کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

لُقہ اور اُسکے احکام کوئی چیز اُٹھائی جائے تو اُٹھانے والے کی کیا ذمہ داریاں ہیں؟ سوال:اگر کوئی آدمی کچھ رقم یا کوئی چیز اٹھائے اس کے متعلق شریعت کا کیا حکم ہے۔راقم نے پڑھا ہے کہ اگر اس کا مالک نہ ملے تو اس کو اصلی مالک کے نام صدقہ دے۔اگر اس کا مالک معلوم نہ ہو تو یہ بھی ممکن ہے کہ اس کا مالک غیر مسلم بھی ہو سکتا ہے ۔کیا ایسے مالک کو صدقہ کا کچھ فایدہ ہوگا۔ اگر نہیں تو ایسی رقم یا چیز کا مصرف کیا ہے؟ ابو عقیل ۔دار پورہ ،زینہ گیر سوپور ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جواب:جب کوئی شخص کسی جگہ سے کوئی گِری پڑی چیز اُٹھائے یا کوئی رقم پالے تو شریعت میں اس چیز کو لُقطہ کہتے ہیں۔اس لُقطہ کا حکم یہ ہے کہ اُٹھاتے وقت مالک تک پہنچانے کی نیت سے اٹھائے ۔اگر اُس نے خوش ہوکر اپنے استعمال کی نیت سے اُسے اٹھالیا تو اس نیت کی وجہ سے وہ گنہگار ہوگا،اور پھر وہ شخص اس چیز کا ضامن بن جائے گا ،پھر ضمان کے

بیت المقدس تاریخ کے آئینے میں!

گذشتہ دنوں ماہ رمضان المبارک میں غزہ اور فلسطین میں اسرائیل کے انسانیت سوز مظالم کے بعد قبلۂ اول بیت المقدس اور فلسطین ایک مرتبہ پھر دنیا بھر کی نظروں کے سامنے آگئے۔ بیت المقدس کی آزادی کے خواب سجائے ہوئے اہل فلسطین کی داستان تقریباً ایک صدی پر پھیلی ہوئی ہے۔ جس سے آج ہماری نئی نسل بالکل ناواقف ہے۔ اہل فلسطین کی کہانی روشنائی سے نہیں بلکہ انکے خون سے لکھی گئی ہے۔ فلسطین کے ہر چپہ چپہ پر قربانیوں کی ایسی لازوال داستانیں نقش ہیں جس سے وہاں کے باشندوں کی جرأت، ہمت، غیرت اور استقامت کا پتہ چلتا ہے۔ فلسطین کے معصوم بچے، مائیں، بہنیں، جوان اور بوڑھے سب ہی جس ظلم کی چکی میں پس رہے ہیں اس کے بارے میں اور دنیا بھر کے مسلمانوں کو بزبان حال یہی کہ سکتے ہیں: تم شہرِ اماں کے رہنے والے! درد ہمارا کیا جانو! ساحل کی ہوا تم موج صبا طوفان کا دھارا کیا جانو! اس میں کوئی شک نہیں کہ فلسطین

تازہ ترین