موسم میں تبدیلی

ڈوڈہ //ہفتہ کے روز ہوئی برفباری کے بعد اتوار کو موسم خوشگوار رہا جس دوران لوگوں نے راحت کی سانس لی۔ اطلاعات کے مطابق ہفتہ کے روز ڈوڈہ کے بالائی علاقوں میں تازہ برفباری ہوئی جس کے نتیجے میں معمولات زندگی متاثر ہوئی تاہم اتوار کو موسم خوشگوار رہا۔ اس دوران اگر چہ چند حصوں کو چھوڑ کر بیشتر علاقوں میں بجلی بحال رہی، تاہم متعدد دیہات میں پانی کی سپلائی ٹھپ ہے جبکہ اندرونی دیہات کی رابطہ سڑکوں پر بھاری پھسلن کی وجہ سے ٹریفک نظام معطل رہا۔ موسم خوشگوار ہوتے ہی پانی، بجلی کی بحالی و سڑکوں سے برف ہٹانے کا عمل شروع کیا گیا۔ ڈی ڈی سی ممبران معراج ملک،ندیم شریف نیاز، چوہدری محمد اقبال کوہلی نے انتظامیہ سے برف متاثرہ علاقوں میں بنیادی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے راشن، ادویات و دیگر غذائی اجناس کی سپلائی وافر مقدار میں دستیاب رکھنے پر بھی زور دیا ہے۔

کشتواڑ ،ڈوڈہ ،رام بن اور ریاسی میں عام زندگی مفلوج،بیسیوں رابطہ سڑکیں مسدود

 کشتواڑ+ڈوڈہ //محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے عین مطابق ہفتہ کے روز وادی چناب میں ہلکی بارش کے بعد شدید برفباری کا سلسلہ شروع ہوا جس کے نتیجے میں درجہ حرارت میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے اور بیشتر دیہات میں پانی، بجلی و سڑک نظام متاثر ہوا ہے۔کشتواڑ کے  بالائی علاقوں میں صبح سے ہی برفباری شروع ہوئی تھی وہیں میدانی علاقے میں بعد دوپہر برفباری کا سلسلہ شروع ہوا۔ اگرچہ صبح کے وقت بازاروں میں چہل پہل دیکھی گئی لیکن بعد دوپہر بڑی کم تعداد میں لوگ گھروں سے باہر نکلے اور لوگوں نے گھروں میں رہنے کو ہی ترجیح دی۔ ضلع کے دورافتادہ علاقہ جات مڑواہ، واڑون و دچھن میں 4سے 6 انچ تک برفباری درج کی گئی جبکہ دیگر علاقاجات پاڈر ، مچیل ،چھاترو، مغلمیدان ، کیشوان ،ٹھکرائی ،پلماڑ، بونجواہ، سروڑ میں بھی4 انچ تک برفباری درج کی گئی وہیں قصبہ میں بھی 3 انچ برفباری درج کی گی تھی جبکہ یہ سلسلہ آخری اطلاع ملن

’روبرو‘کتاب کی کمشنر سیکرٹری کی موجودگی میں رسم اجرائی

ڈوڈہ//نئی نسل کو تعلیم کے ساتھ ساتھ سماج کے ساتھ اپنے روابط مضبوط بنانے کے لئے گورنمنٹ ڈگری کالج ڈوڈہ کے شعبہ اْردو نے ایک پہل کرتے ہوئے 'روبرو' نامی ایک کتابچہ شائع کیا۔ادو میں شائع کی گئی اس کتاب میں مختلف علمی، ادبی، سماجی و صحافتی برادری سے وابستہ شخصیات نے اپنے تاثرات، تجربات و مشاہدات کو بیان کیا ہے۔اس کی رسم اجرائی جمعہ کے روز جموں میں عمل میں لائی گئی جس میں اعلی تعلیم کے کمشنر سیکرٹری طلعت پرویز روحیلا ،پرنسپل گورنمنٹ ڈگری کالج ڈوڈہ ڈاکٹر شفقت رفیقی، کتاب کے مصنف و صدر شعبہ اردو ڈاکٹر اختر حسین آخون، ڈائریکٹر فائنانس عبدالمجید بٹ ،جی ایم گنائی ڈائریکٹر منصوبہ بندی، پرنسپل وومن کالج پریڈ ڈاکٹر ایس پی سرسوت، پرنسپل ایم اے ایم کالج ڈاکٹر سنیل، ڈاکٹر آر ایس جموال پرنسپل ایس پی آیم آر کالج، ڈاکٹر امتیاز زرگر اسسٹنٹ پروفیسر، ڈپٹی سیکرٹری وکاس دھر نے شرکت کی۔اس موقع پر کم

