اسلامی کیلنڈر کے گیارہویں مہینہ ’’ذی قعدہ‘‘ کی اہمیت

ذی قعدہ اسلامی سال کا گیارہواں مہینہ ہے ۔ اس ماہ کو عربی زبان میں ذو القعدہ یا ذی القعدہ کہتے ہیں۔ یہ دو لفظوں کا مجموعہ ہے۔ ذو یا ذی کے معنی ’’والا‘‘ اور قعدہ کے معنی ’’بیٹھنے‘‘ کے ہیں۔ زمانہ جاہلیت میں عرب لوگ اس ماہ میں جنگ وجدال کو حرام سمجھتے تھے اور اسلحہ رکھ دیتے تھے۔ کوئی کسی کو قتل نہیں کرتا تھا حتی کہ باپ بیٹے کے قاتل کو بھی اس ماہ میں کچھ نہیں کہا جاتا تھا۔ چونکہ عرب لوگ اس مہینہ میں قتل وقتال سے الگ تھلک ہوکر بیٹھ جاتے تھے اس لئے اس مہینہ کو ذو القعدہ یا ذی القعدہ کہا جاتا ہے۔ اردو زبان میں ذی قعدہ استعمال کیا جاتا ہے۔ زمانہ جاہلیت میں بھی حج کیا جاتا تھا، جس میں مکہ مکرمہ کے علاوہ دوسرے مقامات سے بھی لوگ آتے تھے۔ حاجیوں کے استقبال اور ان کی سہولیات کے لئے بھی عرب لوگ اِس ماہ میں جنگ وقتال سے دور رہتے تھے۔  ذی قعدہ&l

نکاح کی ضرورت و اہمیت

اﷲ تعالیٰ نے انسان کو بے شمار نعمتوں سے سرفراز کیاہے۔ ان نعمتوں میں ایک خاص نعمت نکاح  ہے ۔ نکاح ایک ایسی دولت ہے جس کی خواہش بچپن سے ہی ایک انسان کے اندر جلوہ گر ہوتی ہے ۔ایک انسان بچپن سے ہی اس فکر میں مبتلا ہوتاہے کی مجھے اچھی گاڑی،اچھابنگلہ اور اچھی بیوی مل جائے۔اس کا مطلب یہ ہوا کہ ایک انسان کے اندر فطری طور پر بیوی کی خواہش رکھی گئی ہے۔ اس خواہش کو پورا کرنے کے لئے ایک جائز طریقہ بھی واضع کیا گیا ہے یعنی وہ نکاح ہے۔ نکاح کے بغیرانسان کی زندگی مکمل نہیں ہے۔یہ ایک قدرتی اور فطری عمل ہے کہ ایک عورت میں مرد کا سکون چھپا ہوا ہے۔ اس صورت میں ایک انسان اس سے قطعاََ انکار نہیں کر سکتا۔ حالانکہ نکاح کے بغیر بھی زندگی کی گاڑی چل سکتی ہے۔ لیکن ایک وقت ایسا آتا جب انسان کو اپنے ایک ساتھی کی ضروقت محسوس ہوتی ہے۔ اس وقت نکاح ہی ایک ایسا عمل ہے جس کا بدل دنیا میں کسی چیز سے ممکن نہیں۔ اس

تازہ ترین