تازہ ترین

ڈوڈہ کے بالائی علاقوں میں موسلا دھار بارشوں کا سلسلہ جاری

 ڈوڈہ //اتوار کو دوپہر تک موسم سازگار رہنے کے بعد پھر سے ڈوڈہ ضلع کے بالائی علاقوں میں موسلا دھار بارشوں کا سلسلہ شروع ہوا جس کے نتیجے میں عوامی زندگی متاثر ہوئی۔مسلسل بارشوں سے جہاں ندی و نالوں میں پانی کی سطح میں اضافہ ہوا وہیں گندوہ، بھلیسہ، کاہرہ ،بونجواہ ،چرالہ ،ٹھاٹھری ،گندنہ ،بھدرواہ و دیگر مضافات میں فصلوں، پھلدار درختوں، سبزیوں و سینکڑوں کنال زرعی اراضی کو بھاری نقصان پہنچا ہے جس کے باعث کسان و زمیندار سخت پریشان ہیں۔اس دوران نکاسی بجلی کے ترسیلی نظام و پانی کی اسکیموں کو بھی نقصان پہنچا ہے جس کے نتیجے میں درجنوں دیہات میں پانی و بجلی نظام متاثر ہوا ہے۔ادھر سب ڈویژن گندوہ، تحصیل کاہرہ و بونجواہ میں 33 کے وی میں ہفتہ کی شام خرابی آنے کے باعث بیس گھنٹوں کے بعد بجلی کو بحال کیا گیا۔کشمیر عظمی سے بات کرتے ہوئے ڈی ڈی سی ممبر کاہرہ معراج الدین ملک نے کہا کہ حالیہ تباہ کن بارشوں

بارش سے سیلابی صورتحال ،چلی کی پنچائت گلی بھٹولی میں عوام سراپا احتجاج

ڈوڈہ // حالیہ دنوں کی تباہ کن بارشوں سے جہاں معمولات زندگی بری طرح متاثر ہوئی ہے وہیں ڈوڈہ کی سب ڈویڑن گندوہ و ٹھاٹھری کے کئی گاوں میں بارش کا پانی داخل ہونے سے عوامی مشکلات میں اضافہ ہوا ہے۔اس سلسلہ میں بلاک چلی کی پنچائت گلی بھٹولی میں مقامی لوگوں نے انتظامیہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ بارش کا پانی آبادی میں داخل ہونے سے کئی کنبے بے گھر ہونے پر مجبور ہیں۔مقامی سرپنچ سمینہ چوہدری نے اس موقع پر بولتے ہوئے کہا کہ بارشوں سے جہاں باغات و فصلوں کو نقصان پہنچا ہے وہیں وارڈ نمبر 6 میں رہائش پذیر آبادی میں بھی پانی داخل ہورہا ہے۔غلام نبی چوہدری نے اس موقع پر بولتے ہوئے کہا بارش کا پانی سیلاب کی طرح آبادی میں داخل ہو رہا ہے اور کئی کنبے متاثر ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملہ کو لے کر متعدد بار انتظامیہ کی نوٹس میں لایا لیکن کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا گیا۔سماجی کارکن چوہدری غلام رسول ن

پوگل بس سٹینڈ کے قریب سرگلی نالہ میں پڑی پائپیں سیلابی ریلے کا باعث بنیں

بانہال//ضلع رام بن میں تحصیل اکڑال پوگل پرستان میں بس سٹینڈ پوگل کے پاس محکمہ جل شکتی کی طرف سے کئی سال سے لاوارث چھوڑی گئی پانی کی پائپیں عوام کیلئے مصائب کا باعث بنی ہوئی ہیں اور گزشتہ بارشوں کے دوران لوہے کی یہ پائپیں سیلابی ریلے کو روک کر لوگوں کی اراضی اور رہائشی مکانوں کیلئے خطرے کا باعث بن گئیں۔مقامی لوگوں نے فون پر کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ محکمہ جل شکتی سب ڈویژن بانہال کی یہ پائپیں مارچ 2020میں لگے لاک ڈاﺅن سے بہت پہلے سے پوگل بس سٹینڈ کے اسی نالے میں رکھی گئی ہیں اور ان میں سے بہت ساری پائیپوں کے چوری اور خرد برد ہونے کا بھی اندیشہ ہے۔انہوں نے کہا حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ان پائپوں کو وہاں سے ہٹائیں اور پوگل علاقے میں ضرورت کی جگہوں پر انہیں استعمال کریں ۔پوگل کے مقامی شہری عبدالعزیز بٹ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ محکمہ جل شکتی کی طرف سے کئی سال پہلے بھاری تعداد میں لوہے کی پ

