ترال اور چرارشریف میں ژالہ باری | میوہ باغات اور فصلوں کوزبردست نقصان

ترال+کولگام// جنوبی قصبہ ترال اور وسطی ضلع بڈگام کے کئی دیہات میں شدید ژالہ باری ہوئی جس کے باعث میوہ جات اور کھڑی فصلوں کو  نقصان پہنچا ۔ ترال قصبہ میں منگل کودو بجے کے قریب شدید ژالہ بھاری ہوئی جس کے نتیجے میں میوہ باغات اور دیگر فصلوں کو نقصان پہنچا۔ پنیر جاگیر،بٹنور،کار مولہ،بسمئی اوربرن پتھری سمیت کئی علاقوں میں کئی منٹوں تک شدیدژالہ باری ہوئی ۔مقامی لوگوں کے مطابق ان علاقوں میں میوہ باغات،سبزیوں اوردیگر فصلوں کوسخت نقصان پہنچا ۔ خیال رہے کہ علاقے میں گزشتہ دنوں بھی ژالہ باری سے فصلوں کو  نقصان پہنچا تھا۔ ادھر کولگام کے کئی دیہات میںکل شدید ژالہ باری سے میوہ جات و دیگر کھڑی فصلوں کو نقصان پہنچا۔مالون،چندر گی ،بانی مولہ ،کھلورہ اور دیگردیہات میں سہ پہر4بجے شدید ژالہ باری ہوئی اور 10منٹوں تک ہوئی ژالہ باری کے نتیجے میںمیوہ باغات اور کھڑی فصلوں کو شدید نقصان پہنچا۔ چرارشریف

اوڑی میں مرغ نایاب | تاجروں پر مصنوعی قلت کا الزام

اوڑی//عیدالفطر کی آمد کے ساتھ ہی اوڑی میں مرغ نہیں مل رہے ہیں۔ گزشتہ دس روز سے اکثر علاقوں میںمرغ نہیں مل رہے ہیں۔ مقامی آبادی کا کہنا ہے کہ عیدالفطر کی آمد کے ساتھ ہی مرغ فروشوں نے مصنوعی قلت پیدا کی ہے۔اس دوران مرغ فروشوںکا کہنا ہے کہ سرکار کی جانب سے110فی کلو مرغ قیمت مقرر کی ہے لیکن اْنہیں خود 140 روپے میں ملتے ہیں ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ کچھ دکاندار ذخیرہ اندوزی کر کے 150 روپئے فی کلو مرغ فروخت کرتے ہیں۔ایس ڈی ایم اوڑی ریاض احمد ملک نے بتایا کہ وہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر امور صارفین و تقسیم کاری بارہمولہ سے استفسار کریںگے۔  

تازہ ترین