تازہ ترین

سرمائی اجلاس کا تیسرا دن | ایوان بالامیںاپوزیشن کا ہنگامہ

نئی دہلی// ایوان با لا راجیہ سبھا میں 12 ارکان کی معطلی کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کانگریس ارکان کے ہنگامہ آرائی کی وجہ سے وقفہ صفر اور سوالات نہیں ہوسکا اور ایوان کو دب بھر کیلئے ملتوی کردیا گیا۔ ایوان میں قائد حزب اختلاف ملکارجن کھڑگے نے معطل ارکان کا مسئلہ اٹھانے کی کوشش کی لیکن ڈپٹی چیئرمین ہری ونش نے کہا کہ چیئرمین اس سلسلے میں اپنا فیصلہ دے چکے ہیں ، اس لیے وہ اس پر کچھ بھی سننے کی پوزیشن میں نہیں ہیں۔       معطل اراکین کا پارلیمنٹ کے احاطے میں دھرنا  نئی دہلی//یو این آئی// پارلیمنٹ کے اجلاس کے دوران راجیہ سبھا میں ‘غیر مہذب برتاؤ’ کی وجہ سے معطل کیے گئے 12 اراکین پارلیمنٹ بدھ کو اس کارروائی کے خلاف پارلیمنٹ کے احاطے میں دھرنے پر بیٹھ گئے ہیں۔دھرنے پر بیٹھے ارکان پارلیمنٹ معطلی ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے سیشن کے دوران ہ

کسانوں کی موت کا معاملہ | لوک سبھا میں ’انصاف چاہئے ‘نعرے بلند

نئی دہلی// پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کا کے تیسرے دن بھی پارلیمنٹ میں زبردست ہنگامہ جاری ہے۔ کسانوں کے مسئلہ پر حزب اختلاف کی جانب سے لگاتار آواز اٹھائی جا رہی ہے۔ لوک سبھا میں کانگریس کے لیڈر ادھیر رنجن چودھری نے زرعی قوانین کے دوران کسانوں کی اموات کا معاملہ اٹھایا۔ جبکہ دیگر ارکان پارلیمنٹ نے وقفہ سوالات کے دوران ’ہمیں انصاف چاہئے‘ کے نعرے بلند کیے۔(یو این آئی)  

زرعی قوانین کی واپسی پر صدر جمہوریہ کی بھی مہر ثبت

نئی دہلی //وزیر اعظم نریندر مودی کے ذریعہ تینوں زرعی قوانین واپس لیے جانے کا اعلان کیے جانے کے بعد 29 نومبر کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں سے اسے منسوخ کرنے والا بل پاس ہو گیا تھا، اور اب صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے بھی اس پر مہر لگا دی ہے۔ صدر جمہوریہ کی منظوری کے ساتھ ہی باضابطہ طور پر تینوں زرعی قوانین منسوخ ہو گئے ہیں۔ زرعی قوانین کو رد کیے جانے اور ایم ایس پی پر قانون بنائے جانے کو لے کر گزشتہ ایک سال سے زیادہ مدت سے کسان مظاہرہ کر رہے ہیں۔ زرعی قوانین واپس لیے جانے کا کسانوں کا مطالبہ تو پورا ہو گیا ہے، پھر بھی وہ ایم ایس پی پر قانون بنانے کو لے کر ہنوز مظاہرہ کرتے نظر  آرہے ہیں۔  

کسانوں کی آج کی میٹنگ منسوخ، سنیکت مورچہ کا اجلاس4 دسمبر کو

نئی دہلی//یو این آئی// کسانوں کے مطالبات پر گزشتہ ایک برس سے دہلی کی سرحد پر احتجاج کر رہیں کسان تنظیموں کی میٹنگ بدھ کو ملتوی کر دی گئی۔ کسان لیڈر راکیش ٹکیت نے بتایا کہ چھوٹی چھوٹی میٹنگیں ہوتی رہتی ہیں لیکن آج کوئی میٹنگ نہیں ہے ۔مسٹر ٹکیت نے کہا کہ کسان تنظیموں کی میٹنگ 4 دسمبر کو ہونی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب تک کسانوں کے تمام مطالبات حل نہیں ہوجاتے احتجاج جاری رہے گا۔ کسان لیڈر نے کہا کہ ‘حکومت اتفاق رائے سے کوئی راستہ نکالنا چاہیے ، کسانوں سے بات کرنی چاہیے ۔  

کسانوں کی آج کی میٹنگ منسوخ، سنیکت مورچہ کا اجلاس4 دسمبر کو

نئی دہلی//یو این آئی// کسانوں کے مطالبات پر گزشتہ ایک برس سے دہلی کی سرحد پر احتجاج کر رہیں کسان تنظیموں کی میٹنگ بدھ کو ملتوی کر دی گئی۔ کسان لیڈر راکیش ٹکیت نے بتایا کہ چھوٹی چھوٹی میٹنگیں ہوتی رہتی ہیں لیکن آج کوئی میٹنگ نہیں ہے ۔مسٹر ٹکیت نے کہا کہ کسان تنظیموں کی میٹنگ 4 دسمبر کو ہونی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب تک کسانوں کے تمام مطالبات حل نہیں ہوجاتے احتجاج جاری رہے گا۔ کسان لیڈر نے کہا کہ ‘حکومت اتفاق رائے سے کوئی راستہ نکالنا چاہیے ، کسانوں سے بات کرنی چاہیے ۔  

تازہ ترین