ملک کاسیاسی مستقبل تعین کرنے والےیو پی کے اسمبلی انتخابات !

     اُتر پردیش سمیت پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کے اعلان کے ساتھ ہی ملک کی مختلف سیاسی پارٹیاں اپنی اپنی سیاسی حکمتِ عملی کے مطابق انتخابی مہم چلانے میں مصروف ہو گئی ہیں۔ کوویڈ کی قہر سامانی کی وجہ سے الیکشن کمیشن نے انتخابی ریلیوں ، جلسوں اور جلوسوں پر وقتی طور پر پابندی لگا دی ہے۔ سیاسی پارٹیوں کو عوامی رابطہ کے لئے ورچول کانفرنسوں پر انحصار کرنا پڑ رہا ہے۔ لیکن اس کے باوجود الیکشن کمیشن کی ہدایات کو نظر انداز کرنے کی بھی اطلاعات ہیں۔ خاص طور پر یوپی میں یوگی آدتیہ ناتھ کے ہاتھوں میں اس وقت ریاست کی زمامِ کار ہے، اس لئے وہ اپنے اقتدار کا استعمال کر تے ہوئے یوپی کے رائے دہندوں کو رجھانے میں لگے ہوئے ہیں۔ گز شتہ پانچ سال کے دوران انہوں نے عوام کے بنیادی مسائل کو سننے اور اسے حل کرنے میں کوئی قابل ِ ذکر دلچسپی نہیں دکھائی ہے ، اب جبکہ الیکشن سَر پر آ گئے ہیں تو اپ

روس کی امریکہ اور ناٹو کو جنگجویانہ دھمکی

روس نے ایک مرتبہ پھر یوروپ میں نئے سکیورٹی نظام کو قائم کرنے کے لیے اپنی کوششیں تیز کردیں اور ایک طریقے سے امریکہ اور ناٹو کو دھمکی بھی دے دی ہے کہ اگر اس کے مطالبات پورے نہیں کئے جاتے تو پھر ایک نئی جنگ کی شروعات ہوسکتی ہے۔ دفاعی اور خارجی امور کے ماہرین یہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ صدر پوتن کے اصل مقاصد کیا ہیں۔روسی وزارتِ خارجہ نے امریکہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یوروپ سے اپنے جوہری نگہداشت اور حملے کرنے کے نظام کو یکسر ختم کردے ۔ اپنے مطالبات کو روس نے کسی غیر سفارتی طریقے سے پچھلے مہینے دسمبرکی 17 تاریخ کو روسی وزارت خارجہ نے یکطرفہ طور پر دو نئے معاہدوں کا مسودہ شائع کیا تھا ، ایک مسودہ امریکہ کے لیے تھا اور دوسرا ناٹو کے لیے۔بظاہر کوئی بھی معاہدہ دو ملکوں کے درمیان باہمی بات چیت کے بعد عمل میں آتا ہےاور کوئی ملک کسی معاہدے کا اعلان کرکے اسے حتمی شکل دینے کا یکطرفہ اختیار نہیں رکھتا ہے

پانی۔۔۔زندگی کی بنیاد اور ایک ہمہ گیر محلل

کرّۂ اَرض پر موجود تمام قدرتی وسائل میں ’’پانی‘‘ کو ایک بنیادی حیثیت حاصل ہے اور اس کی اہمیت اس وقت دوچند ہو جاتی ہے جب یہ زمین پر موجود مختلف اطرافی ماحول میں اپنی تخلیقی جوہری اور سالماتی ساخت کی بقاء کی خاطر کئی پہلوئوں میں تبدیل ہوتا رہتا ہے اور اس کا ہر پہلو اپنی جگہ ایک خاص اہمیت رکھتا ہے۔  اس بات کا اندازہ سب سے پہلے اس حقیقت سے لگایا جا سکتا ہے کہ حیات کا وجود توانائی کےحصول سے منسلک ہے جو خوراک میں موجود غذا اور غذائیت سے پیوستہ ہے۔ لیکن ایک متوازن خوراک جو زندگی کی نشو و نما کے لئے اہم ہے۔ بغیر ’’مائع پانی‘‘ کے ممکن ہی نہیں ہے، کیونکہ خوراک کے بغیر کوئی بھی جانداز چند ہفتے تو گزار سکتا ہے لیکن ’’مائع پانی‘‘ کی غیرموجودگی میں چند ایام گزارنا مشکل ہی نہیں ناممکن ہے۔  یہی وجہ ہے کہ انسانی

خام خلیات کے ذریعے علاج!

آج کے تیز رفتار دور میں جہاں انسان نئی تخلیقی تحقیق میں آگے بڑھتا جا رہا ہے،ا س کے ساتھ ساتھ اُس تحقیق کا بڑا حصہ طب نے اپنی طرف متوجہ کیا ہوا ہے ۔نت نئی طریقے جس سے انسان اپنے اندر پیدا ہونے والی بیماریوں کا علاج کر سکے۔ اس شعبے میں پودوں، جانداروں اور کیمیائی دوا کا استعمال کیا جاتا رہا ہے لیکن اب اس جدید دور میں اور دیگر طریقے علاج کا حصہ بنتے جا رہے ہیں۔ ان میں سے ایک طریقہ ا سٹیم سیل کے ذریعے علاج کا ہے۔  خام یا غیر متشکل خلیہ وہ خلیہ ہوتا ہے جو جسم کے کسی بھی مخصوص خلیہ کو تشکیل دے سکتا ہے۔ خام خلیہ کو پانچ مختلف قسم کے خلیوں میں تقسیم کیا جا سکتا ہے۔ سب سے پہلا خلیہ (زائگوٹ) جس سے کسی بھی جاندار کی زندگی کا آغاز ہوتا ہے۔ ایک کامل تفرقی خام خلیہ ہوتا ہے۔ یہ خلیہ کثیر تفرقی خلیہ بناتا ہے جو متعدد تفرقی خام خلیوں میں تقسیم ہوتے ہیں۔ یہ خلیہ محدود تفرقی خام خلیہ بنات

تازہ ترین