بانہال میں چوری کا معاملہ آدھے گھنٹہ میں حل

بانہال // بانہال پولیس نے جمعہ کی نماز کے دوران قصبہ بانہال میں ایک ہول سیل دکان سے نقلی پستول کی نوک پر دس لاکھ چون ہزار روپئے کی رقم لیکر فرار ہونے والے ایک شخص کو ادھے گھنٹے کے اندر اندر چوری کی واردات میں استعمال کی گئی کار اور اس میں چھپائی گئی رقم سمیت گرفتار کیا ہے۔ اس سلسلے میں ایس ایس پی رام بن حسیب الرحمان نے رام بن میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا ۔ پولیس نے گرفتار چور کی شناخت ظفر شاہ ولد مظفر شاہ ساکنہ یکمن پورہ پٹن ضلع بارہمولہ کے طور کی ہے۔نماز جمعہ کے وقت قصبہ بانہال کے وسط میں واقع ہول سیلر خورشید احمد شاہ ولد گل محمد شاہ کی دکان پر دو بچے ہی بیٹے تھے اور باقی افراد نماز کیلئے مسجد گئے تھے۔ اتنے میں ایک شخص دکان پر آیا اور سودا خریدنے لگا اور دونوں بچے سودا تولنے وغیرہ میں لگ گئے۔اس دوران اس لٹیرے نے نقلی پستول دکھا کر وہاں بیگ میں بنک لے جانے والی ساڑھے 1054000 روپئے

کشتواڑ میں پولیس پر گرینیڈحملہ

کشتواڑ/آصف بٹ /ضلع کشتواڑ سے 20کلومیڑر دور کشتواڑ سنتھن شاہراہ پر ڈیڈپیٹھ کے مقام پر مشتبہ جنگجوئوں نے پولیس گاڑی پر گرینیڈ پھینکا جو نشانہ چوک کر زوردار دھماکے سے پھٹ گیا۔تاہم اس واقعہ میں کوئی ہلاک نہیں ہوا۔بتایا جاتا ہے کہ اس حملے میں ایک پولیس اہلکار معمولی زخمی ہوا جسے علاج و معالجہ کیلئے ضلع ہسپتال منتقل کیا گیا۔ پولیس کے مطابق پولیس کی گشتی پارٹی کشتواڑ سے چھاترو جارہی تھی کی ڈیڈپیٹھ کے مقام پر پولیس چوکی سے محض 50میٹر کی دوری پر اس پر حملہ کیا گیا۔ تاہم گرینیڈ گاڑی کو نہیں لگا اور سڑک پر گر کر دھماکے سے پھٹ گیا۔ذرائع نے بتایا کہ ایک پولیس اہلکار زخمی ہوا تاہم ایس ایس کشتواڑ ہر میت سنگھ نے کہا کہ پولیس کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔انہوں نے کہا کہ حملے کے بعد اس علاقے کو گھیرے میں لیکر تلاشیوں کا آغاز کردیا گیا ہے، جبکہ واقعہ کے حوالے سے کیس بھی درج کرلیا گیا ہے۔انہوں نے مزید کہا ک

