تازہ ترین

کورونا کا بڑھتا قہر | ملک میں4971اموات،1لاکھ73ہزار سے زائد متاثر

نئی دہلی//ملک میں کورونا وائرس (کووڈ 19) کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہاہے اور گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران انفیکشن کے 7964 نئے کیسز درج کئے گئے ہیں اور 265 افراد کی اس بیماری سے موت ہوئی ہے۔مرکزی صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت کی جانب سے ہفتہ کو جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں اس کے انفیکشن سے اب تک 1لاکھ73ہزار763لوگ متاثر ہوئے ہیں اور 4971 افراد کی موت پوچکی ہے ۔ مہاراشٹرمیں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 2682 نئے کیسز سامنے آئے ہیں اور 116 افراد کی موت ہوئی ہے جس کے ساتھ ہی ریاست میں اس سے متاثر ہونے والے افراد کی کل تعداد بڑھ کر 62 ہزار 228اور اس جان لیوا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 2098ہو گئی ہے ۔ اس دوران ریاست میں ریکارڈ 8381لوگ شفایاب ہوئے ہیں جس سے صحت مند ہونے والوں کی کل تعداد 26997و گئی ہے ۔کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے معا

مودی حکومت کے6سال بے رحم ثابت ہوئے :کانگریس

نئی دہلی// کانگریس نے الزام لگایا ہے کہ مودی حکومت کے چھ سال کی میعادکار میں ملک کو صرف سبز باغ دکھائے گئے اور مٹھی بھر امیروں کی تجوری بھر کر غریبوں کا استحصال کیا گیا ، لوگ بے بسی سے دیکھتے رہے اور حکومت بے رحمانہ طریقے سے کارم کرتی رہی۔کانگریس کے سکریٹری جنرل کے سی وینوگوپال اور میڈیا انچارج رندیپ سرجے والانے جمعرات کویہاں نامہ نگاروں کی کانفرنس میں مودی حکومت کے چھ سال کے کام کاج کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت نے کم از کم ایڈمنسٹریشن اور زیادہ سے زیادہ گورننس کا دعوی کیا تھا لیکن وہ اس کے ٹھیک برعکس ثابت ہوئی ہے جس میں ملک کی عوام پوری طرح سے بے بس اور حکومت بے رحم بنی رہی۔انہوں نے کہاکہ اس دوران دنیا نے مودی کے ذریعہ لائے گائے انسانی ٹریجڈی اور بغیر سوچے سمجھے لگائے گئے لاک ڈاؤن کی وجہ سے لوگوں کی حالت دیکھی ہے ۔ مودی حکومت نے انسانی ٹریجڈی کو پہلے نوٹ بندی کے طور پر پیش کیا

تاریخی غلطیوں کوسدھار کر خودانحصارہندوستان کی بنیاد رکھی :امیت شاہ

نئی دہلی//مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ نے سنیچرکو کہا ہے کہ مودی حکومت نے اپنے گزشتہ چھ برسوں کے میعادکار میں تاریخی غلطیوں کو ٹھیک کرنے کے ساتھ ساتھ خودانحصاری ہندوستان کی بنیاد رکھی ہے ۔مسٹر شاہ نے حکومت کے ایک برس کی مدت پوری ہونے کے موقع پر عوام کو ملک کی ترقی میں شراکت دار قرار دیتے ہوئے حکومت پر یقین کرنے کے لئے ان کا شکریہ ادا کیا۔وزیرداخلہ نے سلسلہ وار ٹوئٹ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے کارکنوں کو بھی شکریہ ادا کیا ہے ۔ انہوں نے لکھا ہے کہ ‘‘مودی جی نے ان چھ برسوں کے میعادکار میں نہ صرف کئی تاریخی غلطیوں کو درست کیا ہے بلکہ چھ عشروں کی کھائی کو پاٹ کرترقی کی شاہراہ پر گامزن ایک خودانحصار ہندوستان کی بنیاد رکھی ہے ۔’’یہ چھ برسوں کی مدت ‘غریبوں کی فلاح وبہبود اور اصلاحات’ کی متوازی رابطہ کی ایک غیر معمولی مثال ہے ۔ ایماندار قیادت اور غیر معمولی محنت ک