گول میں پی ایم جی ایس وائی کی نئی تکنیک

گول//جہاں اک طرف سے مرکزی سرکار ہر گاﺅں کو سڑک رابطہ کے ساتھ جوڑنے کے لئے اربوں روپے خرچ کر رہی ہے وہیں زمینی سطح پر محکمہ کی نا قص کار کردگی سے عوام کافی پریشان ہے ۔ محکمہ پہلے سالہا سال سڑکوں کو صرف کٹائی کر رکھتی ہے جس وجہ سے زمینداروں کو کافی نقصانات سے دوچار ہونا پڑ رہا ہے وہیں ان سڑکوں کو آخری مرحلے تک لے جانے کے لئے محکمہ پی ایم جی ایس وائی ناقص تکنیک کا استعمال کر رہا ہے جس وجہ سے لوگوں میں کافی غم و غصہ پایا جا رہا ہے ۔ سنگلدان ٹھٹھارکہ پی ایم جی ایس وائی روڈ پر محکمہ پی ایم جی ایس وائی پر لوگ اُس وقت برہم ہوئے جب محکمہ نے نکاسی آب کے لئے بیت الخلاءمیں استعمال ہونے والی پلاسٹک کی پائپوں کا استعمال کیا ہے اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ محکمہ خزانہ عامرہ کو لوٹنے میں کس طرح سے مصروف ہے ۔ اگر چہ سرکار اور گورنر انتظامیہ یہ دعویٰ کر رہی ہےں کہ ہر گاﺅں کو سڑک رابطہ کے ساتھ جوڑا جائے گا

گول میں سب ڈویژن میں سرکاری ایمبولینس میں تیل کی شدید قلت

گول//”مرض بڑھتا گیا جوں جوں دوا کی “۔کیا تیل مہنگا ہونے کی وجہ سے سرکاری ایمبو لینس میں تیل کی شدید قلت پائی جا رہا ہے یا اس کے پیچھے کوئی دوسرا کار فرما ہو سکتا ہے ۔ گول سب ڈویژن میں ہمیشہ اس طرح کی شکایات آ رہی ہیں کہ محکمہ سے جب بھی بات کی جاتی ہے تو وہاں سے تیل کی کمی کا بہانہ بنایا جاتا ہے وہیں دوسری طرف108نمبر پر کام کرنا فضول ہے کیونکہ اس پر کوئی کال اُٹھاتا ہی نہیں ہے ۔ ان باتوں کا اظہار سنگلدان میں زچہ گی میں مبتلا خواتین کے ساتھ آئے ہوئے رشتہ داروں نے کیا ۔ شائستہ بیگم زوجہ محمد آصف ساکنہ ٹھٹھارکہ اور ارشاد حسین کی بیوی جو کہ داڑم سے آئے ہوئے تھے نے کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے یہ واقعات سنگلدان پی ایچ سی میں لوگوں کو ہمیشہ آتے ہیں بالخصوص زچہ گی میں مبتلا خواتین کے ساتھ محکمہ ہمیشہ ناروا سلوک کر رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کا مقام ہے کہ ی

