تازہ ترین

ملک میں کورونا انفیکشن کے 6.97 لاکھ کیس ، دنیا میں تیسرے نمبر پر

نئی دہلی// گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ، کورونا انفیکشن کی بڑھتی ہوئی شدت کی وجہ سے ملک میں 24 ہزار سے زیادہ نئے کیس سامنے آئے ہیں اور اب انفیکشن سے متاثرہ ممالک کی فہرست میں ہندوستان تیسرے نمبر پر آگیا ہے۔ مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود کی پیر کے روز جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، ملک بھر میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا انفیکشن کے 24248 نئے کیسز سامنے آئے ہیں ، جن میں انفیکشن کی کل تعداد 697413 ہوگئی ہے۔ اسی مدت کے دوران کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاکتوں کی تعداد 19693 ہوگئی ہے۔ دریں اثنا ، انفیکشن سے نجات پانے والوں کی تعداد میں بھی مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ، 15350 مریض صحت مند ہوگئے ہیں ، جنہیں ملاکر اب تک ک±ل 424433افراد اس بیماری سے ٹھیک ہوچکے ہیں۔ ملک میں اس وقت کورونا انفیکشن کے 253287 فعال معاملے ہیں۔  

کوروناوائرس کی تباہ کاریاں جاری | ملک میں 4 لاکھ سے زائد مریض ٹھیک ہوگئے ، شرح 60.77فیصد

نئی دہلی// ملک میں کورونا وائرس کووڈ۔19 سے ٹھیک ہونے والے مریضوں کی تعداد اب چار لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جس کی وجہ سے ٹھیک ہونے والے مریضوں کی شرح بڑھ کر 60.77 ہوگئی ہے ۔وزارت صحت وخاندانی فلاح وبہبود نے اتوار کو بتایا کہ ملک میں فی الحال کورونا انفیکشن کے 2,44,814 معاملے ہیں۔ 4,09,082 کورونا سے متاثر مریض اب پوری طرح ٹھیک ہوچکے ہیں جس سے انفیکشن سے ٹھیک ہونے والوں کی شرح 60.77 فیصد ہوگئی ہے ۔گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 14,856 کورونا سے متاثر مریض ٹھیک ہوگئے ہیں۔ انفیکشن سے ٹھیک ہونے والے معاملوں کا تناسب بڑھ کر اب 1,64, 268ہوگیا ہے ۔ حالانکہ گزشتہ تین دنوں سے ملک میں روزانہ 20,000 ہزار سے زیادہ لوگ کورونا سے متاثر ہورہے ہیں۔کورونا انفیکشن کے مریضوں کی جانچ کرنے والے لیبوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے جس کے بعد لیبوں کی تعداد 1,100 ہوگئی ہے جس سے نمونوں کی جانچ کی رفتار میں تیزی آ

وینٹی لیٹروں کی خریداری میں بڑے پیمانے پر دھاندلی ہوئی: کانگریس

نئی دہلی// کانگریس نے الزام لگایا کہ حکومت نے وینٹی لیٹروں کی خریداری میں بڑے پیمانہ پر گڑبڑی کی ہے اور کورونا وبا کے دور میں ملک کے عوام کے ساتھ دھوکہ کیا ہے۔کانگریس کے ترجمان گورو ولبھ نے اتوارکو یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ ملک میں کورونا متاثرین کی تعدادا چھ لاکھ 73ہزار سے زیادہ ہوچکی ہے۔ وبا کا قہر اتنا زیادہ ہے کہ گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں ریکارڈ تعداد میں اس بیماری سے لوگوں کی موت ہوئی ہے اور مرنے والوں کی تعداد 20ہزارکے قریب پہنچ گئی ہے۔انہوں نے کہاکہ پبلک سیکٹر کی کمپنیوں نے وزیراعظم کیئر فنڈ میں پیسہ ڈالا ہے اور 31مارچ کو چالیس ہزار وینٹی لیٹروں کی خریداری کا حکومت نے آرڈر دیا لیکن اسے اب بتانا چاہئے کہ کیا اس فنڈ سے یہ وینٹی لیٹر خریدے گئے۔  