نوازشریف ایٹمی دھماکوں کیخلاف تھے: شیخ رشید

لاہور// پاکستان میں وزیر ریلوے شیخ رشید نے دعویٰ کیا ہے کہ نوازشریف سمیت پوری کابینہ ایٹمی دھماکے کیخلاف تھی۔لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں قوم کو بتانا چاہتا ہوں کہ اس وقت نوازشریف اور ان کی پوری کابینہ ایٹمی دھماکوں کے خلاف تھی، راجا ظفر الحق، گوہر ایوب اور میں نے ایٹمی دھماکوں کی حمایت کی۔شیخ رشید نے انکشاف کیا کہ وہ آج کل ایک کتاب بھی لکھ رہے ہیں، ساتھ ہی ان کا کہنا کہ جب جوہری حوالے سے ڈاکٹر عبدالقدیر کے خلاف مسائل پیدا ہوئے تو میں واحد شخص اور سیاسی ورکر تھا جو ایران گیا جبکہ کرنل قذافی سے بھی میں نے ہی ملاقات کی تھی۔ایک سوال کے جواب میں وزیر ریلوے نے کہا کہ ’جب سے میں پیدا ہوا ہوں میرے پیچھے ایجنسیز لگی رہتی ہیں لیکن ایجنسیوںسےمجھے خوشی ہوتی ہے‘۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کورونا کے بعد دنیا میں بہت کشیدگی پیدا ہونے کے امکان ہیں ج

ملک میں کورونا وائرس کے 7964 نئے کیس،متاثرین کی تعداد1,73,763

نئی دہلی// ملک میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہاہے اور گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران انفیکشن کے 7964 نئے کیس درج کئے گئے ہیں اور 265 افراد کی اس بیماری سے موت ہوئی ہے لیکن راحت کی بات یہ ہے کہ اس مدت میں صحت مند ہونے والوں کی تعداد میں بھی زبردست اضافہ ہوا ہے اور 11،264 مریض شفایاب ہوئے ہیں۔ مرکزی صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت کی جانب سے ہفتہ کو جاری تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں اس کے انفیکشن سے اب تک 1,73,763لوگ متاثر ہوئے ہیں اور 4971 افراد کی موت پوچکی ہے۔ ملک میں 82،370 لوگ اس بیماری سے نجات حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں اور اب یہاں کورونا وائرس انفیکشن کے 86 ہزار 422فعال معاملے ہیں۔ اس وبا سے ملک میں سب سے زیادہ متاثر ریاست مہاراشٹر ہوا ہے۔ ریاست میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں 2682 نئے کیس سامنے آئے ہیں ا

ملک میں کورونا کا بڑھتا پھیلائو | 24گھنٹوں میںساڑھے7ہزار نئے معاملے سامنے | 4706 اموات ،متاثرین کی تعداد ایک لاکھ65ہزار کے پار

نئی دہلی//ملک میں کورونا وائرس (کوویڈ 19) متاثرین کی تعداد ہرروز بڑھنے کی وجہ سے اس وبا کی خطرناک شکل بڑھتی جارہی ہے اورپچھلے 24 گھنٹوں کے دوران انفیکشن کے ریکارڈ 7466 نئے معاملے سامنے آنے سے مریضوں کی کُل تعداد 1,65,799 پر پہنچ گئی ہے اور اس مدت میں 175 لوگوں کی موت ہوئی ہے ۔پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے مختلف حصوں میں اس سے متاثر 3414 لوگ ٹھیک ہوئے ہیں جس سے ٹھیک ہوئے لوگوں کی کل تعداد 71,106 ہوگئی ہے ۔مرکزی صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت کی جانب سے جمعہ کو جاری کئے گئے اعدادو شمار کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام ریاستوں میں اب تک اس سے 1,65,799 لوگ متاثر ہوئے ہیں اور 4706 لوگوں کی موت ہوئی ہے ۔ملک میں فی الحال کورونا کے کل89987 فعال معاملے ہیں۔ملک میں بدھ کو اور منگل کو نئے معاملوں میں کمی دیکھی گئی تھی۔بدھ کو 6387 اور منگل کو 6535 نئے معاملے سامنے آئے تھے ا

