تازہ ترین

! قانون کابے جا استعمال ۔سپریم کورٹ کا اظہارِ تشویش | سوال کرنے والوں کو غدارِوطن تصور کیا جارہا ہے

جمہوریت کی آڑ میں جب من مانے نظام کی جڑیں مضبوط ہو نے لگتی ہیں تو حکمرانوں کا مزاج بھی نرالا بنتا جاتا ہے۔ آج ہندوستان میں کچھ ایسا ہی دکھائی دے رہا ہے ۔ملک کے دستوری اور قانونی اداروں کی آزادی اور ان کی غیر جابنداری مشکوک ہو تی جا رہی ہے۔ شہریوں کے حقوق اور ان کی آ زادیوں پر قدغن لگانے کی کوشش جا ری ہے۔ حکومت سے سوال کرنا یا کسی عوامی مسئلہ پر احتجاج کرنااب ملک سے غداری تصور کیا جا رہا ہے۔ مرکز ی حکومت اپنے ہی ملک کے شہریوں پر غداری کے اس قانون کو نا فذ کر رہی ہے جو بر طانوی حکمران تحریک آزادی کی جدوجہد کے دوران مجاہدین آ زادی کے خلاف استعمال کر تے رہے۔ ان حالات میں ملک کی عدلیہ نے اپنی دستوری ذ مہ داری نبھاتے ہو ئے حکومت سے سوال کیا کہ کیا ملک کی آ زادی کے 75سال بعد بھی برطانوی دور کے غداری کے قانون کو دستور میں رکھنا ضروری ہے۔ 15؍ جولائی 2021کو چیف جسٹس این وی رمنا کی زیر قیا

شاہ عبداللہ پر پھر امریکی نظرِ عنایت

جارڈن کے شاہ عبداللہ جنھیں کہ گزشتہ امریکی انتظامیہ نے بالکل حاشیہ پر رکھ دیا تھا، وہ ایک مرتبہ پھر امریکہ کے ساتھ مشرقِ وسطیٰ اور دیگر مسلم مسائل پر صدر بائیڈن کے ساتھ کام کرتے نظر آئیں گے۔ شاہ عبداللہ عرب سربراہان میں پہلیقائد ہیں جنھیں امریکی انتظامیہ نے صدر جو بائیڈن سے ملاقات کے لیے واشنگٹن مدعو کیا۔ دونوں رہنماؤں کے درمیان یہ ملاقات گزشتہ ہفتے19جولائی کو عمل میںآئی۔ تاریخی طور پر امریکہ اور جارڈن کے تعلقات ہمیشہ نہایت قریبی اور دوستانہ رہے ہیں۔ ملاقات کے بعد صدر بائیڈن نے شاہ عبداللہ کو ایک مہذب اور قریبی دوست قرار دیا۔ گو کہ صدر بائیڈن کی خارجہ پالیسی کا محور چین اور روس تصور کیے جاتے ہیں، لیکن انھیں بھی یہ معلوم ہے کہ وہ مشرقِ وسطیٰ اور عرب سیاست کو نظر انداز نہیں کرسکتے۔ نئی انتظامیہ نے اب تک جو اشارے دیے ہیں ان کے مطابق وہ چاہتا ہے کہ علاقائی سیاست اور عرب- اسرائیل تنا

آکسیجن کی کمی،موت کا سبب،45دنوں میں500لوگ مرے ؟

یہ سچ ہے کہ کروناوبا کے دوسرے دور کا زور کچھ ٹوٹا ہےاور ملک نے راحت کی سانس لی ہے۔ اپریل اور مئی کے اخبار اٹھا کر دیکھ لیں توشائد ہی کوئی دن گذرا ہو جب آکسیجن نہ ملنے سے ہوئی اموات کا تذکرہ نہ ہو۔ آکسیجن کی حصولیابی کے لئےلوگ ایک اسپتال سے دوسرے اسپتال کی طرف بھاگ رہے تھے اور سڑکوں پر غش کھا کر گر رہے تھے۔ آکسیجن نہ ہونے کی وجہ سے اسپتال مریضوں کو داخل کرنے سے انکار کر رہے تھےاورلوگ اپنے پیاروں کی جان بچانے کے لئے آکسیجن سلنڈر کے لئے لمبی قطاروںمیں لگ رہے تھے۔ ایسے میں کچھ خود غرض لوگ وزیر اعظم کے مشورے ’ آپدا میں اوسر‘ پر عمل کرتے ہوئے کرونا وبا کے علاج کے لئے ضروری انجکشن، دوائوں اور آکسیجن سلنڈر کی قیمت کئی گنا وصول کر رہے تھےاور اسپتالوں کی تو گویا لاٹری ہی نکل آئی تھی۔ چند روز کے علاج ، جس میں اکثر مریض کی موت ہی واقع ہو جاتی تھی، ا سپتال کئی کئی لاکھ کے بل تھما

