تازہ ترین

لبنان میں سیاسی کشمکش جاری

حالیہ عرصہ میں جب کہ ساری دنیا کی توجہ افغانستان میں ہونے والی تبدیلیوں پر مرکوز ہے، اسی درمیان ایک اور عرب ملک میں جو انسانی المیہ روز بروز بد سے بدتر کی شکل اختیار کرتا چلا جارہا ہے اس کی جانب بہت کم افراد کی نظر ہے یا فکر ہے۔ یہاں ہم بات کررہے ہیں لبنان کی جو کہ گزشتہ دو سال کے عرصے میں ایک بحران کے بعد دوسرے  بحران کا شکار ہوتا چلا گیا ہے۔ لبنان کی بدتر ہوتی صورت حال کوئی نئی بات نہیں ہے، گزشتہ کئی دہائیوں سے وہاں کی فرقہ پرست سیاسی تنظیموں اور بدعنوان سیاست دانوں اور بینکروں نے ملک کو تباہی کے دہانے پر پہنچادیا ہے۔ وہاں جاری معاشی بحران کرونا وبا کی وجہ سے اور زیادہ سنگین ہوگیا تھا اور اس میں آخری کیل گزشتہ سال اگست میں دارالحکومت بیروت میں ہونے والا بم دھماکہ ثابت ہوئی اور جسے ماہرین تاریخ نے اسے کسی بھی سب سے بڑے غیر نیوکلیائی دھماکے سے تعبیر کیا ہے۔  اس دھماک

مسلمانوں کی سیاسی شناختی گمشدگی ۔ ذمہ دار کون؟

ہمارے ملک ہندوستان کوآزاد ہوئے 75 سال توہو گئے لیکن سوال یہ ہے کہ کیا ہر ہندوستانی کو اس کا حق مل گیا ، ملک کا ہر شخص اپنے پیروں پر کھڑا ہوگیا، وزارت، ملازمت، سیاست میں سب کو حصہ مل گیااور گاندھی جی کا خواب پورا ہو گیا؟ اگر ہوا ہوتا تو نظر آتا اور نہیں ہوا تو آخر کیوں؟ یوں تو ملک کی سبھی سیاسی پارٹیاں کہتی ہیں کہ ہمیں گاندھی جی کے خوابوں کا ہندوستان بنانا ہے مگر کوئی پارٹی یہ نہیں بتاتی کہ گاندھی جی کا خواب کیا تھا۔ شائد اس لئے کہ کہیں عوام باخبر نہ ہوجائے ۔ہم بتاتے ہیںکہ گاندھی جی کا خواب یہ تھا کہ ملک میں امن و چین رہے، آبادی کے تناسب سے سماج کے ہر فرقےکو ہر شعبے میں نمائندگی ملے تاکہ ملک میں کبھی فرقہ پرستی کا ماحول پیدا نہ ہوسکے اوربرسراقتدار و حزب مخالف دونوں کا نظریہ تنقید برائے تنقید نہیں بلکہ تنقید برائے تعمیرو اصلاح ہو ، دونوں ملک کے مفاد میں ایک دوسرے سے مشورہ کریں ، حزب

اسلام کی ترویج واشاعت کا ستارہ | مقبول احمدشاہ کشمیر

حضرت مقبول احمدشاہ قادری کشمیری المعرو ف ’’شاہ کشمیری ‘‘رحمۃ اللہ علیہ کا نام ہانگل شریف کرناٹک میںکسی تعارف کی محتاج نہیں ہے،ہرچھوٹا بڑا،ادنیٰ و اعلیٰ فرد حضرت کشمیری علیہ الرحمہ کےنورانی چہرہ دیکھتے ہی پکار اُٹھتے اور کہتے تھے کہ یہ عارف باللہ ہیں۔ آپ نے دین کے حصول اور پھر دین کے فروغ کے لئے اپنا گھر ، اپنا قبیلہ ،اپنی برادری اوراپنا وطن تک چھوڑ دیا تھا۔ اپنی تمام عمر مجاہدانہ گزاری اوردین کے لئے جہادکیا۔ آپ ہمالیہ کی گود میں کشمیر کی گھاٹی کے اُتری علاقےکے ایک چھوٹے سے گائوں،جس کانام ڈنگی دچھ ہے۔جس کے چاروں طرف سرسبز وادیاں ،سیب سے لدے ہوئے باغوں کی بھرمار، صاف شفاف ٹھنڈے میٹھے پانی کی ندی جو برفیلے پہاڑوں سے نکل کر گاؤں گاؤںاور کھیت کھلیانوں کو سیراب کرتی ہے۔ اسی چھوٹے سے خوبصورت گاؤں میں آپ کی پیدائش ہوئی تھی۔پیدائش کے بعد ہی اُن کی والدہ نے اس بچہ م

گلوبل وارمِنگ اور کولِنگ۔ دونوں بڑے خطرات

ماحولیاتی سائنس اور اَرضیات کے شعبوں سے تعلق رکھنے والے طلبہ اس کرّۂ اَرض کو درپیش سنگین مسائل سے بخوبی آگہی رکھتے ہیں کہ فی زمانہ ہماری زمین، اس پر آباد تمام جانداروں کو قدرتی ماحول کے سنگین مسائل سے کیا کیا خدشات اور خطرات کا سامنا ہے۔ حالیہ گروپ سیون کی کانفرنس میں ماہرین اور سائنس دانوں نے کانفرنس کے شرکاء میں کھلا خط تقسیم کیا جس میں کرّۂ اَرض کو درپیش ماحولیاتی مسائل کا ذکر کیا گیا تھا، ویسے بھی گروپ سیون کی حالیہ کانفرنس کے ایجنڈے میں ماحولیاتی مسائل اور موسمی تغیّرات سرفہرست تھے۔  ماہرین نے کھلے خط میں جن سنگین خدشات اور خطرات کا ذکرکیا ،ان میں نمایاں گلوبل وارمنگ، موسمی تبدیلیاں، زمینی، فضائی اور آبی آلودگی، تیزابی بارش، شہروں میں آبادی کا بڑھتا ہوا دبائو، اوزون کی پرت میں ہونے والے شگاف، کوڑا کرکٹ ٹھکانے لگانے کا مسئلہ، جنگلات کی کٹائی کے منفی اَثرات، جنگلی حی