بیمار، بزرگ، بچے، حاملہ خواتین غیر ضروری سفر سے بچیں:بھارتی ریلوے

نئی دہلی// انڈین ریلوے نے ہائی بلڈ پریشر، ذیابیطس، کینسر، امراض قلب جیسی بیماریوں میں مبتلا افراد، حاملہ خواتین، دس برس سے کم عمر کے بچوں اور بزرگوں کو اشد ضروری نہ ہونے پر شرمک اسپیشل اور دیگر خصوصی ٹرینوں میں سفر سے بچنے کی اپیل کی ہے ۔ریلوے کی وزارت نے کل یہاں جاری ایک پیغام میں کہا کہ ہندوستانی ریلوے ، ملک بھر میں روزانہ کئی اسپیشل ٹرینیں چلا رہا ہے ، تاکہ مہاجر مزدوروں کی اپنے گھروں کو واپسی یقینی بنائی جا سکے ۔ ایسا دیکھا جا رہا ہے کہ کچھ ایسے لوگ بھی اسپیشل ٹرینوں میں سفر کر رہے ہیں جو پہلے سے ہی ایسی بیماریوں میں مبتلا ہیں جس میں کووڑ -19 وبا کے دوران ان کی صحت کو خطرہ لاحق ہوجاتا ہے ۔ سفر کے دوران پہلے سے بیماریوں میں مبتلا افراد کی اموات کے کچھ افسوسناک معاملے سامنے آئے ہیں۔ریلوے کی وزارت نے کہا کہ ایسے کچھ لوگوں کی حفاظت کی خاطر ریلوے کی وزارت اپیل کرتی ہے کہ پہلے سے ہائی ب

چینی سرحد تناؤ پرحکومت کی خاموشی خطرناک: راہل گاندھی

نئی دہلی//کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے چین کی سرحد پر تناؤ کے حالات کے سلسلے میں حکومت کی خاموشی کو خطرناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ ملک  میںبڑے پیمانے پر قیاس آرائیاں اور غیریقینی صورتحال کو تقویت مل رہی ہے ۔راہل گاندھی نے جمعہ کو ٹویٹ کرکے کہاکہ ’بحران کے اس دور میں چین کی سرحد کے حالات کے سلسلے میں حکومت کی خاموشی سے قیاس آرائیاں زور پکڑ رہی ہیں اور بے یقینی کا ماحول بنا ہوا ہے۔حکومت کو ملک کے عوام کو صاف صاف بتانا چاہئے کہ سرحد پر ہوکیا رہا ہے انہوں نے ٹوئٹ کر کے کہا کہ’چین کے ساتھ سرحد پر حالات کو لے کر حکومت کی خاموشی سے بحران کے وقت بڑے پیمانے پر قیاس آرائیاں اور غیریقینی صورتحال کو تقویت مل رہی ہے’۔ راہل گاندھی نے کہاکہ’حکومت کو سامنے آکر واضح کرنا چاہئے اور جو ہو رہا ہے، اس کے بارے میں ہندوستان کو بتانا چاہئے’۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو

دنیا کی سب سے بڑی ٹیسٹنگ لبارٹری بھارت میں تیار ہوگی

نئی دہلی//انڈین ٹیکنالوجی انسٹی ٹیوٹ (آئی آئی ٹی) کے سابق طالب علموں نے کورونا وبا (کووڈ -19) کے متاثرین کی جانچ کے لئے دنیا کی سب سے بڑی ٹیسٹنگ لیب تیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔آئی آئی ٹی ایلومنائی کونسل نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ وہ ممبئی میں کورونا کے ٹیسٹ کے لئے ایک میگا لیب بنائے گی جس کے ذریعہ ہر ماہ ایک کروڑ لوگوں کا ٹیسٹ کیا جاسکے گا۔ کونسل کے صدر روی شرما نے یہاں ایک بیان میں کہا کہ دنیا میں کورونا کا ٹیکہ تیار کرنے کی کوششیں جاری ہیں لیکن کونسل نے وائرس کے ماہرین سے رابطہ کرکے یہ فیصلہ کیا ہے کہ ممبئی میں ایک بہت بڑی لیب بنائی جائے ۔ اس کے لئے گلوبل پارٹنرس تلاش اور انہیں مدعو کیا جا رہا ہے ۔ آئی آئی ٹی کے تقریباً ایک ہزار سابق طالب علم دنیا بھر میں اپنی سطح پر کوششیں کرکے اس خاص پروجیکٹ کو پورا کرنے میں مصروف ہیں۔ اس لیب میں روبوٹ ٹیکنالوجی کااستعمال کیا جائے گا اور دیگر متعد