گاگرہ کلی مستا سڑک دو دہائیوں سے تشنہ تکمیل ،لوگ عاجز آگئے

گول//گول سب ڈویژن کے جمن گاگرہ روڈ پر قریب دو دہائیوں سے تعمیری کام چل رہا ہے لیکن ابھی تک یہ روڈ آمد و رفت کے قابل نہیں بنائی گئی ۔ پہلے قریباً پانچ کلو میٹر پی ڈبلیو ڈی کے تحت ہارہ علاقہ تک آتا ہے اور اُس کے بعد گاگرہ تک پی ایم جی ایس وائی کے سپرد ہے ۔اگر لوگوں کی مانیں تو قریباً اٹھارہ سال سے اس سڑک پر تعمیری کام چل رہا ہے لیکن ابھی تک گاگرہ تک نہیں پہنچی اور آدھے راستے ہی اراضی کی کٹنگ کر کے چھوڑ دیا ہے ۔ گزشتہ روز مقامی لوگوں نے علاقہ ہارہ کلی مستا میں شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ اگر روڈ کو جلد از جلد بحال نہیں کیا گیا تو اس کے نتائج بھیانک نکل سکتے ہیں کیونکہ یہاں کی عوام تنگ آمد بہ جنگ آمد پر ہی اب چل کر آگے کا لائحہ عمل طے کرے گی۔گاگرہ کلی مستا پنچایت کے سرپنچ احد اللہ مغل نے کشمیرعظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ کافی عرصہ سے اس سڑک پر تعمیری کام چل رہا ہے لیکن ابھی تک

کشتواڑ میں گرینیڈ دھماکہ، کوئی نقصان نہیں

سرینگر//نامعلوم افراد نے جمعہ کو کشتواڑ ضلع میں ایک گرینیڈ دھماکہ کیا تاہم اس سے کسی قسم کا نقصان نہیں ہوا۔یہ واقعہ ضلع کے دیدپیٹھ علاقے میں پیش آیاجہاں گرینیڈ کے ذریعے پولیس پارٹی کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی۔ نیوز ایجنسی جی این ایس کے مطابق ایس ایس پی کشتواڑ ہرمیت سنگھ مہتانے گرینیڈ دھماکہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں تحقیقات فوری طور پر شروع کی گئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن جاری ہے۔  

ڈوڈہ میں سرکاری ڈھانچہ کا حال بے حال

   عوام پریشان ،منریگا، پی ایم اے وائی و دیگرفلاحی سکیموں کی اجرتوں سے بھی محروم   ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بیشتر علاقوں میں بنیادی سہولیات کی عدم دستیابی سے عوام کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ڈوڈہ، بھدرواہ ،ٹھاٹھری و گندوہ سے ملی اطلاعات کے مطابق جہاں درجنوں دیہات میں پینے کے صاف پانی کی کمی، بجلی کی ناقص کارکردگی و خستہ حال سڑکوں سے مقامی لوگ پریشان ہیں وہیں منریگا کی اجرتوں سے محرومی مزدور طبقہ کو مالی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔سابق سرپنچ و بلاک صدر کانگریس کاہرہ چوہدری فاروق شکاری کی قیادت میں ایک وفد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پانی کی کئی اسکیمیں ناکارہ ہوئیں ہیں جس کے نتیجے میں عوام کو پینے کے صاف پانی کی قلت کا سامنا رہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ بیشتر علاقوں میں کانٹے دار تار مکانات کی چھتوں و درختوں کے ساتھ باندھی ہوئیں ہیں اور لکڑی کے کھمبے بوسیدہ ہ

بانہال سڑک حادثات میں 2خواتین سمیت 5زخمی

بانہال// تحصیل اْکڑال پوگل پرستان میں پیش آئے سڑک کے دو الگ الگ حادثوں میں پانچ افراد زخمی ہوئے ہیں جنہیں ضلع ہسپتال رامبن منتقل کیا گیا ہے۔پہلا حادثہ ایک آلٹو کار کو اْکڑال پوگل پرستان روڈ پر کسلس کے مقام پیش آیا اور کار سڑک سے لڑھک کر ساٹھ فٹ نیچے گر گئی۔ اس حادثے میں دو بچوں سمیت پانچ افراد سوار سے بچوں کو چھوڑ کر تین افراد کے سر میں چوٹیں آئی ہیں۔ زخمیوں میں 32 سالہ ہارون اقبال ولد محمد اقبال ، انکی 28 سالہ اہلیہ عائشہ بیگم ساکنان گنگا رامبن اور یاسمینہ بیگم زوجہ محمد امتیاز ساکنہ باس سینا بتی زخمی ہوئے ہیں اور ان کے سروں میں زخم آئے ہیں۔ اس گاڑی میں سوار مزید تین بچے معجزاتی طور بنا چوٹ کے ہی بچ نکلے۔دوسرا حادثہ بھی پیر کی دوپہر بعد ہی اڑھائی بجے اْکڑال کے بٹرو علاقے میں اسوقت پیش آیا جب ایک نئی رابطہ سڑک کی کھدائی میں مصروف ایک جے سی بی نیچے کھائی میں لڑھک کئی جس میں مشین ک

