کورونا مخالف ٹیکہ کاری کا دوسرا دن،ملک میں 447شکایات درج | 3ویکیسن متاثرین اسپتال میں داخل، 2لاکھ 24ہزار 301ہیلتھ ورکروں کو ٹیکے لگے: وزارت صحت

 سرینگر // مرکزی وزارت صحت نے کہا ہے کہ 2روز کے دوران کورونا وائرس مخالف ویکسین دینے کے دوران 447 شکایات موصول ہوئی ہیں جن میں ہیلتھ ورکروں کو زکام، سر درد،بخار یا تھکاوٹ محسوس ہوئی۔وادی میں بھی اس طرح کا ایک کیس سامنے آیا ہے۔ مرکزی وزارت صحت نے کہا ہے کہ 16جنوری کو ملک بھر میں 2 لاکھ 24ہزار 301 ہیلتھ ورکروں کو کورونا مخالف ویکسین دیئے گئے جن میں سے 447 ہیلتھ ورکروں نے مختلف بیماریوں  (adverse events following immunization)  کی شکایت کی ۔  وزارت صحت کے ایڈیشنل سیکریٹری منوہر اگنانی نے کہا کہ اتوار کو صرف 6ریاستوں میں ٹیکہ کاری مہم جاری رہی جہاں 17 ہزار 72 ہیلتھ ورکروں کو ویکسین دیئے گئے ۔انہوں نے کہا کہ جن ریاستوں میں اتوار کو ٹیکہ کاری جاری رہی ، ان میں آندھرا پردیش، اروناچل پردیش ، کرناٹک، کیرالا ، منی پور اور تامل ناڈو شامل ہیں۔ ان کا کہنا تھاکہ2 دنوں کے دوران

جموں کشمیر میں کورونا کا قہر تھم گیا | 24 گھنٹوں میں کوئی موت نہیں،126نئے معاملات مثبت

سرینگر //13جنوری کے بعد جموں و کشمیر میں اتوار کو دوسری مرتبہ کورونا وائرس سے کوئی بھی شخص فوت نہیں ہوا ۔ مہلوکین کی مجموعی تعداد 1921بنہ ہوئی ہے جن میں  715جموں جبکہ 1206کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے 21ہزار 896 ٹیسٹ کئے گئے جن میں 126  افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں اور اسطرح متاثرین کی مجموعی تعداد ایک لاکھ 23ہزار 343 ہوگئی ہے۔ ان میں 51ہزار143جموں جبکہ 72 ہزار 200 کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ نئے 126معاملات میں 61جموں جبکہ 65کشمیر صوبے سے تعلق رکھتے ہیں ۔ کشمیر سے تعلق رکھنے والے 65متاثرین میں 34سرینگر، 4طارہمولہ، 7بڈگام، 4پلوامہ، 5کپوارہ، 4 اننت ناگ، 0بانڈی پورہ، 4گاندربل، 1کولگام اور 2شوپیان سے تعلق رکھتے ہیں۔ جموں میں نئے 61 معاملات میں 48 ضلع جموں، 1 ادھمپور، 1راجوری، 2کٹھوعہ، 6 کشتواڑ،  ایک رام بن، 6پونچھ اور 2 سانبہ سے تعل

نواکدل، واتل کدل اور اقبال مارکیٹ کپوارہ میں آگ کے بھیانک واقعات | 6مکان، 6دکانیں اور 3گودام خاکستر | کروڑوں روپے کی املاک تباہ ،متعدد کنبے بے خانماں

سرینگر+کپوارہ //نواکدل اور واتل کدل میں آگ کے الگ الگ واقعات میں 6مکان خاکستر ہوگئے جبکہ رسوئی گیس سلینڈر پھٹنے سے آتش فرو عملہ کے 2اہلکار زخمی ہوگئے۔ادھر اقبال مارکیٹ کپوارہ میں آتشزدگی میں 6دکانیں اور 3گودام جل گئے۔  نوا کدل میں جان محمد شیخ ولد غلام رسول کے مکان کی اوپری منزل سے آگ نمودار ہوئی جس نے مصدق احمد کاٹجو ولد غلام قادر اور محمد یعقوب صوفی ولد غلام محمد کے مکانات کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ اس موقعہ پر محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی سروس کو اطلاع دی گئی جنہوں نے موقع پر پہنچ کر مقامی لوگوں کی مدد سے کئی گھنٹوں بعد آگ پر قابو پا لیا۔ آگ کے واقعہ میں 3رہائشی مکان اور اس میں موجود مال اسباب خاکستر ہوگیا۔پولیس نے آگ لگنے کی وجوہات کا پتہ لگانے کیلئے کیس درج کرلیا۔ آگ کے دوسرے واقعہ میں واتل کدل میں 3 رہائشی مکانوں کو نقصان پہنچا۔آگ لگنے کی اطلاع ملتے ہی محکمہ فائر اینڈ