مودی اور ٹرمپ کے درمیان دو ماہ سے کوئی رابطہ نہیں ہوا: حکومت

نئی دہلی//ہندوستان نے واضح کیا ہے کہ ہندوستان ۔چین سرحد تنازعہ کے سلسلے میں وزیراعظم نریندرمودی اور امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان کوئی بات چیت نہیں ہوئی ہے اور اس مسئلے پر ہندوستان براہ راست چین کے سفیر اور دیگر موجودہ نظام کے ذریعہ سے مسلسل رابطے میں ہے۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ مودی اور صدر ٹرمپ کے درمیان حال ہی میں کوئی رابطہ نہیں ہوا ہے۔دونوں لیڈروں کے درمیان بات چیت گزشتہ چار اپریل کو ہائی ڈروکسیکلوروکوین کی سپلائی کے سلسلے میں ہوئی تھی۔ وزارت خارجہ نے یہ بھی کہا کہ حقیقی کنٹرول لائن کے سلسلے میں جاری تنازع کے حل کےلئے ہندوستان براہ راست چین کے سفیر اور دیگر موجودہ نظام کے ذریعہ سے مسلسل رابطے میں ہے۔ امریکی صدر ٹرمپ نے ہندوستان اور چین کے درمیان ثالثی کرنے کی پیش کش کی ہے۔ ٹرمپ نے کل وائٹ ہاو¿س میں ایک پریس بریفنگ میں کہاکہ انہوں نے وزیراعظم مسٹر مودی سے با

ملک میں کورونا کے سب سے زیادہ ساڑھے سات ہزار متاثرین کا اضافہ

نئی دہلی//ملک میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد ہرروز بڑھنے کی وجہ سے اس وبا کی خطرناک شکل بڑھتی جارہی ہے اورپچھلے 24 گھنٹوں کے دوران انفیکشن کے ریکارڈ 7466 نئے معاملے سامنے آنے سے مریضوں کی ک±ل تعداد 1,65,799 پر پہنچ گئی ہے اور اس مدت میں 175 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے مختلف حصوں میں اس سے متاثر 3414 لوگ ٹھیک ہوئے ہیں جس سے ٹھیک ہوئے لوگوں کی کل تعداد 71,106 ہوگئی ہے۔ مرکزی صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت کی جانب سے جمعہ کو جاری کئےگئے اعدادو شمار کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام ریاستوں میں اب تک اس سے 1,65,799 لوگ متاثر ہوئے ہیں اور 4706 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ملک میں فی الحال کورونا کے کل 89987 فعال معاملے ہیں۔ملک میں بدھ کو اور منگل کو نئے معاملوں میں کمی دیکھی گئی تھی۔بدھ کو 6387 اور منگل کو 6535 نئے معاملے سامنے ا?ئے تھ

ملک میں 4531 اموات ،1.58 لاکھ متاثر

نئی دہلی//ملک میں دو دن تک کورواناوائرس (کووڈ 19) سے انفیکشن کے نئے معاملوں میں جزوی کمی کے بعد گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ایک بار پھر اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور 6566 نئے معاملات کے ساتھ متاثرین کی کل تعداد 158333 تک پہنچ گئی اور اس مدت میں 194 لوگوں کی موت کے ساتھ مرنے والوں کی تعداد 4531 تک پہنچ گئی ہے ۔گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے مختلف حصوں میں اس سے متاثرہ 3266 لوگ ٹھیک ہوئے ہیں جس سے صحت مند ہوئے لوگوں کی کل تعداد 67692 ہو گئی ہے ۔صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کی جانب سے جمعرات کو جاری کئے گئے اعداد و شمار کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے علاقے میں اب تک اس سے 158333 لوگ متاثر ہوئے ہیں اور 4531 لوگوں کی موت ہوئی ہے ۔ ملک میں فی الحال کورواناکے کل 86110 فعال معاملے ہیں۔ ملک میں بدھ اور منگل کو نئے معاملات میں کمی دیکھی گئی تھی۔ بدھ کو 6387 اور منگل کو 6535 نئے کی

