تازہ ترین

کشتواڑ فلیش فلڈ: لاپتہ افراد کی بازیابی کے لئے آپریشن دوسرے روز بھی جاری

جموں// جموں و کشمیر کے ضلع کشتواڑ کے ہونزر دچھن علاقے میں گذشتہ روز فلیش فلڈ کا واقعہ پیش آنے کے بعد لاپتہ ہونے والے 19 افراد کی تلاش کے لئے جمعرات کی صبح آپریشن بحال ہوا۔ ضلع کشتواڑ کے ہونزر دچھن علاقے میں بدھ کو بادل پھٹنے کے واقعے کے بعد آنے والے سیلابی ریلوں کے نیتجے میں سات افراد جاں بحق، ڈیڑھ درجن زخمی جبکہ 19 دیگر لاپتہ ہوئے تھے۔ دریں اثنا جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کا کہنا ہے کہ جائے واردات پر جمعرات کو بچاو¿ اور ریلیف آپریشن کے لئے این ڈی آر ایف اور ایس ڈی آر ایف کی دو مشترکہ ٹیمیں پہنچ رہی ہیں۔  

سرینگرجموں شاہراہ پرآج دوطرفہ ٹریفک ہوگا

بانہال // بدھ کے روز جموں سرینگر  شاہراہ ناشری ٹنل اور بانہال کے درمیان سڑک کی ہفتہ وار مرمت کے نتیجے میں ٹریفک کیلئے بند رہی تاہم  وقفے وقفے کی بارشوں کے باوجود شاہراہ بدھوار شام تک مجموعی طور قابل آمدورفت تھی اور موسم اور سڑک کی بہتر صورتحال کے پیش نظر آج یعنی جمعرات کو شاہراہ پر مسافر گاڑیوں کو دونوں طرف سے چلنے کی اجازت ہوگی۔   

دریائے چناب کے اوپری علاقوں میں بادل پھٹنے کے بعد کشتواڑ، رام بن اور ریاسی میں الرٹ جاری | دریائے چناب میں پانی کی بڑھتی سطح پر مسلسل نظر، انتظامیہ متحرک: ڈپٹی کمشنر رام بن

بانہال//بدھ کی علی الصبح صبح ضلع کشتواڑ کے ہنزر دچھن اور منگل کی رات  پاڈر اور ڈول کیرو کے علاقوں میں بادل پھٹنے کی وجہ سے دریائے چناب میں پانی کی سطح بڑھ گئی اور حکام نے کشتواڑ، رام بن اور ریاسی میں لوگوں کو دریائے چناب اور دوسرے ندی نالوں کے نزدیک جانے سے منع کیا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ چناب کے اوپری علاقوں میں کئی مقامات پر بادل پھٹنے اور بارشوں کے نتیجے میں دریائے چناب میں پانی کی سطح بڑھ رہی ہے اور ان ہی حالات کے پیش نظر سلال پن بجلی پروجیکٹ ریاسی میں باندھ کے گیٹ بدھ کی دوپہر بعد کھول دیئے گئے ہیں اور سلال باندھ کے آگے اور پیچھے دریائے چناب کے کنارے دو درجن سے زائد علاقوں میں رہنے والے لوگوں کو چوکسی برتنے کیلئے کہا گیا ہے۔ ضلع رام بن میں بھی ضلع انتظامیہ نے دریائے چناب میں پانی کی بڑھتی سطح کے پیش نظر لوگوں کو دریائے چناب اور دیگر ندی نالوں کے نزدیک نہ جانے کا مشورہ دیا ہے

میدانی جموں میں موسلادھار بارشیںجاری | سانبہ میں تین کم عمر لڑکوں کو ڈوبنے سے بچایاگیا

 جموں// جموں خطے کے بیشتر علاقوں میں پچھلے کچھ دنوں سے موسلا دھار بارش ہو رہی ہے۔ جولائی کے آخر تک مزید بارشوں کی پیش گوئی کے ساتھ ، حکام پہلے ہی آبی ذخائر اور سلائڈ زدہ علاقوں کے ساتھ رہنے والے لوگوں کو چوکس رہنے کے لئے کہہ چکے ہیں۔اس دوران جموں و کشمیر کے سانبہ ضلع میں بسنترندی کے قریب طوفانی سیلاب میں پھنس جانے کے بعد ریاستی ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (ایس ڈی آر ایف) کے اہلکاروں نے بدھ کے روز تین کم سن بچوں کو بچالیا۔ عہدیدار نے بتایا کہ ایس ڈی آر ایف کے اجزاء کو یہ اطلاع ملنے کے بعد حرکت میں آگئی کہ گاؤں منانو نود کے تین لڑکے ، جن کی عمریں سات سے 13 سال کے درمیان ہیں ، آج صبح سویرے ندی بسنتر سے ملحقہ سیلاب میں پھنس گئے۔انہوں نے بتایا کہ ایک گھنٹے طویل ریسکیو آپریشن کے دوران لڑکوں کو سلامتی کے لئے نکالا گیا ہے۔محکمہ موسمیات کے ترجمان نے بتایا کہ 30 جولائی تک جموں و کشمیر میں

