کسانوں نے لال قلعہ پر اپنا جھنڈا لہرایا

نئی دہلی//کسانوں کی ٹریکٹر ریلی کے دوران مکربا چوک، ٹرانسپورٹ نگر، آئی ٹی او اوراکشردھام سمیت دیگرمقامات پر ہوئے تصادم کے درمیان کسانوں کا ایک جتھا لال قلعہ احاطے میں پہنچ کر کسانوں کا جھنڈا لہرادیا ہے۔ آئی ٹی او پر ٹکراو کے دوران بڑی تعداد میں کسانوں نے لال قلعہ احاطہ میں داخل ہوکر اپنا جھنڈا لہرادیا۔ پندرہ اگست کو جس مقام پر جھنڈا لہرایا جاتا ہے اس کے پاس ہی کسانوں نے اپنا پرچم لگادیا۔ سنگھو بارڈر سے بیریکیٹ توڑ کر آگے بڑھے کسانوں کا ٹرانسپورٹ نگر اور مکربا چوک پر ٹکراوکے بعد آئی ٹی او پر زبردست تصادم ہوا۔ پولیس نے کسانوں کی بھیڑ کو انڈیا گیٹ کی طرف بڑھنے سے روکنے کے لئے آنسو گیس کے گولے داغے اورلاٹھی چارج کیا۔ آئی ٹی او پر شدید ٹکراو میں کئی کسانوں کے ساتھ پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے ہیں۔ فی الحال آئی ٹی او پر صورت حال قابو میں ہے۔ کسان مظاہرے کے پیش نظر سمئے پوربادلی، حی

کسانوں کی ٹریکٹر ریلی دہلی میں داخل، پولیس کے ساتھ تصادم آرائیاں

نئی دہلی// مرکزی حکومت کے تین زرعی قوانین کے خلاف تحریک چلانے والے کسان ٹریکٹر ریلی کے ساتھ زبردستی آئی ٹی او پہنچ گئے جہاں پر ان کے اور پولیس کے درمیان زبردست تصادم ہوااور پولیس نے لاٹھی چارج کیا اور آنسو گیس کے گولے داغے۔ اس سے پہلے کسان سنگھو بارڈر،غازی پور بارڈر سمیت کئی بارڈر پر بیریکیڈ توڑ کر دہلی میں گھسے۔اس دوران مکربا چوک،ٹرانسپورٹ نگر،نوئیڈا موڑ،اکشر دھام پر ان پولیس کے ساتھ تصادم ہوا۔ مظاہرین کو روکنے کےلئے پولیس نے آنسو گیس کے گولے داغے اور لاٹھیاں چلائیں لیکن کسان تصادم کے ساتھ آگے بڑھتے گئے۔آئی ٹی او کے پاس بڑی تعداد میں کسان ٹریکٹر کے ساتھ جمع ہوکر انڈیا گیٹ کی طرف بڑھنے لگے۔ پولیس نے مظاہرین کو روکنے کی کوشش کی لیکن وہ نہیں رکے۔ انہیں روکنے کےلئے پولیس نے لاٹھی چارج کی اور آنسو گیس کے گولے چھوڑے۔ دہلی کے الگ علاقوں سے وسطی دہلی کی طرف کسان مسلسل ٹریکٹر کے ساتھ ب

ملک میں کورونا وائرس کے محض 9102 نئے کیس ظاہر

نئی دہلی// ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 33 ریاستوں اور مرکز کے زیرانتظام علاقوں میں کورونا کے فعال کیسز میں کمی آئی ہے۔ ملک میں بہار، چندی گڑھ اور لکشدیپ کو چھوڑ کر تمام ریاستوں اور مرکز کے زیرانتظام علاقوں میں کورونا کے فعال کیسز میں کمی آئی ہے۔ مرکزی وزارت صحت کی جانب سے منگل کی صبح جاری اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے9102 نئے کیس سامنے آئے ہیں جس سے متاثرین کی تعداد ایک کروڑ چھ لاکھ 76 ہزار سے زائد ہوگئی ہے۔  اس دوران15901 مریض صحت یاب ہوئے۔ اب کورونا سے ٹھیک ہونے والوں کی تعداد ایک کروڑ تین لاکھ 45 ہزار 985 ہوگئی۔ اسی دوران 117 مریض لقمہ اجل بنے اور مرنے والوں کی تعداد ایک لاکھ 53 ہزار 587 ہوگئی ہے۔  

سرکاری ملازمتوں کے کچھ خصوصی زمرے

نئی دہلی// وزیر اعظم کے آفس میں مرکزی وزیر مملکت ڈاکٹرجتیندر سنگھ نے کہا کہ23 ریاستوں  اور جموں کشمیر سمیت8مرکزی زیر انتظام خطوںمیں اقربا پروری یا بدعنوانی کے الزامات کو ختم کرنے کے لئے سرکاری ملازمتوں کے کچھ زمروںکے انٹرویو ختم کردیئے گئے ہیں۔ جتیندر سنگھ نے پیر کو کہا کہ انٹرویو بند کرنا بڑے پیمانے پر عوامی مفاد میں ثابت ہوا ہے اور وہ نچلی سماجی و معاشی طبقے سے آنے والے امیدواروں کیلئے ایک سطحی کھیل کا میدان بھی پیش کرنا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا’’اس سے سرکاری ملازمتوں میں تقرریوں میں اقربا پروری یا بدعنوانی کے الزامات کی گنجائش بھی ختم ہوجاتی ہے ‘‘۔ ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ انٹرویو کے خاتمے کا مطالبہ وزیر اعظم نریندر مودی نے2015 میں لال قلعہ پر اپنے یوم آزادی کے خطاب میں کیا تھا اور محکمہ پرسنل اینڈ ٹریننگ (ڈی او پی ٹی) نے انٹرویوز ختم کرنے کے احکامات جاری ک