بجلی کے شعبے میں آپریٹنگ کارکردگی بڑھانے کی ضرورت : مودی

نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی نے بجلی کے شعبے میں آپریٹنگ کارکردگی بڑھانے کی ضرورت بتاتے ہوئے صارفین کے اطمینان کو زیادہ سے زیادہ اہمیت دینے کو کہا ہے ۔مسٹر مودی نے ایک اجلاس میں بجلی کی وزارت اور جدید اور قابل تجدید توانائی کی وزارت کے کام کاج کا جائزہ لینے کے دوران یہ بات کہی۔ اجلاس میں بجلی کے شعبے کی اہم مسائل کے حل کے لئے مختلف پالیسی اقدامات پر تبادلہ خیال کیا گیا جن میں نظر ثانی ٹیرف پالیسی اور بجلی (ترمیمی) بل 2020 شامل ہیں۔وزیر اعظم نے بجلی کے شعبے کی آپریشنل کارکردگی میں اضافہ کو یقینی بناتے ہوئے صارفین کے اطمینان میں اضافہ کی ضرورت پر خصوصی زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ بجلی سیکٹر، خاص طور پر بجلی کی ترسیل کے شعبے میں جو مسائل ہیں وہ سب کے سب علاقوں اور ریاستوں میں ایک جیسے نہیں ہیں۔ لہذا وزارت کو تمام ریاستوں کے لئے ٹھیک ایک جیسا ہی حل تلاش کرنے کے بجائے ہر ریاست کو بہتر کارک

۔541 غیرملکی تبلیغی اراکین کے خلاف چارج شیٹ دائر

 نئی دلی // دلی پولیس نے جمعرات کونئی دلی کے نظام الدین مرکز میں مذہبی اجتماعات میں شرکت کے لیے آئے541 غیرملکی تبلیغی شرکا کے خلاف ویزا شرائط کی خلاف ورزی اور ’مشنری سرگرمیوں‘ میں ملوث ہونے کے الزام میں مجموعی طور پر 47 چارج شیٹ داخل کردیں۔پولیس نے چارج شیٹ میڑوپالٹین مجسٹریٹ کے سامنے داخل کی ۔جن ممالک کے افراد کے خلاف چارج شیٹ داخل کی گئی ان میں ملیشیا کے 42، قازقستان کے85اور انڈونیشا کے 414شہری شامل ہیں۔چارج شیٹ کے مطابق تمام غیر ملکی شہریوں پر ویزا قوانین کی خلاف ورزی، کورونا وائرس وبائی مرض کے عدم پھیلاؤ کے لیے جاری کیے گئے ہدایات اور وبائی امراض ایکٹ، ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کی دفعہ 144 کی خلاف وزری پر مقدمہ درج کیا گیا۔اس ضمن میں مرکزی سرکار نے غیرملکی تبلیغی شرکا کے ویزا منسوخ کرکے ان کو بلیک لسٹ کردیا۔ابھی تک پولیس نے 915غیر ملکیوں کے خلاف47چارج شیٹ داخل کئے ہیں