گول میں سب ڈویژن میں سرکاری ایمبولینس میں تیل کی شدید قلت

گول//”مرض بڑھتا گیا جوں جوں دوا کی “۔کیا تیل مہنگا ہونے کی وجہ سے سرکاری ایمبو لینس میں تیل کی شدید قلت پائی جا رہا ہے یا اس کے پیچھے کوئی دوسرا کار فرما ہو سکتا ہے ۔ گول سب ڈویژن میں ہمیشہ اس طرح کی شکایات آ رہی ہیں کہ محکمہ سے جب بھی بات کی جاتی ہے تو وہاں سے تیل کی کمی کا بہانہ بنایا جاتا ہے وہیں دوسری طرف108نمبر پر کام کرنا فضول ہے کیونکہ اس پر کوئی کال اُٹھاتا ہی نہیں ہے ۔ ان باتوں کا اظہار سنگلدان میں زچہ گی میں مبتلا خواتین کے ساتھ آئے ہوئے رشتہ داروں نے کیا ۔ شائستہ بیگم زوجہ محمد آصف ساکنہ ٹھٹھارکہ اور ارشاد حسین کی بیوی جو کہ داڑم سے آئے ہوئے تھے نے کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے یہ واقعات سنگلدان پی ایچ سی میں لوگوں کو ہمیشہ آتے ہیں بالخصوص زچہ گی میں مبتلا خواتین کے ساتھ محکمہ ہمیشہ ناروا سلوک کر رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کا مقام ہے کہ ی

گول رام بن سڑک رابطہ منقطع

گول//جموں ،سرینگر یا رام بن سے آنے والے تمام مسافر اُس وقت شدید پریشان ہوئے اور انہوں نے انتظامیہ پر غم و غصے کا اظہار کیا جب وہ کونسی نالہ کے پاس پہنچے تو وہاں دیکھا کہ پل پر تعمیری کام لگا ہوا تھا اور گول صرف مقام یا خود ڈی سی آفس رام بن میترا کا سڑک رابطہ اس وجہ سے منقطع ہو گیا ۔ گول کو رام بن صدر مقام ، جموں اور سرینگر کے ساتھ جوڑنے والا میترا جھولا پل جو کافی عرصہ سے بیکار پڑا ہوا ہے یہاں پر صرف چھوٹی گاڑیوںکی آمد و رفت کو ہی بحال رکھا گیا ہے اور کبھار کبھار ان گاڑیوں کو بھی اس جھولا پل سے آنے جانے کی اجازت نہیں دی جاتی ہے ۔ اس کے علاوہ جموں سے گول آنے والی گاڑی کرول پل کے مقام پر باہر سے ہی ایک راستہ براہ میترا گول آتا ہے جہاں سے اب یہ لوگ آتے تھے لیکن آج اس راستہ کو بھی بند کر کے لوگوں کو مزید مشکلات میں ڈالا گیا ہے ۔ کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے جموں سے صبح آنے والے مسافرو

۔72گھنٹوں کے اندر چوری کا معاملہ حل

کشتواڑ//پولیس نے 72 گھنٹوں کے اندر چوری کا معاملہ حل کرتے ہوئے دولاکھ روپے سے زائدمالیت کاسامان برآمد کیا ۔ خورشید احمد ولد عبدلقیوم ساکنہ ٹٹانی سروڈ کی جانب سے پولیس پوسٹ درابشالہ میں تحریری شکایت درج کی گئی تھی جس میں انھوں نے بتایا کہ انکا سامان جسکی کل قیمت دو لاکھ تیس ہزار کے قریب ہے، چند نامعلوم افراد نے چوری کیا۔جسکے بعد ڈی ایس پی ہیڈکوارٹر دیوندر سنگھ نے انسپکٹر نصیر احمد کی زیر نگرانی ٹیم تشکیل دی جسکے بعد پولیس نے حرکت میں آتے ہوئے 72 گھنٹوں کے اندر ہی اس کام میں ملوث شخص کو گرفتار کیا جسکی شناخت عبدا لطیف ولد فلی گوجرساکنہ بروتی سروڈ کے طور ہوئی ۔ اس سلسلے میں پولیس تھانہ کشتواڑ میں مختلف دفعات کے تحت کیس درج کرلیا ہے اور مزید تحقیقات شروع کردی ہے۔  