گول کلی مستا پنچایت میں انتظامیہ کا عوامی دربار | جلد گاگرہ روڈکو بحال کیاجائے گا ، عوامی مسائل حل ہوں گے: ایس ڈی ایم گول

گول//ضلع رام بن کے سب ڈویژن گول کی پنچایت کلی مستا کے ہارہ علاقہ میں ایس ڈی ایم گول کی صدرات میں ایک عوامی دربار کا انعقاد ہوا جس میں ایس ڈی ایم گول غیاث الحق کے علاوہ ا یگزیکٹیو انجینئر پی ڈبلیو ڈی، ایگزیکٹیوانجینئرپی ایم جی ایس وائی ، ایگزیکٹیوانجینئر پی ڈی ڈی ، ، تحصیلدار گول نثاق الفاروق گنائی ، اے ای ای پی ایچ ای، نائب تحصیلدار گول جاوید اقبال شان ، بی ڈی ای چیر مین گول شکیلہ بیگم ، سرپنچ کلی مستا احد اللہ مغل کے علاوہ دوسرے محکمہ جات و معزز شہری بھی موجو دتھے ۔ اس موقعہ پر پوری پنچایت کے لوگوں نے حصہ لیا ۔ دربار کے دوران لوگوں نے جمن سے گول پی ایم جی ایس وائی کی سڑک کو جلد بحال کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ یہ مسئلہ پوری پنچایت کے لئے سب سے اہم ہے اور لوگوں نے اس سڑک کو بحال کرنے کے لئے اعلیٰ حکام کا دروازہ بھی کھٹکھٹایا ۔ مقامی لوگوں نے اس موقعہ پر الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا کہ اگر

پنج ناڑہ آتشزدگی میں خشک گھاس خاکستر

کوٹرنکہ // سب ضلع کوٹرنکہ پنچایت حلقہ پنج ناڑہ میں بجلی کی ترسیلی لائنیں گرنے سے خشک گھاس راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوگیا۔تفصیلات کے مطابق میر ولد مکھنا نامی شہری کے گھاس کی دو سوسے زائد گٹھریوں پر اچانک بجلی کی تار گر گئی جس کے نتیجہ میں خشک گھاس ے آگ کے مرگولے بلند ہونے لگے اور دیکھتے ہی دیکھتے پورا گھاس کا ڈھیر آگ کی لپیٹ میں آگیا۔اگر چہ مقامی لوگوںنے آگ بجھانے کی کوشش کی تاہم آگ کی شدت اس قدر تیز کی تھی گھاس جل کر راکھ ہوگیاتھا۔مقامی لوگوںنے اس آتشزدگی کیلئے محکمہ بجلی کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ بجلی کی غفلت شعاری کی وجہ سے کوئی بڑا حادثہ بھی پیش آسکتا ہے کیونکہ بیشتر ترسیلی لائنیں درختوں کے ساتھ آویزاں ہیں۔ لوگوں نے متاثر شخص کے ہوئے نقصان کی جلد بھر پائی کا مطالبہ کیا ہے۔      

مڈل اسکول بٹارا : 50سے زائد طالب علم اور کمرے 2

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بیشتر تعلیمی زونوں میں جہاں سرکاری اسکولوں کی عمارتیں خستہ حال ہونے کی وجہ سے ناقابل استعمال بن گئی ہیں وہیں متعدد عمارتوں پر کام عرصہ دراز سے تعطل کا شکارہے جبکہ متعلقہ محکمہ اس طرف کوئی توجہ نہیں دے رہا ہے۔ادھر تعلیمی زون ٹھاٹھری میں سال 2015 میں 18 لاکھ کی لاگت سے گورنمنٹ مڈل اسکول بٹارا کی عمارت کا کام شروع ہوا تاہم پانچ برس کا عرصہ گذر جانے کے بعد بھی تعمیر مکمل نہ ہو سکی اور متعلقہ محکمہ و انجینئرنگ ونگ نے 8.20لاکھ روپے کی بلیں مذکورہ ٹھیکیدار کو واگذار کی ہیں۔نائب سرپنچ جنگلواڑ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ عمارت کا کام نامکمل ہونے کی وجہ سے اسکول میں زیر تعلیم بچوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس معاملہ کو متعدد بار متعلقہ محکمہ کے آفیسران کی نوٹس میں لایا گیا لیکن غیر سنجیدگی کا مظاہرہ دکھایا۔مقامی شہری نیاز احمد تانترے نے کہا کہ پچاس