گامراج ترال رابطہ سڑک کی تعمیر منظوری ملنے کے باوجود کھٹائی میں

ترال// گامراج ترال کی رابطہ سڑک کو سرکار کی جانب سے تعمیر کرنے کی منظور ی کے باجود نا معلوم وجوہات کی بناپر کام شروع نہیں کیا گیا ہے جس کے باعث آبادی کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ترال سے صرف چند کلو میٹر دور ترال گامراج سڑک ’’وزیر اعظم گرام سڑک یوجنا‘‘کے تحت سرکار کی جانب سے تعمیر کرنے کو منظوری مل گئی ہے جس کی وجہ سے علاقے کے لوگوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ۔لوگوں کاکہنا ہے کہ مذکورہ سڑک انتہائی خستہ حالت میں ہے جس کی وجہ سے نہ صرف گامراج ترال کے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے بلکہ دیگر گائوں کی آبادی کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔لوگوںنے مزید کہاکہ مذکورہ روڑ کو پہلے منصوبے میں رکھا گیا جس کیلئے انہیں انتظار کرنا پڑالیکن جب سرکار کی منظوری اور رقومات کی فراہمی بھی ہوئی لیکن کام شروع نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے انہیں سخت تشویش لاحق ہے ۔مقامی

بوچھو پٹن میں بجلی کی عدم دستیابی

بارہمولہ // بوچھو پٹن برقی رو سے محروم ہیں جس کے نتیجے میں صارفین کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ بجلی کی آنکھ مچولی سے کافی تنگ آچکے ہیں اور علاقے میں شام ہوتے ہی ہر سو گھپ اندھیرا چھا جاتا ہے جس کے نتیجے میں مقامی صارفین کے ساتھ ساتھ طلاب کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جسے لوگوں میں محکمہ بجلی کے خلاف شدید غم و غصہ پایا جارہا ہے ۔  مقامی آبادی کا کہنا ہے کہ وہ بجلی کی مسلسل آنکھ مچولی سے کافی تنگ آچکے ہیں جس کے وجہ سے اُنہیں سخت سردیوں کے ان ایام میں بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔صارفین نے محکمہ بجلی پر الزام عائد کیا کہ اگرچہ وہ باقاعدگی کے ساتھ بجلی فیس بھی ادا کر رہے ہیں لیکن اس کے باوجود برقی رو میں بہتری نہیں آرہی ہے۔ ایک مقامی صارف مزمل احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا اگر چہ میٹر نصب کرنے کے وقت وعدہ کیا گیا تھا کہ اب بجلی

ایام فاطمیؑ کی اختتامی مجالس | خاتون جنتؑ کی سیرت موثر اور نتیجہ خیز راہ: آغا حسن، کرگل میںہزاروں عزاداروں کا جلوس

سرینگر+ کرگل//انجمن شرعی شیعیان کے اہتمام سے وادی کے طول و عرض میں ایام فاطمیہ کی اختتامی مجالس کاانعقاد کیا گیا۔اس سلسلے میں مجالس عزاء کا انعقاد مرکزی امام باڑہ بڈگام، چھترگام، پونچھ گنڈ،یاگی پورہ ماگام،سونہ پاہ اور اندرکوٹ میں ہوا۔اس سلسلے میںسب سے بڑا اجتماع مرکزی امام باڑہ بڈگام میں منعقد ہواجس میں عقیدت مندوں کی خاصی تعداد نے شرکت کی ۔اس موقعہ پر انجمن شرعی شیعیان کے صدر آغا سید حسن نے حضرت فاطمۃ الزہرا ؑ کے فضائل اور سیرت و کردار کے مختلف گوشوں کی وضاحت کی ۔آغا حسن نے جناب سیدہؑ کی شان و منزلت بیان کرتے ہوئے کہا کہ مبائلہ کا واقعہ خاتون جنتؑ کی عظمت کا ایسا ایمان افروز مظاہرہ ہے جس کے آگے نجران کے یہودی اکابرین نے بلا جھجک سر نگونی اختیار کی۔ انھوں نے کہا کہ حضرت زہراؑ نے اپنی مختصر ترین زندگی میں عشق عرفان الٰہی،زہد و تقویٰ اور تحفظ حق و انسانیت کے ایسے عنوان رقم کئے جو رہتی

شہربین کے مدیر مقصود احمد اور کشمیرعظمی ٰکے نامہ نگار ظفر اقبال کے چاچا فوت

بارہمولہ /فیاض بخاری/وادی کے معروف براڈکاسٹر اورریڈیو کشمیر سرینگر کے پروگرام شہربین کے مدیر مقصود احمد اور کشمیر عظمیٰ کے نامہ نگار ظفر اقبال کے چا چاخواجہ بدرالدین ساکنہ گھرکوٹ اوڑی سنیچر کو مختصر علالت کے بعد انتقال کر گئے ۔مرحوم کی نماز جنازہ آبائی گائوں گھر کوٹ اوڑی میں انجام دی گئی جس میں سماج کے مختلف طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی ۔72 سالہ خواجہ بدر الدین کے انتقال پر کئی  صحافی، سیاسی ، سماجی و دینی تنظیموں نے مقصود احمد اور ظفر اقبال کے ساتھ تعزیت کااظہار کرتے ہوئے مرحوم کی جنت نشینی کی دعا کی۔اس دوران بارہمولہ ورکنگ جرنلسٹ ایسوسی ایشن اور شمالی کشمیر جرنلسٹ ایسوسی ایشن،رورل ڈیولپمنٹ سوسائٹی کے چیئرمین و سابق سپیکر مبارک گل، وائس چیئرمین شمالی کشمیر خواجہ محمد شفیع اور ضلع چیئرمین عبدالمجید آخون، ہیومن ایڈ سوسائٹی کشمیر کے چیئرمین بشیر احمد نے لواحقین، مق