بارشوں سے فصلوں اور مکانات کو ہوا نقصان

ریاسی//گزشتہ دنوں بارشوں کے باعث فصلوں اور رہاشی مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔اسی حوالے سے نائب سرپنچ چانہ بی پرتھی سنگ نے پنچایت کا دورہ کیا جہاں پر انہوں نے نقصان کا جائزہ لیا۔اس کے بعد نائب سرپنچ نے کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کی پنچایت میں کافی نقصان پہنچا ہے۔انہوں نے کہا کہ حالیہ بارشوں سے فصلیں گر کر تباہ ہوگئیں ہیں اور کافی رہاشی مکانات کو بھی نقصان پہنچا ہے۔پرتھی سنگ نے کہا کہ انہیں لوگوں نے چنا ہے اور ان کی ذمہ واری بنتی ہے کہ وہ لوگوں کے مشکلات کو سنے۔انہوں نے کہا کہ ان کی پنچایت میں کافی نقصان پہنچا ہے۔انہوں نے انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ علاقہ میں ایک ٹیم روانہ کی جائے اور نقصان کا تخمینہ لگا کر لوگوں کو معوضہ فرہم کیا جائے۔

رام بن میں کووڈ ایس او پیز ، ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی پر گاڑیاں ضبط

رام بن //موٹر وہیکل ڈیپارٹمنٹ (ایم وی ڈی) رام بن نے کووڈ مناسب رویے ، موٹر وہیکل ایکٹ ، ٹریفک رولز کی خلاف ورزی کی خلاف ورزی پر گاڑیاں ضبط کر لیں۔اسسٹنٹ ریجنل ٹرانسپورٹ آفیسر (اے آر ٹی او) کی نگرانی میں ایک ٹیم نے ایم وی ایکٹ ، ٹریفک رولز اور ڈسٹرکٹ ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کی مختلف دفعات کی خلاف ورزی پر بٹوت رام بن روٹ پر تین منی بسیں اور ایک آٹو قبضے میں لے لی۔اے آر ٹی او کے مطابق ، خصوصی مہم کے تحت گزشتہ ایک ماہ کے دوران مختلف خلاف ورزیوں پر 45 گاڑیاں ضبط کی گئی ہیں اور ان سے ڈھائی لاکھ روپے جرمانہ وصول کیا گیا ہے ، جبکہ دو ڈرائیوروں کو ڈرائیونگ لائسنس کی منسوخی کے لیے نوٹس جاری کیے گئے ہیں۔حال ہی میں ، ایم وی ڈی کی ایک خصوصی مہم کے تحت ، ضلع میں تجارتی گاڑیوں میں سپیڈ لمیٹنگ ڈیوائسز (SLDs) لگائی گئی ہیں اور کچھ گاڑیوں کا SLDs سے چھیڑ چھاڑ کرنے پر چالان کیا گیا۔  

مزید خبریں

ڈوڈہ میں کورونا وائرس کے 14 نئے مثبت معاملات  ۔7 مریض صحتیاب ،206066افراد نے ٹیکے لگوائے  اشتیاق ملک  ڈوڈہ //ڈوڈہ ضلع سے کورونا وائرس کے چودہ نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیں اور 7 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔اطلاعات کے مطابق اتوار کے روز ڈوڈہ، بھدرواہ، ٹھاٹھری،گندوہ و عسر میں ہوئی کوو¿ڈ جانچ کے دوران 14 افراد کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے جنہیں ہوم قرنطینہ میں رکھا گیا ہے اور سات مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔ اسطرح سے ضلع میں فعال کیسوں کی تعداد 102 و شفایاب ہوئے مریضوں کی مجموعی تعداد 7038 پہنچ گئی ہے جبکہ کورونا وائرس سے ضلع میں اب تک 125 افراد فوت ہوئے ہیں اور 206066افراد نے ٹیکے لگوائے ہیں۔        محکمہ تعلیم کشتواڑ نے ڈی ای پی او کو الوداع کہا کشتواڑ //محکمہ تعلیم کشتواڑ نے چیف ایجوکیشن آفیسر (سی ای او) کے آفس کمپلیکس میں ڈسٹر