تازہ ترین

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

ساس بہو کا رشتہ : محبت پانے کیلئے محبت کا روّیہ اپنانے کی ضرورت سوال:۱-بہو اور ساس کے درمیان کون سا رشتہ ہے۔ اگر بہو ساس کی خدمت نہ کرے تو کیا وہ گنہگار ہوگی ۔ شریعت کی رو سے تفصیلی رہنمائی فرمائیں۔ بہو اور سسر میں کون سا رشتہ ہے۔ اگر بہو سسر کی خدمت نہ کرے تو کیا گنہگار ہوگی او راگر ساس اور سسر بہوکوہروقت کام کے لئے ڈانٹیں او ربُرا بھلا کہیں کیا وہ گناہ گار ہوں گے۔ بہو پر ساس سسر کی خدمت فرض ہے یا نہیں ؟ ساس بہو کو طعنے دے ،بُرابھلا کہے۔ لوگوں میں اسے ذلیل کرے جبکہ اپنی بیٹی ، جب وہ سسرال آئے ،کے ساتھ اچھا سلوک کرے  اور جب بہو اپنے باپ کے گھرجائے تو اس کو اچھی طرح رخصت نہ دے اور نہ ہی اس سے خندہ پیشانی سے بات کرے۔ قرآن وحدیث کی رو سے اس دہرے معیار کے لئے ایسی عورت کیا واقعی اللہ کے حضورجوابدہ ہے ۔ جواب:۲-اسلام میں کنبے کا تصور کیا ہے ۔ قرآن وسنت کی روشن

قتلِ ناحق گناہِ عظیم

ایک مسلمان کا جان و مال، عزت وآبرو دوسرے مسلمان پر حرام ہے،کسی کا مال لینا، کسی کی عزت سے کھیلنا گناہ کبیرہ ہے اور گناہ کبیرہ میں بھی سخت ترین گناہ، سخت ترین فسق وفجور، بہت بڑا ظلم وستم لیکن ان سب سے بڑا گناہ ظلم ہے کہ مسلمان کو قتل کر دیا جائے یا قتل کرادیا جائے، یا اس کی جان لے لی جائے۔حدیث میں ہے:’’دنیا کا ختم ہوجانا اللہ کے نزدیک ایک مسلمان کے قتل سے معمولی چیز ہے(ترمذی شریف)مسلمانوں کے خون کی اس قدر قیمت ہے کہ دنیا کی تباہی وبربادی ایک مسلمان کے خون کے مقابلے میں کوئی حیثیت نہیں رکھتی، اللہ کو دنیا کا برباد کر دیا جانا منظور ہے مگر مسلمان کا قتل کر دیا جانا منظور نہیں۔رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ارشاد فرماتے ہیں:’’اگر بالفرض سارے آسمان وزمین والے کسی مومن کے قتل میں شریک ہوجائیں تو اللہ تعالی سب کو جہنم میں جھونک دے گا‘‘۔(رواہ ترمذی) ارشا