سرینگرمظفرآباد شاہراہ پر پھسلن | خانپورہ میں دوگاڑیوں میں ٹکر،3زخمی

بارہمولہ // ضلع بارہمولہ میں سرینگر مظفر آباد شاہراہ پر کئی مقامات پر پھسلن ہونے کی وجہ سے کئی گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔ ادھر اتوار کو خان پورہ میں دو گاڑیوں کی آپسی ٹکر کی وجہ سے تین افراد زخمی ہوگئے ۔ جبکہ کئی مقامات پر گاڑیوں کو نقصان ہوا ۔ اتوار کی صبح کو خانپورہ بارہمولہ میںدو گاڑیوں کے درمیان شدید ٹکر ہوئی جس کے نتیجے میں تین افراد زخمی ہوئے جن میں دو افراد کو سرینگر منتقل کیا گیا جبکہ دونوں گاڑیوں کو بھی شدید نقصان پہنچا ۔  اس دوران شیری علاقے میں بھی شاہراہ پر منجمد برف پر پھسلن پیدا ہوئی ہے جس کے نتیجے ایک گاڑی پلٹ گئی جس کی وجہ سے گاڑی کو بھاری نقصان ہوا  ۔  مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ شاہراہ پرپٹن ، بارہمولہ ، شیری اور دیگر کئی مقامات پر جمع برف جم جانے کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے تاہم انتظامیہ اور بیکن حکام خاموش ہیں ۔انہوں نے متعلقہ حکام سے مطالبہ کیا

بھاری برف باری کے بعد | جمہ گنڈ ترہگام کا ضلع صدرمقام کپوارہ سے رابطہ ہنوز منقطع،علاقہ میں اشیائے ضروریہ کی قلت

کپوارہ// بھاری برف باری کے بعد جمہ گنڈ ترہگام کا زمینی رابطہ ہنوزضلع صدر مقام کپوارہ سے منقطع ہے جس کی وجہ سے علاقہ کے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔کپوارہ سے34کلومیٹر دور جمعہ گنڈ کے لوگوں کا کہنا ہے کہ اس علاقہ میں پہلی برف باری کے بعد زرہامہ جمہ گنڈ سڑک سے برف نہیں ہٹائی گئی جس کے بعد مزید برف باری ہوئی اور مذکورہ سڑک پر اس وقت چار فٹ برف جمع ہے ۔چاربر س قبل زرہامہ جمہ گنڈ سڑک کو محکمہ وزیراعظم دیہی سڑک اسکیم نے مکمل کرکے گاڑیوں کی آمدورفت کیلئے وقف کیا تاہم موسم سرما کے دوران اس سڑک سے کبھی بھی برف نہیں ہٹائی گئی جس کی وجہ سے لوگو ں کو ہر سال موسم سرما میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ امسال بھی مذکورہ سڑک ایک ماہ سے زائد عرصہ سے بند پڑی ہے اور متعلقہ محکمہ اس سڑک سے برف ہٹانے کے کام میں مکمل طور ناکام ہو چکا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ بھاری برف ب

مزید خبریں

گپکاراتحاد پرانگلی اُٹھانے والے عوام کے دشمن:اکبرلون سرینگر//نیشنل کانفرنس نے کہا کہ گپکار اتحاد پر انگشت نمائی کرنے والے جموں کشمیر کے عوام کے دشمن ہیں،جبکہ حالیہ ضلع ترقیاتی کونسل انتخابات کے دوران عوام نے یہ ثابت کردیا کہ وہ اس اتحاد کے پشت پناہ ہے۔ ممبر پارلیمنٹ اور نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر محمد اکبر لون نے مقامی کارکنوں اور عہداروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا جموں کشمیر کو مرکزی زیر انتظام والے خطے میں تبدیل کرنا دلی حکمرانوں کی تاریخی اور بڑی غلطی ہے اور اس کی تصدیق بھارت کے بڑے لیڈراں نے بھی کی۔ انہوں نے کہا’’جموں کشمیر اور لداخ کے عوام نے پہلے ہی جموں کشمیر کے تنظیم نو کو مسترد کرکے اسے غیر جمہوری قرار دیا ہے‘‘۔محمد اکبر لون نے کہا کہ جو لوگ بدقسمتی سے گپکار الائنس پر انگلی اٹھاتے ہیں وہ جموں کشمیر کے عوام کے دشمن ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ گپکار اعلامیہ کی

تازہ ترین