تازہ ترین

کشتواڑ کے پاور پروجیکٹوں میں سیکورٹی سخت

جموں//ضلع کشتواڑ کے پاور پروجیکٹوں بالخصوص دچھن علاقے میں سیکورٹی سخت کر دی گئی ہے۔ایک سینئر سیاسی اہلکار نے کہا"ہمیں کشتواڑ میں بجلی کے منصوبوں کو کوئی خاص سیکورٹی خطرہ نہیں ہے۔ تاہم دچھن میں پاور پروجیکٹوں میں سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے اور علاقوں میں گشت بڑھا دیا گیا ہے"۔پولیس عہدیدار نے کہا کہ پولیس اور دیگر سیکورٹی ایجنسیوں نے حزب عسکریت پسندوں کی سرگرمیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے پہلے ہی صورتحال کا جائزہ لیا ہے۔پولیس عہدیدار نے کہا’’حزب المجاہدین کے تین عسکریت پسند اب بھی دچھن اور اس کے آس پاس کے پہاڑوں میں سرگرم ہیں۔سیکورٹی فورسز ان کے پیچھے ہیں اور اسی کے مطابق آپریشن کیا جاتا ہے۔ تاہم بجلی کے منصوبوں کو غیر محفوظ رکھنا ایک غلطی ہو سکتی ہے اور اس لیے تحفظ ضروری تھا‘‘۔اہلکار نے بتایا کہ انہوں نے مشکوک سرگرمیوں پر نظر رکھنے کے لیے دچھن کے علاقے میں ایک

ڈگڈول اور پاڈر حادثات میں7افراد زخمی

بانہال+کشتواڑ // ڈگڈول رام بن اور پاڈر کشتواڑ میں سڑک کے دو مختلف حادثات میں 7افراد زخمی ہوگئے ۔رام بن اور بانہال کے سیکٹر میں اتوار کے روز  بارشوں کے نتیجے میں سڑک پر پیدا ہوئی سلپ کے نتیجے میں ایک کار کے پلٹنے کی وجہ سے پانچ مسافروں کو معمولی چوٹیں آئیں اور انہیں ضلع ہسپتال رام بن منتقل کیا گیا۔ پولیس نے بتایا کہ کار نمبر 3576 JK-18B ڈگڈول کے مقام پر بظاہر سلپ کی وجہ سے سڑک پر ہی پلٹ گئی اور ایک بڑا حادثہ ٹل گیا۔ انہوں نے کہا کہ پانچ مسافروں کو معمولی چوٹیں آئیں اور انہیں ضلع ہسپتال میں ابتدائی طبی امداد کے بعد رخصت کیا گیا ۔ اس کے علاوہ بارشوں کی وجہ سے سڑک پر پیدا ہوئی سلپ اور فورلین سڑک پر تیز رفتار ڈرائیونگ کے نتیجے میں ایک ٹیمپو اور ایک ٹرک بھی سڑک کے دائیں بائیں کھسک گئے تاہم کسی نقسان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ ادھرکشتواڑ کے علاقہ پاڈر میں بعد دوپہر سڑک حادثے میں دوافراد زخ

مزید خبریں

۔110 کلومیٹر کٹرہ بانہال ریلوے لائن کی بنکوٹ ٹنلوں کو ملایا گیا |  ایک اور سنگ میل عبور،آئندہ 2برسوں میں کشمیر ریل پروجیکٹ مکمل ہونے کی راہ ہموار محمد تسکین   بانہال//کشمیر ریل پروجیکٹ کا ایک اہم سنگ میل اتوار کو طے کرلیا گیا جب  110کلو میٹر کٹرہ اور بانہال ریلوے لائن میں شامل بنکوٹ میں قریب دو کلومیٹر لمبے ٹنل نمبر 77 اے اور ڈی کو آپس میں ملایا گیا۔اس ٹنل کے آر پار ہونے سے بانہال اور کھڑی کے درمیان ریلوے ٹنلوں کی کھدائی کا بیشتر کام مکمل ہوگیا ہے اور ریلوے حکام کو امید ہے کہ کٹرہ ۔ بانہال سیکٹر آئندہ 2برسوں میں مکمل ہوگا  اور 2023 میں کشمیر کو ہندوستانی ریلوے سے جوڑا جائیگا ۔ بانہال اور کھڑی کے درمیانی  حصے میں نئی سروے اور کچھ تبدیلیوں کے بعد 3 سو کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر کئے جارہے ٹنل نمبر 77  کو آر پار کیا گیا۔اس موقعہ پر ایک تقریب من

تازہ ترین