بغلیہارپروجیکٹ کے عارضی ملازمین 10ماہ سے تنخواہوں سے محروم

بانہال// ضلع رام بن میں چندرکوٹ کے مقام واقع دریائے چناب پر قائم نو سو میگاواٹ کی صلاحیت والے بغلیہار پارو پروجیکٹ میں پچھلے پندرہ سے بیس برسوں سے کام کرنے والے ایک سو سے زائد ملازمین کئی مہینے کی تنخواہوں سے محروم ہیں جس کی وجہ سے ان کی زندگی مشکلات کا باعث بنی ہے۔بغلیہار پارو پروجیکٹ کو مکمل کرنے کے بعد جموں وکشمیر پاور ڈیولپمنٹ کارپوریشن کے حوالے کیا گیا اور پہلے سے ہی تربیت یافتہ عارضی ملازمین بھی کے پرکاش سے JKPDC کے حوالے کیا گیا۔ یہاں تعینات عارضی ملازمین نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ اپنی زندگی کے بیش قیمتی پندرہ سال اس پروجیکٹ کو اس توقع پر دیئے تھے کہ آگے چل کر آرام ملے گا لیکن یہاں پچھلے قریب دس مہینے سے ایک سو سے زائد عارضی ملازمین جن میں ٹیکنیشن اور آئی ٹی آئی تربیت یافتہ ملازمین شامل ہیں،تنخواہوں سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بغلیہار میں تعینات عارضی ملازمین تن دہی سے اپن

سرینگر جموں شاہراہ| آج صرف درماندہ گاڑیوں کو نکالا جائیگا

بانہال // ٹریفک پولیس ہیڈکوارٹر کی طرف سے جاری ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ آج 20جنوری بروز بدھ سرینگر جموں شاہراہ پر جموں اور سرینگر سے کسی بھی گاڑی کو چلنے کی اجازت نہیں ہو گی جبکہ 22جنوری بروز جمعہ سڑک کی مرمت کے پیش نظر ٹریفک کو بند رکھا جائے گا۔ ۔بیان میں کہا گیا ہے کہ منگل کو جموں سے سرینگر کی طرف گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دی گئی، لیکن ادھمپور سے سرمولی، ناشری اورکیلا موڑ  پر بدترین ٹریفک جام رہا جبکہ مگھر کوٹ میں پسی گر آئی جسے صاف کرنے میں کئی گھنٹے لگ گئے۔ ٹریفک جام اور پسی گرنے کی وجہ سے سینکڑوں کی تعداد میں مسافر ومال بردار گاڑیاں درماندہ ہو کر رہ گئیں اور شام دیر گئے تک، مسافر اور مال بردار گاڑیاں کچھوے کی چال کی مانند سرینگر کی طرف بڑھ رہی تھیں ۔کیلا موڑ رام بن کے نزدیک بیلی برج پر یکطرفہ ٹریفک کی وجہ سے بھی ٹریفک جام ہوا ، اور دونوں طرف سے گاڑیوں کی لمبی لمبی قطاریں ل

اعلان یکطرفہ، ٹریفک دوطرفہ

بانہال // جموں سرینگر شاہراہ پر پیر دوسرے روز بھی وادی سے جموں کی طرف ٹریفک کو یکطرفہ طور پر چلنے کی اجازت دی گئی۔6روز بعد جب اتوار کو بیلی برج پر گاڑیوں کو چلنے کی اجازت دی گئی تھی تب بھی سرینگر سے ہی گاڑیاں چھوڑیں گئیں۔موسم ٹھیک رہنے کی صورت میں آج جموں سے سرینگر کی طرف گاڑیاں چلیں گی۔ کیلا موڑ بیلی برج پر یکطرفہ طور پر ایک ایک کرکے گاڑیوں کو چھوڑنے کے عمل کی وجہ سے کیلا موڑ اور اور جواہر ٹنل کے آر پار ٹریفک جام رہا۔ ٹریفک جام کی وجہ سے سرینگر سے پیر کی صبح نو بجے نکلے مسافروں کو سہ پہر تک قاضی گنڈ اور ٹنل کے درمیان ہی روکا گیا اور جام میں نرمی پانے کے بعدہی مسافر گاڑیوں کوجانے کی اجازت دی گئی۔ مسافروں نے بتایا کہ یکطرفہ ٹریفک کے اعلان کے باوجود مخالف سمت سے ٹریفک چھوڑا گیا اور انہیں5 گھنٹوں تک ٹنل پہنچنے سے پہلے ہی زگ اور اپر منڈا کے آس پاس روک دیا گیا۔ ٹریفک پولیس ذرائع نے کشمیر

