپے خرچ کرنے کے باوجود تشنہ تکمیل ہیں۔گھنڈی شاٹ کرناہ میں کئی سال قبل سرکار نے ایک پل کی تعمیرکا کام شروع کیا تھا تاکہ تھمڑیا ں ، درنگلہ ،بادرکوٹ ،ہیبکوٹ ٹیٹوال ،بیاڑی اور دیگر نزدیکی گائوں کا رابطہ گھنڈی شاٹھ کے ساتھ ممکن ہوسکے لیکن تھوڑا بہت کام ہونے کے بعد اچانک کام ادھورا چھوڑدیا گیا۔اسی طرح گبرہ مڈیاں ہاڑاں پل بھی برسوں سے تعمیر نہیں ہو رہا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پل کی تعمیر پر ابھی تک لاکھوں روپے خرچ کئے جا چکے ہیںلیکن مزید کام میں لیت ولعل کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے اور اس علاقے کی آبادی کا رابطہ دیگر دیہات کے ساتھ نہیں ہو سکا ہے۔یہ پل ہاڑاں مڈیاں کو ٹاڈ ، گبرہ ،کونہ گبرہ ، ٹنگڈار اور سب ڈویژن کے دیگر دیہات سے جوڑ سکتا ہے ۔م

نائدکھئے سوپورسڑک خستہ حالی کاشکار

سمبل //نائد کھئے سے سوپور تک درجنوں علاقوں کو ملانے 12 کلومیٹر لمبی مسافت والی اہم رابطہ سڑکوں کی برسوں سے نہ ہی تعمیر و تجدید کی گئی اور نہ ہی مرمت کرکے قابل استعمال ہی بنایا گیا جس کے نتیجے میں اس پر سفر کرنے والے کو مشکلات کا سامنا ہے۔نائد کھئے سوناواری سے سوپور تک بارہ کلومیٹر لمبی مسافت والی رابطہ سڑک برسوں سے خستہ اور ناکارہ ہوچکی ہے.جس پر عبور و مرور میں گوناگوں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔مقامی لوگوں کے مطابق نائد کھئے سوناواری سے سوپور تک رابطہ سڑک پر متعدد دیہات آبادہیں جن کے لئے عبور و مرور کے لئے یہ سڑک اہم اور مرکزی اہمیت کی حامل سڑک ہے۔روزانہ  اس رابطہ سڑک پر ہزاروں افراد سفر کرتے ہیں تاہم سڑک پر جگہ جگہ سالوں پرانا تارکول اکھڑ جانے سے سڑک کے بیچوں بیچ بڑے بڑے گھڈے بن گئے ہیں۔.ہاری تار کے مقامی شہری عبدالصمد ڈار نے اس بارے میں بتایا کہ بانڈی پورہ، بارہمولہ،سرینگر

شیری لریڈورہ سڑک کی مرمت کرنے کا مطالبہ

 بارہمولہ//  ضلع بارہمولہ کے شیری سے لریڈورہ رابطہ سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے مسافروں، ٹرانسپورٹروں اور طلاب کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔مقامی لوگوں کے مطابق شیری لریڈورہ تک کی رابطہ سڑ ک کافی خستہ حال ہو چکی ہے جس کے نتیجے میں مقامی لوگوں کو سخت مشکلات درپیش ہیں۔انہوں نے محکمہ آر انیڈ بی پر الزام عائد کرتے ہوئے بتایا کہ اس سڑک کی حالت انتہائی ناگفتہ بہہ ہے جبکہ سڑک پر جگہ جگہ گہرے گڑھے بن گئے ہیں ۔ اور مذکورہ سڑک کی ناگفتہ بہہ حالت سے مسافروں ٹرانسپورٹروں کو شدید مشکلات پیش آرہی ہیں۔لوگوں کے مطابق اگر چہ انہوں نے کئی بار متعلقہ محکمہ کے آفسران کو مطلع کیا تھا تاہم انہوں نے اس سڑک کی طرف کوئی توجہ نہیں دی ۔ بیوپارمنڈل  شیری کے عہدیداروں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اس سڑک کی حالت ا س قدر خستہ ہے اس پر اب تریفک چلانا دشوار بن گیا ہے اور ٹرانسپورٹر بھی مشکل س

