۔100کروڑ شہریوں کی ٹیکہ کاری

بھارت نے 21 اکتوبر 2021 کو 100 کروڑ شہریوں کی ٹیکہ کاری کا ہدف مکمل کر لیا، جب کہ اس ٹیکہ کاری مہم کو شروع ہوئے ابھی صرف 9 مہینے ہی ہوئے ہیں۔ کووڈ۔19 سے نمٹنے کا یہ ایک شاندار سفر رہا ہے، خاص کر ایسے وقت میں جب ہمارے ذہن میں سال 2020 کے ابتدائی دنوں کی یادیں ابھی بھی تازہ ہیں۔ انسانوں کو 100 سال کے بعد اس قسم کے وبائی مرض کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا اور کسی کو اس وائرس کے بارے میں زیادہ جانکاری نہیں تھی۔ ہمیں یاد ہے کہ کیسے غیر متوقع طور پر ہمیں اچانک ایسی حالت کا سامنا کرنا پڑا، کیوں کہ ایک نامعلوم اور نظر نہ آنے والا دشمن تیزی سے اپنا حلیہ بدلتا جا رہا تھا۔ دنیا کی سب سے بڑی ٹیکہ کاری مہم کی بدولت یہ سفر پریشانی سے یقین دہانی میں تبدیل ہو چکا ہے اور ہمارا ملک مضبوط بن کر ابھرا ہے۔یہ واقعی میں اجتماعی کوشش تھی جس میں معاشرہ کے کئی حصے شامل رہے۔ اتنے بڑے پیمانے پر ہونے والی اس کوشش ک

چناب ویلی ۔ بنیادی سہولیات کا فقدان

کسی بھی علاقہ کی ترقی کے لئے وہاں تمام تر بنیادی سہولیات کا ہونا لازم ہے۔لیکن اگر ہم چناب ویلی کے حوالے سے بات کریں تو اس ڈیجیٹل دور میں بھی یہاں لوگ بنیادی سہولیات محروم ہیں۔ جہاں ایک طرف کروانا وائرس(کویڈ۔19) کے دور نے دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ،وہیں دوسری جانب جناب ویلی کے ضلع ڈوڈہ اور کشتواڑ کے پہاڑی علاقہ بجلی، پانی اور سڑک جیسی بنیادی سہولیات سے محروم رہےہیں۔ آج کے دور میں انسان کی بنیادی سہولیات کی عدم دستیابی اور نایابی سے انسان کا گذر بسر کرنا لامحال ہے جبکہ بنیادی ضروریات زندگی کے فقدان سےکسی بھی انسان کے لئے جینے کا احساس ادھورا ہوجاتا ہے۔ظاہر ہے کہ ہوا کے بعد پانی انسانی زندگی کے لئے انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے ،اگر ہم یہاںمحض پانی کے حوالے سے ہی بات کریں تو اس میں کوئی شک نہیں کہ یہ زندگی کا ایک اہم سرمایہ ہے۔یہ انسان کی بنیادی سہولیات میں سے اولین سرمایہ ہے۔جہاں ایک

تازہ ترین