مشرقی لداخ میں ٹکرائو والے علاقوں سے فوجیوں کی واپسی پر تبادلہ خیال

نئی دہلی // بھارت اور چین کے مابین فوجی مذاکرات کا نوواں دور تقریبا ً16 گھنٹے تک جاری رہا ۔ فریقین نے مشرقی لداخ میں تمام متنازعہ مقامات سے فوجیوں کی دستبرداری کے بارے میں تفصیلی بات چیت کی۔ کور کمانڈر سطح کے مذاکرات اتوار کی صبح ساڑھے دس بجے شروع ہوئے اور پیر کی رات 2بجکر30 منٹ پر ختم ہوئے۔میٹنگ مولڈو بارڈر پوائنٹ پر ہوئی، جو مشرقی لداخ میں لائن آف ایکچول کنٹرول (ایل اے سی) کے چینی کی طرف ہے۔تاہم میٹنگ کے نتائج کے بارے میں کوئی بات نہیں کی گئی ہے۔مذاکرات سے واقف افراد کا کہنا تھا کہ ہندوستان نے اصرار کیا کہ وہ چین پر منحصر ہے کہ وہ اس خطے میںمتنازعہ فی مقامات پر عدم استحکام کے عمل کو آگے بڑھائے۔ ہندوستان نے یہ موقف برقرار رکھا ہوا ہے کہ منحرفی کا عمل تمام مقامات سے بیک وقت شروع ہونا ہے اور اس کے لئے کوئی اور راستہ قابل قبول نہیں ہوگا۔بات چیت میں ہندوستانی وفد کی قیادت لیہ میں قائم 1

نکولہ سکم میں تصادم،دونوں طرف کے چند فوجی زخمی

نئی دہلی//نیوز ڈیسک// لداخ میں خونریز تصادم کے 6 ماہ بعدبھارت اور چینی فوجیوں کے درمیان شنالی سکم کی سرحد پر ہونے والی ’تازہ جھڑپ‘ میں 4فوجی اہلکاروںکے زخمی ہونے کی اطلا عات ہیں۔تاہم نئی دہلی میںفوج کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ معمولی واقعہ پیش آیاجس کے بعد مقامی کمانڈروں نے معاملہ سلجھایا۔فوج نے سکم میں چین، انڈیا سرحد کے قریب ناکو لا سیکٹر میں دونوں ملکوں کے فوجیوں کے درمیان جھڑپ کی تصدیق کی ہے۔ایک بیان میں کہا گیاہے کہ20 جنوری کو بھارتی اور چینی فوج کے بیچ شمالی سکم میں ایک معمولی جھڑپ ہوئی تھی اور اصولوں کے مطابق یہ معاملہ مقامی کمانڈروں نے سلجھا لیا ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ اس حوالے سے حقائق کو توڑ مروڑ کر پیش کرنے سے گریز کیا جائے۔میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ اس جھڑپ میں فوجیوں نے ایک دوسرے کو گھونسوں اور مکوں سے نشانہ بنایا جس کے باعث متعدد فوجی زخمی ہوئ

لکھن پور میں ہیلی کاپٹر گرکر تباہ

جموں//کٹھوعہ ضلع کے لکھن پور علاقے میں ایک ہیلی کاپٹر گرنے کے نتیجے میں بھارتیہ فضائیہ کاایک پائلٹ ہلاک ہوگیا جبکہ دوسرا شدید زخمی ہوگیا۔ایس ایس پی کٹھوعہ شیلندرا مشرا نے کہا’’لکھن پور میں شام 7 بجکر 15 منٹ پر ایک ہیلی کاپٹر حادثے کا شکار ہوا جس میں2 پائلٹ لیفٹنٹ کرنل رشب شرما اور کپٹن انجنی کمار سنگھ زخمی ہوئے۔مشرا نے بتایا کہ یہ ہیلی کاپٹر اس وقت گر کر تباہ ہوا جب وہ معمول کی اڑان پر تھا۔دریں اثنا سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ہیلی کاپٹر کے پائلٹ تکنیکی خرابی کودیکھ کر جلد ہی اسے لکھن پور کے باسولی موڑہ پر اتارنے کی کوشش کی،تاہم وہ ناکام ہوگیا اور ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہوگیا۔ ذرائع کے مطابق ، دونوں زخمی پائلٹوں کو مزید علاج کیلئے پٹھان کوٹ فوجی اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں لیفنٹنٹ کرنل رشب شرما زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ بیٹھا جبکہ دوسرے کپٹن سنگھ کو آکسیجن پر رکھا گیا ہ

تازہ ترین