بٹگراں اوڑی سڑک 15دنوں سے بند | برف ہٹانے کا عوام کا مطالبہ

  بارہمولہ// سرحدی قصبہ اوڑی کا بٹگراں سڑک رابطہ گزشتہ پندرہ روز سے بند پڑا ہوا ہے جس کے نتیجے میں مقامی آبادی کو سخت مشکلات سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔  ادھر تازہ برفباری کے بعد اوڑی کے کئی دیگر بالائی علاقے تحصیل ہیڈ کوارٹر سے منقطع ہے۔ متاثرہ دیہاتوں میں چوکس گوالتا، پنج ناگ نوا، گوہالن بٹگراں ، دانہ موٹھل ، اپر گرکوٹ، اپر نمبلہ زمور پٹن، شکر کلاری سے بند محلہ، میان شامل ہیں ۔شدید برف باری کے بعد بجلی نظام بھی بری طرح متاثر ہوا ہے جس کے باعث مقامی لوگوں کو بجلی کے بحران کا بھی سامنا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ برف باری کے بعد انہیں کافی مشکلات کا سامنا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سب ڈویڑن اوڑی کے بالائی علاقوں میں شدید برف باری نے زندگی کو درہم برہم کر دیا ہے۔ ادھر بٹگراں کے لوگوں نے بتایا کہ اگر چہ انہو ں نے گزشتہ پندرہ روز سے پی ایم جی ایس وائی محکمہ اور  اوڑی انتظامیہ سے

کہلیل،بٹ نوراوربٹہ گنڈ اسپتالوں کا حال بے حال | طبی اور نیم طبی عملہ نہ ہونے کی وجہ سے طبی مراکزکاہونا نہ ہونابرابر

ترال//جہاں ایک طرف سرکار دیہی آبادی کو بہتر طبی سہولیات فراہم کرنے کے لئے اقدامات کر رہی ہیں وہی دوسری جانب سے سب ضلع ترال کے 3دیہی علاقوںجن میں کہلیل،بٹ نور اور بٹہ گند  شامل ہیں، میں تعینات ڈاکٹر اور یہاں کی ایمولنس گاڑیاں کئی سالوں سے لاپتہ ہیں جس کی وجہ سے ان دیہی علاقوں کی وسیع آبادی کو مشکلات کا سامنا ہے ۔بٹہ نور نامی گائوں کی وسیع آبادی کو مد نظر رکھ کرلاکھوں روپے کی لاگت سے ایک  ہسپتال کی عمارت تعمیر کی گئی ہے تاہم تاحال اس ہسپتال میں صرف ایک بی یوایم ایس ڈاکٹر کو تعینات کیا گیا ہے جبکہ باقی عملہ تا حال تعینات نہیں کیا گیا ہے جس کی وجہ سے ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کو علاج معالجہ کے لئے ترال یا باقی علاقو ں کا رخ کرنا پڑ رہا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا اگر چہ انہوں نے یہ معاملہ انتظامیہ کے ساتھ بھی اٹھایا تاہم تاحال کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی اور لوگ مسلسل پ

جموں وکشمیر بہتر حکمرانی کی راہ پر گامزن | حالیہ مہینوں میں کئی اِی۔ گورننس اِصلاحات شروع | اِی ۔ آفس نے جموں وکشمیر کے سرکاری محکموں میں آسان ورک کلچرمتعارف کرایا

سری نگر//جموںوکشمیر جنرل ایڈمنسٹریشن محکمہ نے حالیہ مہینوں میں جموںوکشمیر میں مختلف اِی۔ گورننس اِقدامات متعارف کرتے ہوئے دفتر ی نظام میں اِنقلاب لایا ہے ۔اِی ۔ آفس اَپنانے سے جموںوکشمیر کے بیشتر سرکاری دفاتر میں ایک آسان ، جواب دہ ، مؤثر اور شفاف کاغذی کام کا کلچر قائم ہوا۔ اِی ۔ آفس سسٹم ملازمین کوجانکاری اور خدمات کے لئے ایک گیٹ وے پیش کرتے ہوئے اَپنے کام اور علم کے اشتراک کے ہر پہلو سے متعلق معلومات تک رَسائی کا ایک آسان طریقہ فراہم کر رہا ہے۔اِی ۔ آفس دفاتر میں فائلوں کی تاخیر کو ختم کر کے عوامی خدمات کی فراہمی کو بہتر بنانے میں سرکاری محکموں کی مدد کر رہا ہے ۔ اِی ۔ آفس کے آغاز سے نہ صرف فائلوں کو نمٹانے کی رفتار اور کارکردگی میں اِضافہ ہوا ہے بلکہ اِس سے عوامی اہمیت کے مختلف معاملات پر بروقت اور تیز فیصلے بھی کئے جارہے ہیں۔مزید برآں، جنرل ایڈمنسٹریشن ڈیپارٹمنٹ نے جموںوک

تازہ ترین