مساجد کو پھر سے بند کرنے پر غورکیا جارہا ہے :شاہی امام

نئی دہلی// دہلی کی تاریخی جامع مسجد کے شاہی امام سید احمد بخاری نے راجدھانی میں کورونا کے تیزی سے بڑھتے معاملوں کے پیش نظر مسجدوں کو پھر سے بند کرنے پر غور کرنے کے لئے لوگوں سے مشورے طلب کئے گئے ہیں۔امام بخاری نے بدھ کو ایک آڈیو جاری کرکے دہلی میں کورونا کے تیزی سے پھیلنے پر اپنی فکرمندی کا اظہار کرتے ہوئے لوگوں کو بغیر کسی وجہ سے باہر گھومنے سے بچنے کی اپیل کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے آنے والے دنوں میں جس طرح کورونا کے معاملوں میں اضافہ ہونے کے خدشے کا اظہار کیا گیا ہے اور موجودہ وقت میں جس طرح کی خبریں آرہی ہیں وہ ڈرانے والی ہیں۔ جامع مسجد سمیت دیگر مسجدوں کولاک ڈاؤن کی طرح ہی بند کرنے کے لئے لوگوں سے رائے طلب کی گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ بہت سارے لوگ ان کے پاس فون کرکے اسپتالوں میں بھرتی کروانے کے لئے مدد کی اپیل کررہے ہیں لیکن اسپتالوں میں جگہ نہیں ہونے کی وجہ سے وہ کس

راہل گاندھی کی انتخاب منسوخ کرانے سے متعلق درخواست کی سماعت ملتوی

نئی دہلی// سپریم کورٹ نے 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں کیرالہ کی وائناڈ سیٹ سے کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کی جیت کو چیلنج کرنے والی درخواست کی سماعت بدھ کو دو ہفتے کے لئے ملتوی کر دی۔کانگریس لیڈر کے خلاف الیکشن لڑنے والی اور سولر گھپلے کی ملزم سریتا ایس نائر نے گاندھی کے انتخابی کو چیلنج کیا ہے ۔چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے ، جسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس ہری کیش رائے کی بینچ نے سماعت ملتوی کرنے کی درخواست والا خط موصول ہونے کے بعد معاملے کی سماعت دو ہفتے کے لئے ملتوی کردی۔  

مودی نے کیدارناتھ دھام منصوبے کا جائزہ لیا

نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی نے اتراکھنڈ حکومت کے ساتھ ویڈیو کانفرنس کے ذریعے کیدارناتھ دھام ترقیاتی اورتعمیر نو منصوبے کے کام کا جائزہ لیا۔ مودی نے کیدارناتھ دھام کے تعمیر نوپر اپنا نقطہ نظر رکھتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت کو کیدارناتھ اور بدری ناتھ جیسے مقامات کی ترقی اس طرح کرنا چاہئے کہ یہ مستقبل کی کسوٹی پر کھرا اترے اور ساتھ ہی اس ماحول اور آس پاس کے قدرتی چیزوں کو نقصان نہ پہنچے ۔وزیر اعظم نے مشورہ دیا کہ موجودہ صورت حال کو ذہن میں رکھتے ہوئے اور سیاحوں اور یاتریوں کی کم تعداد کے پیش نظر اس وقت کا استعمال تمام زیر التواء کاموں کو پورا کرنے کے لئے کیا جانا چاہئے ۔ کام کے دوران سماجی فاصلے کے اصول کی سختی سے استعمال کیا جانا چاہئے ۔انہوں نے رام بن سے لے کر کیدارناتھ تک دیگر وراثت اور مذہبی مقامات کی ترقی کے بارے میں بھی ہدایات دی۔  

تازہ ترین