کووڈ 19 سے مریض کے منہ کی صحت کیسے متاثر ہوتی ہے؟ | ویکسین کے استعمال کا ایک بہترین فائدہ سامنے آگیا!

کھانے پینے کی چیزوں کوچکھنے کی حس میں تبدیلی یا محرومی، منہ خشک رہنا اور چھالے کووڈ 19 کے مریضوں میں عام مسائل ہوتے ہیں اور ان علامات کا دورانیہ دیگر سے زیادہ طویل ہوسکتا ہے۔یہ بات برازیل میں ہونے والی ایک نئی طبی تحقیق میں سامنے آئی۔دریں اثناویکسینیشن سے نہ صرف کورونا وائرس سے ہونے والی بیماری کووڈ 19 سے تحفظ ملتا ہے بلکہ اس سے ذہنی صحت بھی بہتر ہوتی ہے۔یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک نئی طبی تحقیق میں سامنے آیا۔تحقیق میں بتایا گیا کہ کووڈ 19 کے لگ بھگ ہر 10 میں سے 4 مریضوں کے چکھنے کی حس میں تبدیلیاں آتی ہیں یا وہ اس سے مکمل محروم ہوجاتے ہیں۔ اس کے مقابلے میں 43 فیصد مریضوں کو مسلسل منہ خشک رہنے جیسی علامت کا سامنا ہوتا ہے۔بیشتر افراد کو یہ تو علم ہے کہ سونگھنے یا چکھنے کی حسوں سے محرومی کووڈ 19 کی اہم علامات ہیں، مگر برازیلیا یونیورسٹی کی اس تحقیق میں منہ سے جڑی متعدد علاما

ہوا سے کاربن ڈائی آکسائیڈ کھینچنے والی | دنیا کی سب سے بڑی مشین

کاربن ڈائی آکسائیڈ کو ہوا سے کھینچ کر چٹان میں تبدیل کرنے والے دنیا کے سب سے بڑے پلانٹ نے یورپی ملک آئس لینڈ میں کام شروع کردیا۔اس پلانٹ کو 'اورکاکا نام دیا گیا ہے، اورکا آئس لینڈ کی زبان کا ایک لفظ ہے جس کا مطلب توانائی ہے۔یہ پلانٹ 4 یونٹس پر مشتمل ہے اور ہر یونٹ 2 دھاتی باکسز پر مشتمل ہے جو شپنگ کنٹینر جیسے نظر آتے ہیں۔اس پلانٹ کو سوئٹزر لینڈ کی کمپنی کلائم ورکس اور آئس لینڈ کی کمپنی کارب فکس نے تیار کیا ہے۔کمپنیوں کے مطابق یہ پلانٹ ہر سال ہوا میں موجود 4 ہزار ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ کی صفائی کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔یو ایس ماحولیاتی ادارے کے مطابق یہ مقدار 870 گاڑیوں سے خارج ہونے والی کاربن ڈائی آکسائیڈ کی مقدار کے برابر ہے جبکہ اس پلانٹ کی لاگت ایک سے ڈیڑھ کروڑ ڈالرز ہے۔ کاربن ڈائی آکسائیڈ کو اکٹھا کرنے کے لیے پلانٹ کے پنکھوں کو استعمال کیا جاتا ہے جو ہوا کو کلکٹر میں

وہ امراض جو جِلد سے ظاہر ہوتے ہیں

کچھ امراض کا سب سے پہلے اشارہ جلد پر ظاہر ہوتا ہے۔جلد انسانی جسم کا سب سے بڑا عضو ہے مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ یہ امراض کی پیشگوئی بھی کرتی ہے؟جی ہاں کچھ امراض کا سب سے پہلے اشارہ جلد پر ظاہر ہوتا ہے۔مگر کیا آپ ان علامات سے واقف ہیں جو جلد مختلف امراض کے لیے ظاہر کرتی ہے؟ برص  :عام طور پر برص نامی اس مرض کے بارے میں یہ خیال عام ہے کہ یہ مچھلی کھانے کے بعد دودھ پینے کا ری ایکشن ہوتا ہے، تاہم طبی سائنس اس کو رد کرتی ہے۔درحقیقت یہ اس وقت لاحق ہوتا ہے جب جلد کو اس کی قدرتی رنگت دینے والے خلیات مخصوص رنگدار مادہ کی تیاری چھوڑ دیتے ہیں۔جلد پر نمایاں سفید دھبوں کا نمودار ہونا درحقیقت جسمانی دفاعی نظام کی جانب سے جلدی خلیات پر حملہ کرنا ہوتا ہے جو جلد کو رنگ دینے والے جز میلانن پر ہوتا ہے، تاہم یہ دیگر آٹو امیون امراض جیسے تھائی رائیڈ امراض کی علامت بھی ہوسکتا ہے۔ سوزش جلد 

تازہ ترین