مہاجر مزدوروں سے کرایہ نہ لیا جائے

نئی دہلی// سپریم کورٹ ملک بھر لاک ڈاؤن کے دوران ملک کے مختلف حصوں میں پھنسے مزدوروں کو ان کے گھروں تک پہنچانے کے لیے ریاستی حکومتوں کو کرایہ برداشت کرنے اور کھانے پینے کی سہولت فراہم کرنے سمیت کئی عبوری احکامات جمعرات کو جاری کئے ۔جسٹس اشوک بھوشن، جسٹس سنجے کشن کول اور جسٹس ایم آر شاہ کی بینچ نے مرکزی حکومت اور مختلف ریاستی حکومتوں اور کچھ مداخلت کاردرخواست گزاروں کی جانب سے پیش وکلاء کی دلیلیں سننے کے بعد اہم ہدایات جاری کئے ۔عدالت نے کہا کہ ملک کے مختلف حصوں میں پھنسے تارکین وطن محنت کشوں کو ان کے گھر تک پہنچانے کے لئے ان سے نہ تو ریل کا کرایہ لیا جائے گا، نہ ہی بس کرایہ۔عدالت نے کہا کہ ان مزدوروں کے کرایہ پر آنے والا خرچ متعلقہ ریاستوں کی طرف سے اشتراک کیا جائے گا۔اتنا ہی نہیں، مختلف مقامات پر پھنسے ہوئے مزدوروں کو متعلقہ ریاست یا مرکز کے زیر انتظام صوبہ کھانے پینے کی سہولت فراہم کر

حکومت خزانہ کھول کر غریبوں کو راحت دے : سونیا

نئی دہلی// کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے روزی روٹی نہ ملنے سے لاکھوں تارکین وطن کارکنوں کے بھوکے پیٹ اور ننگے پاؤں سینکڑوں کلومیٹر پیدل چل کر اپنے گھر جانے کا منظر ملک نے دیکھا ہے اور یہ سلسلہ تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے اس لئے حکومت کو ہر حال میں خزانے کا تالا کھول کر غریبوں کو راحت دینی چاہئے ۔محترمہ سونیا گاندھی نے جمعرات کو یہاں جاری ایک ویڈیو پیغام میں کہا کہ ان کے تمام ساتھیوں کے ساتھ ہی ماہرین اقتصادیات، ماہرین سماجیات اور معاشرے کے معروف لوگوں نے بار بار حکومت سے ان متاثرین کو راحت دینے اور ان کے زخموں پر مرہم لگانے کی اپیل کی ہے اور کہا ہے کہ لاک ڈاؤن سے مزدور، کسان، صنعت کار اور چھوٹے دکاندار سب متاثر ہیں اور ان کی مدد کی جانی چاہئے لیکن مرکزی حکومت نے یہ بات سمجھنے اور اس پر توجہ دینے سے انکار کیا ہے اور ان کے زخموں کو اور گہرا کردیاہے ۔انہوں نے

ملک میں کورواناانفیکشن کے نئے معاملوں مں پھر اضافہ، متاثرین کی تعداد 1.58 لاکھ

نئی دہلی// ملک میں دو دن تک کورواناوائرس سے انفیکشن کے نئے معاملوں میں جزوی کمی کے بعد گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ایک بار پھر اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور 6566 نئے معاملات کے ساتھ متاثرین کی کل تعداد 158333 تک پہنچ گئی اور اس مدت میں 194 لوگوں کی موت کے ساتھ مرنے والوں کی تعداد 4531 تک پہنچ گئی ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک کے مختلف حصوں میں اس سے متاثرہ 3266 لوگ ٹھیک ہوئے ہیں جس سے صحت مند ہوئے لوگوں کی کل تعداد 67692 ہو گئی ہے۔ صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کی جانب سے جمعرات کو جاری کئے گئے اعداد و شمار کے مطابق ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے علاقے میں اب تک اس سے 158333 لوگ متاثر ہوئے ہیں اور 4531 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ ملک میں فی الحال کورواناکے کل 86110 فعال معاملے ہیں۔ ملک میں بدھ اور منگل کو نئے معاملات میں کمی دیکھی گئی تھی۔ بدھ کو 6387 اور منگل کو 6535 نئے کیس