ریاسی میں طوفانی بارشوں کا سلسلہ جاری،ضلع میں سیلابی صورتحال | پسیاں گرنے کی وجہ سے کئی سڑکیں بند،رہاشی مکانات اورفصلوں کوشدید نقصان

ریاسی//ضلع ریاسی کے بالائی علاقوں میں گزشتہ شام سے ہی ہلکی ہلکی بارشوں کا سلسلہ شروع ہوا جب کی بدھوار سہ پہر بعد شدید بارشوں کا سلسلہ جاری ہوا جس کی وجہ سے لوگ خوفزدہ ہوگئے۔بارشوں کی وجہ سے تمام سڑکیں بند ہوگئیں۔ واضح رہے کہ مہور سے جموں،مہور سے راجوری،مہور سے گلابگڑھ کے علاوہ دیگر اندرونی سڑکیں تغیانی نالوں اور پسیاں گرنے کی وجہ سے بند ہوگئیں۔طوفانی بارشوں کی وجہ سے کئی ایک رہاشی مکانات کو نقصان پہنچا ہے اور پانی لوگوں کے گھروں میں گھس گیا جس کی وجہ سے لوگوں کا کافی نقصان پہنچا۔تحصیل چسانہ کے چانہ کے لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ وہاں پر کافی رہائشی مکانات کو نقصان پہنچا ہے اور فصلیں بھی تباہ ہوگئی۔اسی طرح سے ساڑھ پنچایت کے وارڈ نمبر 8 میں فولن نامی بیوہ کے مکان کے گرنے کی اطلاع ہے جس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔اسی طرح سے مہور ہیڈکوارٹر کے اپر مارکیٹ کے لوگ اس وقت سڑک پر اتر آئے

گول سب ڈویژن میں شدید بارشیں | اسی فیصد مکی کی فصل کو ہوا نقصان ، رابطہ سڑکیں بھی بنی کھنڈرات

گول//گزشتہ شب سے لگا تار شدید بارشوں کی وجہ سے جہاں لوگ گھروں میں ہی محصور بن کر رہ گئے وہیں دوسری جانب مکی کی کھڑی فصل کو اسی فیصد نقصان ہوا ہے وہیں پکڈنڈیاں ، سڑکیں کھنڈرات بن گئی ہیں جس وجہ سے لوگوں کو چلنے میں بھی کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا ۔ سڑکیں جن کا پہلے سے ہی آبِ نکاس کا کوئی انتظام نہیں تھا اور آج بارشوں کی وجہ سے مزید ان کی حالت ابتر ہو گئی ہے ۔ گول سب ڈویژن کے سنگلدان ، سمڑ ، دھرم کنڈ ، اشمار ، فمروٹ ، اندھ ، چھچھواہ، مہا کنڈ ٹھٹھارکہ دلواہ ، ڈھیڈہ داچھن، گول ، پرتمولہ ، موئلہ ، سلبلہ ، ہارہ ، داڑم ، کلی مستا ، گگر سولہ ، گاگرہ ، بھیمداسہ ، گوئی ، آستان مرگ و دیگر علاقوں میں گزشتہ شب سے شدید بارشوں کی وجہ سے کھڑی مکی کی فصل کو کافی نقصان پہنچا ہے وہیں لوگ گھروں میں ہی محصور بن کر رہ گئے اور کئی علاقوں کے لوگ ندی نالوں پر پل نہ ہونے کی وجہ سے گھروں سے باہر نہیں نکلے

مزید خبریں

کشتواڑ ہلاکتوں پررانا مغموم  جموں// نیشنل کانفرنس کے صوبائی صدر دیویندر سنگھ رانا نے کشتواڑ ضلع کے دچھن علاقے میں بادل پھٹنے سے ہونے والی المناک اموات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا اور سوگوار خاندان سے تعزیت کا اظہار کیا۔ ایک بیان میں رانا نے اطلاع دیئے گئے لاپتہ افراد کی تلاش کے لئے امدادی اقدامات میں مزید تیزی لانے کی کوشش کی اور انتظامیہ پر زور دیا کہ وہ متاثرہ افراد کو عبوری امداد فراہم کرے۔ انہوں نے قدرتی آفات میں زخمی ہونے والے افراد کا خصوصی علاج بھی طلب کیا۔ اس خبر کے آنے کے فوراً بعد صوبائی صدر نے سابق وزیر اور پارٹی کے سینئر ساتھی مسٹر سجاد کچلو سے بات کی۔ رانا اور کچلو دونوں نے مرحومین کی روح کو سلامتی کی دعا کی اور لاپتہ افراد کی محفوظ تلاش کے لئے دعا بھی کی۔ انہوں نے بادل پھٹنے کے واقعے میں اپنے عزیزوں ، مویشیوں اور رہائش گاہوں کو کھونے والے کنبہ کے ساتھ اظہار ی

تازہ ترین