ٹرک نالہ بشلڑی میں لڑھک گیا، ڈرائیور لاپتہ

 بانہال// جموں سرینگر شاہراہ پرپیر کے روز شیر بی بی اور رام بن میں پیش آئے سڑک کے دو الگ الگ حادثوں میں ایک شخص زخمی ہوا ہے جبکہ ایک نالہ بشلڑی میں لاپتہ ہوگیا ۔ پہلا حادثہ پیر کی علی الصبح تین  اورچار بجے کے درمیان بانہال کے شیر بی بی علاقے میں اسوقت پیش آیا جب وادی کشمیر سے جموں کی طرف جانے والا ٹرک شاہراہ سے لڑھک کر نالہ بشلڑی میں گر گیا۔ حادثے کی خبر ملتے ہی پولیس ، کیو ار ٹی رامسو اور بانہال والنٹیرس نے بچائو کاروائیوں کا آغاز کیا لیکن نالے میں گرے ٹرک سے ایک زخمی سمت سنگھ ساکن حصار ہریانہ کو نکالا گیا اور گاڑی ڈرائیور سمیت مزید دو افراد کی موجودگی کے بارے میں معلوم ہونے کے بعد بچاؤ کارروائیوں میں شامل ٹیموں نے ناچلانہ تک نالہ بشلڑی کا چپہ چپہ چھان مارا لیکن حادثے کے بعد مبینہ طور پر لاپتہ ہوئے افراد کا کوئی پتہ نہیں چل سکا۔ حادثے کی وجہ سے حواس باختہ زخمی نے بعد میں

بجبہاڑہ کے 2 نوجوان رام بن میں گرفتار

جموں // رام بن میں اننت ناگ کے دو نوجوانوں کو گرفتار کر کے انکے قبضے سے ہتھیار ضبط کرنیکا دعویٰ کیا گیا ہے۔ انسپکٹر جنرل پولیس جموں مکیش سنگھ نے کہا ہے کہ رام بن پولیس نے جموں پولیس کے ہمراہ جنگجوئوں کا ایک نیٹ ورک بے نقاب کر کے دو افراد کی گرفتاری عمل میں لائی۔انہوں نے کہا کہ  جنگجوئوں کء لئے کام کررہے ان دو افراد کی شناخت عمر احمد ملک ولد عبدالاحد ملک اور سہیل احمد ملک ولد محمد یاسین ملک ساکنان سمتھن بجبہاڑہ کے بطور ہوئی ہے۔سنگھ نے کہا’’ تحقیقات کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ جنگجوئوں کے یہ دو اعانت کار کشمیر میں پاکستان نشین جیش کے ایک جنگجو عاقب عرف الفا ساکن بڈگام کیلئے کام کررہے تھے، جو وادی سے وجے پور سانبہ میںبین الاقوامی سرحد تک سفر کرنے کے مقصد سے آئے، جہاں انہیں ہتھیار مل گئے، جو ڈرون کے ذریعہ گرائے گئے تھے۔انہوں نے کہا کہ پولیس نے دو اے کے 47رائفلیں، ایک پس