کورونا کا قہر | ملک میں4337اموات ، ڈیڑھ لاکھ سے زائد متاثر

نئی دلی // ملک کی مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام خطوں میں اب تک کورونا وائرس سے 151767 لوگ متاثر ہوئے ہیں اور 4337 لوگوں کی موت ہوئی ہے ۔ ملک میں فی الحال کوروناکے کل 83004 فعال معاملے ہیں۔ اس سے ایک دن پہلے 6535، پیر کو 6977 اور اتوار اور ہفتہ کو بالترتیب 6767 اور 6654 نئے کیس سامنے آئے تھے ۔ مہاراشٹر اس وبا سے ملک میں سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے ۔ اس ریاست میں کورونانے کافی تباہی برپاکی ہے ۔ مہاراشٹر میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 2091 نئے کیس سامنے آئے ہیں۔ اس کے بعد ریاست میں اب تک اس سے متاثر ہونے والے لوگوں کی تعداد بڑھ کر 54758 ہو گئی ہے ۔ ریاست میں اس جان لیوا وائرس سے اب تک 1792 افراد ہلاک ہوئے ہیں اور 16954 اس انفیکشن سے ٹھیک ہوئے ہیں۔کوروناوائرس سے متاثر ہونے کے معاملے میں تامل ناڈو دوسرے نمبر پر ہے ۔ تمل ناڈو میں اب تک 17728 لوگ اس سے متاثرہ ہوئے ہیں اور 127 اموات ہوئی ہے

تبلیغی جماعت سے متعلق جعلی خبروں پرسپریم کورٹ برہم

 نئی دلی //تبلیغی جماعت اور کورونا وائرس کو لے کر بے بنیاد خبریں نشر کرنے اور نفرت انگیزی پھیلانے کے معاملے کو لیکر جمعتہ علماء  ہند کی جانب سے داخل کی گئی عرضی پر سپریم کورٹ نے حکومت اور پریس کونسل آف انڈیا کو نوٹس جاری کیا ہے۔  چیف جسٹس آف انڈیا اے ایس بوبڑے، جسٹس اے ایس بوپننا اور جسٹس رشی کیش رائے پر مشتمل تین رکنی بینچ کو سینئر ایڈوکیٹ دوشینت دوے (صدر سپریم کورٹ بارایسوسی ایشن) نے بتایا کہ تبلیغی مرکز کو بنیاد بناکر پچھلے دنوں میڈیا نے جس طرح اشتعال انگیز مہم شروع کی یہاں تک کہ اس کوشش میں صحافت کی اعلیٰ اخلاقی قدروں کو بھی پامال کردیا گیا۔ اس سے مسلمانوں کی نہ صرف یہ کہ سخت دل آزاری ہوئی ہے بلکہ ان کے خلاف پورے ملک میں منافرت میں اضافہ ہوا ہے۔ اس لئے اس معاملے میں واجب کارروائی ہونی چاہئے۔سپریم کورٹ نے اس معاملے میں پریس کونسل آف انڈیا اور اور حکومت سے جواب طلب

تبلیغی جماعت سے متعلق جعلی خبروں پرسپریم کورٹ برہم

 نئی دلی //تبلیغی جماعت اور کورونا وائرس کو لے کر بے بنیاد خبریں نشر کرنے اور نفرت انگیزی پھیلانے کے معاملے کو لیکر جمعتہ علماء  ہند کی جانب سے داخل کی گئی عرضی پر سپریم کورٹ نے حکومت اور پریس کونسل آف انڈیا کو نوٹس جاری کیا ہے۔  چیف جسٹس آف انڈیا اے ایس بوبڑے، جسٹس اے ایس بوپننا اور جسٹس رشی کیش رائے پر مشتمل تین رکنی بینچ کو سینئر ایڈوکیٹ دوشینت دوے (صدر سپریم کورٹ بارایسوسی ایشن) نے بتایا کہ تبلیغی مرکز کو بنیاد بناکر پچھلے دنوں میڈیا نے جس طرح اشتعال انگیز مہم شروع کی یہاں تک کہ اس کوشش میں صحافت کی اعلیٰ اخلاقی قدروں کو بھی پامال کردیا گیا۔ اس سے مسلمانوں کی نہ صرف یہ کہ سخت دل آزاری ہوئی ہے بلکہ ان کے خلاف پورے ملک میں منافرت میں اضافہ ہوا ہے۔ اس لئے اس معاملے میں واجب کارروائی ہونی چاہئے۔سپریم کورٹ نے اس معاملے میں پریس کونسل آف انڈیا اور اور حکومت سے جواب طلب