زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا احتجاج جاری

 نئی دہلی// زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا احتجاج 10 ویں دن بھی جاری ہے۔ کسان تنظیموں اور حکومت کے درمیان کل پانچویں دور کی بات چیت ہوئی تاہم یہ میٹنگ کسی نتیجہ پر نہیں پہنچی اور اور اگلی میٹنگ 9 دسمبر کو ہوگی۔ مرکزی وزیر نریندر سنگھ تومر، مرکزی وزیر تجارت پیوش گوئل کے ساتھ حکومت کے دیگر نمائندے میٹنگ میں موجود تھے۔ اس درمیان، کسانوں کو خطاب کرتے ہوئے نریندر سنگھ تومر نے کہا کہ حکومت کی طرف سے واضح کیا گیا ہے کہ تینوں قوانین کو پوری طرح واپس نہیں لیا جاسکتا۔ حالانکہ حکومت کسانوں کے مشورے پر غور کرنے، بات چیت کرنے اور ترمیم کرنے کو تیار ہے۔ذرائع کے مطابق، مرکزی وزیر زراعت نے میٹنگ کے دوران کہا کہ حکومت ترمیم کے لئے راضی ہے۔ اس پر کسان لیڈروں نے کہا کہ وہ کسی بھی ترمیم کو قبول کرنے کو تیار نہیں ہیں۔ کسانوں نے واضح کیاکہ تینوں قوانین واپس ہوں۔ اس کے بعد سبھی کسان لیڈر کھڑے ہوگئے تھے،

حکومت نے کسانوں کو بحرانوں میں ڈال دیا:راہل

نئی دہلی// کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہا ہے کہ بہار میں کسان منیمم سپورٹ پرائس (ایم ایس پی) کے بغیر پریشان ہیں اور وزیراعظم نریندر مودی نے ملک بھر کے کسانوں کو اس بحران میں دھکیل دیا ہے ۔مسٹر گاندھی نے ہفتے کے روز کہا ‘‘بہار کا کسان ایم ایس پی- اے پی ایم سی کے بغیر کافی پریشانی میں ہے اور اب وزیر اعظم نے پورے ملک کو اسی کنویں میں دھکیل دیا ہے ۔ ایسے میں ملک کے کسانو ں کا ساتھ دینا ہمارا فرض ہے ’’۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے ایم ایس پی نہ ملنے پر پریشان بہار کے کسانوں کا ایک ویڈیو جاری کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اورنگ آباد کے کسانوں کو دھان کا ایم ایس پی نہیں مل رہا ہے اور حکومت ان کے بحران پر توجہ نہیں دے رہی ہے ۔ کسانوں کی دھان کی کاشت پوری طرح سے برباد ہوگئی ہے ۔دریں اثنا کانگریس مواصلات شعبے کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے مسٹر مودی کو کسان تحریک کو ختم

کووند نے ڈاکٹر نشنک کی مہرشی اروند پر لکھی کتاب کا اجرا کیا

 نئی دہلی// صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے مرکزی وزیر تعلیم ڈاکٹر رمیش پوکھریال نشنک کے ذریعہ مہرشی اروند پر لکھی کتاب ‘مانوتا کے پرنیتا:مہرشی اروند’’ کا ہفتے کو راشٹرپتی بھون میں اجرا کیا۔ڈاکٹر نشنک نے کتاب کی پہلی کاپی صدر کو تحفہ میں دی۔اس موقع پر وزیرتعلیم نے کہا کہ مہرشی اروند ہندوستانی ثقافت،اقدار اور سناتن دھرم کے لئے پوری طرح سے مختص تھے ۔وہ ہندوستان کی انوکھا قابلیت پہچانتے تھے اور ملک کے ہر عوام کو اس   سے مطلع کرانا چاہتے تھے ۔انہوں نے کہا،‘‘مہرشی اروند کی سماجی اور سیاسی موضوع پر گہری پکڑ اور شعورکی ترقی کی ان کی غیر معمولی سمجھ کا میں ہمیشہ قائل رہا ہوں۔  

مودی نئے پارلیمنٹ ہاؤس کا سنگ بنیاد رکھیں گے

 نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی 10 دسمبر کی سہ پہر ایک بجے مرکزی وسٹا پروجیکٹ کے تحت تعمیر کیے جانے والے نئے پارلیمنٹ ہاؤس کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔ہفتہ کو لوک سبھا اسپیکر اوم برلا نے صحافیوں کو یہ اطلاع دی۔مسٹر برلا نے بتایا کہ تقریبا 64 ہزار 500 مربع فٹ علاقے میں پھیلے نئے پارلیمنٹ ہاؤس کی تعمیر میں 2000 انجینئر اور ملازمین براہ راست طور سے اور 9000 ملازمین بالواسطہ طور سے شامل ہوں گے۔انہوں نے بتایا کہ پارلیمنٹ ہاؤس کی تعمیر میں 200 سے زائد کاریگر اپنی فنی مہارت پیش کریں گے۔ پارلیمنٹ کی نئی عمارت پرانے پارلیمنٹ کی عمارت سے 17000 مربع فٹ بڑی ہوگی۔لوک سبھا اسپیکر کے مطابق مستقبل میں لوک سبھا اور راجیہ سبھا نشستوں کی تعداد میں اضافے کے امکان کے پیش نظر لوک سبھا میں اراکین پارلیمنٹ کے لئے 888 اور راجیہ سبھا میں 326 نشستیں ہوں گی۔ تاہم ، لوک سبھا میں سیٹوں کی کل تعداد 1224 ہوں گی۔

تازہ ترین