گنجے پن سے نجات پانے کا علاج | علامات ،تحفظ ا ور تدارک

گنج پن مردوں کا ایسا مسئلہ ہے جو بہت عام اور ان کی ذہنی صحت کو پریشان کردینے والا ہوتا ہے مگر اب لگتا ہے کہ سائنسدانوں نے اس کا انتہائی آسان علاج ڈھونڈ نکالا ہے، جس کے لیے پیوند کاری کی بھی ضرورت نہیں ہوگی۔ یہ دعویٰ جاپان میں ہونے والی ایک تحقیق میں سامنے آیا۔ جاپان کی یوکو ہاما نیشنل یونیورسٹی کی تحقیق میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ فاسٹ فوڈ ریسٹورنٹس میں فرنچ فرائز میں استعمال ہونے والا ایک کیمیکل گنج پن کا علاج ثابت ہوسکتا ہے۔ تحقیق کے مطابق سیلیکون میں پائے جانے والا کیمیکل Dimethylpolysiloxane، جسے فرنچ فرائز بنانے کے لیے تیل میں شامل کیا جاتا ہے، گنج پن سے نجات دلا کر بالوں کو قدرتی طور پر اگاتا ہے۔ تحقیق کے دوران جب چوہوں پر اس کیمیکل کو استعمال کیا گیا تو بالوں کے غدود زیادہ بننے لگیں اور بال دوبارہ اگنا شروع ہوگئے۔ ابتدائی ٹیسٹ سے عندیہ ملا کہ یہ طریقہ کار ان

واٹس ایپ کا گروپ کالز میں آسانی کیلئے نیا فیچر متعارف | ویڈیو کالز میں لوگوں کی تعداد 4 سے بڑھا کر 8 کردی

مقبول ترین میسجنگ ایپ 'واٹس ایپ نے دنیا بھر میں ایک دوسرے سے رابطے کے لیے استعمال ہونے کے لیے گروپ کالز کے لیے نیا فیچر متعارف کرادیا ہے کہ اب صارفین کوئی بھی گروپ کال مِس نہیں کرسکیں گے۔واٹس ایپ کی جانب سے گروپ کالز سے متعلق صارفین کے لیے آسانیاں لاتے ہوئے اپنے بلاگ میں کہا گیا کہ ایک ایسے وقت میں جب ہم میں سے بہت سے لوگ ایک دوسرے سے دور ہیں، ایسے میں دوستوں اور اہلخانہ کے ساتھ ایک گروپ کال پر اکٹھے ہونے سے بہتر کوئی اور چیز نہیں ہے۔تاہم اس دوران اس سے زیادہ تکلیف دہ احساس کوئی نہیں جب آپ کسی خاص لمحے سے محروم رہ جائیں۔ واٹس ایپ کی جانب سے بلاگ پوسٹ میں کہا گیا کہ جیسے جیسے گروپ کالز کی مقبولیت میں اضافہ ہورہا ہے، سیکیورٹی اور اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن فراہم کرتے ہوئے صارفین کے تجربے کو بہتر بنانے پر کام کیا جارہا ہے۔میسجنگ ایپلی کیشن کی جانب سے کہا گیا کہ اب کوئی گروپ کال شروع ہ

ورچوئل رِیلِٹی ۔تصورات کو حقیقت کو روپ دے رہا ہے

ٹیکنالوجی نے عالمی معیشت کی کئی صنعتوں کو بدل کر رکھ دیا ہے۔ ایسی ہی ایک جدید ٹیکنالوجی کا نام ورچائل ریالٹی ہے۔ ورچوئل ریالٹی کے باعث دنیا اس وقت جن فوائد سے مستفید ہورہی ہے، چند برس پہلے ان کا تصور بھی محال تھا۔ اگر تعمیراتی صنعت کی بات کریں تو ورچوئل ریالٹی کی وجہ سے اب آپ، ایک تعمیراتی پروجیکٹ کے مکمل ہونے سے پہلے ہی اس کی سیر کرسکتے ہیں اور ایک اینٹ رکھے جانے سے پہلے پروجیکٹ کا مکمل انٹیریئر دیکھ سکتے ہیں۔ ورچوئل ریالٹی نے اب ممکن بنادیا ہے کہ آرکیٹیکٹ اور کلائنٹ حقیقی معنوں میں ایک پروجیکٹ کے ڈیزائن پر شراکت دار کے طور پر کام کرسکیں۔ اس سلسلے میں ماہرین کا کہنا ہے کہ، جیسے جیسے تعمیراتی ادارے ورچوئل ریالٹی کے شعبےمیں اپنی صلاحیتوں میں اضافہ کرتے جائیں گے، اس جدید ٹیکنالوجی کے فوائد میں بھی اضافہ ہوگا۔ Enscapeنامی ایک انقلابی ’ریئل ٹائم رینڈرنگ ‘ سوفٹ ویئر ورچوئل

تازہ ترین