رام بن میں دو عسکریت پسندوں کی اسلحہ سمیت گرفتاری کا دعویٰ

جموں // رام بن پولیس نے اسپیشل آپریشن گروپ (ایس او جی) کے ساتھ مل کردوکشمیر نشین سرگرم کارکنوں کی گرفتاری کے ساتھ عسکریت پسندوں کے ایک ماڈیول کا پردہ چاک کرنے کا دعویٰ کیاہے۔جموں زون کے انسپکٹر جنرل پولیس مکیش سنگھ نے بتایا’’ضلعی پولیس رام بن نے ایس او جی جموں کے ساتھ مشترکہ طور پر وادی کشمیر کے دو کارندوں کو گرفتار کرکے عسکریت پسندوں کے ایک ماڈیول کا پردہ چاک کیا اور ان کے قبضے سے اسلحہ اور گولہ بارود کا بھاری ذخیرہ برآمد کیا "۔گرفتار عسکریت پسندوں کی شناخت عمر احمد ملک ولد عبدل احمد ملک اور سہیل احمد ملک ولد محمد یٰسین ملک ساکنان سمتھن بجبہاڑہ ضلع اننت ناگ کے طور پرہوئی ہے۔ سنگھ نے کہا کہ ’’تفتیش سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ گرفتار شدہ دو ملی ٹنٹ کارکن ایک کشمیر نشین ملی ٹنٹ اور بڈگام سے پاکستانی نشین جیش محمد ہینڈلرعاقب عرف الفا کے کہنے پر خفیہ طور پر کش

ڈوڈہ ضلع کے بیشتر علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی قلت

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کے بیشتر دیہات میں جہاں منفی درجہ حرارت کی وجہ سے نل منجمد ہو گئے ہیں جس کے نتیجے میں مقامی آبادی کوپینے کے صاف پانی کی قلت کا سامنا کرنا پڑرہا ہے وہیں متعدد علاقوں میں پانی کی سکیمیں عرصہ دراز سے ناکارہ ہوئیں ہیں اور محکمہ جل شکتی کی عدم توجہی سے سینکڑوں نفوس پر مشتمل آبادی کو مشکلات سے دوچار ہونا پڑ رہا ہے۔ ڈوڈہ، گھٹ ،گندنہ ،چرالہ ،فیگسو ،کاہرہ بھٹولی ،بھالہ ،بھدرواہ ، مرمت ،بھاگواہ و بھلیسہ ،بونجواہ سے کئی وفود نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ محکمہ جل شکتی کی عدم توجہی سے انہیں پانی کی کمی کا سامنا ہے۔کاہرہ کی پنچائت بھٹولی میں مقامی لوگوں نے محکمہ کے خلاف احتجاج بلندکرتے شدید نعرہ بازی کی۔ طارق حسین، ثمیہ تبسم و عطیش کمار نے کہا کہ پچیس گھروں پر مشتمل بھٹولی پنچائت میں پینے کے صاف پانی کی قلت سے عورتوں و بچوں کو کوسوں دور جاکر پانی لانا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پانی کی

آزادی کے بعد پہلی بار گنوڑی کاہرہ کی عوام نے بجلی کا بلب جلایا | ایل جی کی ہدائت پر انتظامیہ نے 15 دنوں میں کام مکمل کیا، عوام میں خوشی کی لہر

ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع کی تحصیل کاہرہ واقع گنوڑی پنچائت ٹانٹا میں آزادی کے بعد سے آج پہلی بار لوگوں نے بجلی کا بلب جلایا۔بیس گھروں کو پر مشتمل آبادی نے بجلی کی فراہمی کے لئے پچھلے کئی دہائیوں سے درد ٹھوکریں کھائیں لیکن معاملہ جوں کا توں رہا۔ گزشتہ برس کے آخری ماہ میں مقامی لوگوں نے لیفٹیننٹ گورنر کے گریونس سیل میں شکائت درج کی جس کے بعد ایل جی انتظامیہ ضلع انتظامیہ پر مذکورہ دیہات میں ہنگامی بنیادوں پر بجلی پہنچانے پر دباؤ بنایا جو کہ آج مکمل ہوا۔ اس دوران ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ ڈاکٹر ساگر ڈی ڈوئی فوڈے نے ضلع و سب ڈویڑنل انتظامیہ کے ہمراہ متاثرہ علاقہ کا دورہ کیا اور اپنی موجودگی میں گنوڑی میں بجلی کا بلب جلایا۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی سی نے کہا کہ ایل جی و چیف سیکرٹری کی ہدایات پر عمل درآمد کرتے ہوئے انتظامیہ نے ملحقہ دیہات میں بجلی پہنچانے کے لئے تمام تر وسائل کو بروئے کار لایا۔ انہوں نے

تازہ ترین