تازہ ترین

سابق بیٹنگ کوچ کابابر اعظم کو سیاست سے محتاط رہنے کا مشورہ

کراچی/ سابق بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور نے بابر اعظم کو پاکستانی کرکٹ کی سیاست سے محتاط رہنے کا مشورہ دیدیا،ان کے مطابق قیادت کا بوجھ اور بیرونی دباؤ نوجوان بیٹسمین کے کھیل پر اثر انداز ہوسکتے ہیں۔سابق بیٹنگ کوچ و زمبابوین کرکٹر گرانٹ فلاور نے خدشہ ظاہر کیاکہ پاکستانی کرکٹ میں موجود سیاست اور قیادت کا دباؤ بابر اعظم کے کھیل پر اثرانداز ہوسکتا ہے، وہ ایک بہترین کرکٹنگ دماغ کے حامل ہیں مگر پاکستانی کرکٹ میں بہت زیادہ سیاست اور شائقین کا بھی بے تحاشا دباؤ ہوتا ہے، اگر آپ ہارنا شروع ہوئے تو پھر بیٹنگ پر بھی دباؤ بڑھے گا اور یہ سب کچھ بہت ہی تیزی سے ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم ماضی میں دیکھ چکے کہ کس طرح قیادت کے بوجھ نے کئی عظیم کھلاڑیوں کو متاثر کیا مگر کچھ ایسے بھی ہیں جن کے کھیل میں قیادت کی ذمہ داری سے نکھار پیدا ہوا، اگر بابر اعظم بھی بہتر ہوئے تو پھر دنیا ان کے قدموں میں ہوگی، اس کا فی

دھونی کی وجہ سے ملی کپتانی: وراٹ

نئی دہلی/ہندستان کے تینوں فارمیٹ کے کپتان وراٹ کوہلی کا کہنا ہے کہ ان کے پیشرو مہندر سنگھ دھونی کے بھروسے کی وجہ سے ہی انہیں ٹیم انڈیا کی کپتانی ملی۔وراٹ نے اپنے ٹیم کے ساتھی اور آف اسپنر روی چندرن اشون کے ساتھ یو ٹیوب پر بات چیت میں کہا کہ دھونی ان کی میچ حالات کو پڑھنے کی صلاحیت سے بہت متاثر تھے اور کپتانی حاصل کرنے میں دھونی کا یہی اعتماد ان کے حق میں گیا۔31 سالہ وراٹ 2014-15 میں دھونی کے آسٹریلوی دورے میں ٹیسٹ سیریز کے درمیان میں کپتانی چھوڑنے کے بعد کپتان بنے تھے۔انہوں نے 2017 کے شروع میں محدود اوورز کی کپتانی بھی سنبھالی تھی۔وہ ہندستان کے تینوں فارمیٹ کے کپتان ہونے کے ساتھ ساتھ ٹیم کے سرفہرست بلے باز بھی ہیں۔وراٹ دھونی کو پیچھے چھوڑ کر ہندستان کے سب سے زیادہ کامیاب ٹیسٹ کپتان بھی بن چکے ہیں۔اپنی کپتانی میں ہندستان کے لئے 55 میچوں میں 33 میچ جیت چکے وراٹ نے کہا کہ وکٹ کیپر دھونی

پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی | چک جمال پٹن میں لوگوں کا احتجاجی دھرنا

 بارہمولہ// شمالی قصبہ پٹن کے چک جمال میر علاقے کے لوگوں نے اتوار کوپینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی کو لیکر ایک مختصر احتجاجی دھرنا دیا ۔ احتجاجی لوگوں نے محکمہ جل شکتی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ قصبہ پٹن سے صرف 3 کلومیٹر دور چک جمال نامی گائوں میںپینے کے پانی کی سخت قلت ہے ۔انہوں نے کہا کہ108 چولہوں پر مشتمل اس گاؤں میں صرف تین عوامی سطح کے نل قائم ہیں جو نہ صرف بستی کے ساتھ انصاف نہیں ہے اورا ب کئی مہینوں سے وہ بھی بیکار ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر چہ متعلقہ محکمہ اپنے واٹر ٹینکر ان علاقے میںروانہ کررہاہے لیکن عوام کی روز مرہ کی ضروریات پورا نہیں ہوپاتی ہیں۔ مظاہرین مطالبہ کررہے تھے کہ انہیں پینے کا صاف پانی فراہم مسلسل کیا جائے۔ایس ڈی ایم پٹن نصیر احمد نے اس ضمن میں بتایا کہ ابھی تک لوگوں نے اس مسئلہ کو ان کی نوٹس میں نہیں لایا ہے تاہم وہ متعلقہ محکمہ کو اس سلسلے میں ضروری ا

تازہ ترین